Connect with us

انٹرنیشنل

فلسطینی شہداء کی نماز جنازہ

شائع شدہ

کو

فلسطینی شہداء کی نماز جنازہ

غزہ میں اسرائیلی فوجیوں کے ہاتھوں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی نماز جنازہ ادا کردی گئی جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق اسرائیلی فوج کی گولیوں کا نشانہ بننے والے فلسطینیوں کی نماز جنازہ ادا کردی گئی، آہوں اور سسکیوں کے دوران شہداء کو سپردِ خاک کردیا گیا۔ اس موقع پر لواحقین کے علاوہ ہزاروں فلسطینیوں اور حماس کی اعلیٰ قیادت بھی موجود تھی۔ نماز جنازہ کے بعد شرکاء نے اسرائیل کے خلاف سخت نعرے بازی کی اور ’بدلے‘ کے نعرے بلند کیے۔شرکاء نے امریکا کی جانب سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں فلسطینیوں کے قتل عام کی تحقیقات سے متعلق مسودے کو بلاک کرنے کی سخت مذمت کی اور اپنے غصے کا کھل کر اظہار کیا۔ شرکاء کا مطالبہ تھا کہ اقوام متحدہ، سلامتی کونسل کی تجویز پر اسرائیلی فوج کی مظاہرین پر براہ راست فائرنگ کے واقعے کی آزادانہ تحقیقات کرائے اور اس عمل میں رکاوٹ بننے والے امریکا کو کسی خاطر میں نہ لائے۔دوسری جانب اسرائیلی فوج کے برگیڈیئر جنرل رونن منیلس نے دھمکی دی ہے کہ وہ غزہ کی پٹی کے اندر بھی کارروائی کرسکتے ہیں۔ اس نے کہا کہ دہشت گرد ہمارا ہدف ہیں اور ان کے تعاقب میں غزہ کے اندر بھی جانا پڑا تو گریز نہیں کریں گے۔ دہشت گردوں کو کہیں بھی جائے پناہ نہیں لینے دیں گے ان کا آخری ٹھکانہ موت ہی ہو گا۔ واضح رہے 30 مارچ کی مناسبت سے منایا جانے والا ’فلسطینی یوم الارض‘ اس سال خاص اہمیت اختیار کر گیا ہے۔ ہزاروں فلسطینیوں نے یکجا ہو کر اسرائیل کی سرحد کی جانب لانگ مارچ کیا جس کے لیے سرحد پر 700 خیمے نصب کیے گئے۔ قابض اسرائیلی فوج نے مظاہرین پر براہ راست فائرنگ کی جس کی نتیجے میں 17 فلسطینی شہید اور 1400 زخمی ہو گئے۔ اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری نے واقعہ کی آزادانہ تحقیقات کا حکم دیا تھا لیکن امریکا نے اسے بلاک کردیا ہے۔

انٹرنیشنل

مسلمان انجینئرقتل

شائع شدہ

کو

مسلمان انجینئرقتل

بھارت میں انتہا پسندی تھمنے کا نام نہیں لے رہی حیدر آباد دکن کے مسلمان سوفٹ ویئرانجینئر کوہجوم نے ڈنڈے مار مار کر قتل کر دیا، 32سالہ محمد اعظم معروف امریکی کمپنی گوگل میں بحیثیت سوفٹ انجینئر خدمات سر انجام دے رہا تھا، مقتول شادی شدہ اور 2 سالہ بیٹے کا باپ تھا۔
بھارتی ٹی وی کے مطابق محمد اعظم کو بچانے کی کوشش میں اس کے تین کزن بھی شدید زخمی حالت میں ہسپتال میں زیر علاج ہیں۔ محمد اعظم اپنے 3 دوستوں کے ساتھ جن میں قطر ی شہری سلام عید الکبیسی ، نور محمد اور سلمان بیدر کے مرکی گاؤں میں ایک دوست کے گھر تقریب میں شرکت کیلئے پہنچے ،محمد اعظم کے بھائی کا کہنا ہےکہ قطری باشندہ سلام قطر سے چاکلیٹ لایا تھا اس نے خواہش کا اظہار کیا کہ گاؤں کے سکول میں آنیوالےبچوں کو وہ یہ چاکلیٹ دینا چاہتا ہے۔محمد اعظم اور اس کے دوست قریب واقع گائوں کے اسکول پہنچے اور بچوں میں چاکلیٹ تقسیم کر دی لیکن کسی جنونی نے چاکلیٹ کی تقسیم کی وڈیو واٹس ایپ پر شیئر کرادی بلکہ اسے غلط رنگ دے کر یہ تاثر قائم کیا کہ چاکلیٹ کی تقسیم در اصل بچوں کے اغواء کی کوشش ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

انٹرنیشنل

نئی دشمنی شروع

شائع شدہ

کو

نئی دشمنی شروع

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے روس، چین اور یورپی یونین کو دشمن قرار دے دیا۔
ڈونلڈ ٹرمپ آج فن لینڈ کے دارالحکومت ہلسنکی میں اپنے روسی ہم منصب ولادی میر پیوٹن سے ملاقات کریں گے۔ ملاقات سے قبل امریکی ٹی وی سی بی ایس کو دیئے گئے انٹرویو میں ڈونلڈ ٹرمپ نے روس، چین اور یورپی یونین کو امریکا کا دشمن قرار دیتے ہوئے کہا کہ میں سمجھتا ہوں ہمارے بہت سارے دشمن ہیں، یورپی یونین نے تجارت میں ہمارے ساتھ جو سلوک کیا ہے اس حساب سے وہ ہماری دشمن ہے، شاید آپ یورپی یونین کو اپنا دشمن نہ سمجھیں لیکن حقیقت میں وہ دشمن ہے جس سے نمٹنا بہت مشکل ہے۔ امریکی صدر کا کہنا تھا کہ میں یورپی ممالک کے رہنماؤں کا احترام کرتا ہوں، لیکن تجارتی لحاظ سے انہوں نے ہم سے بہت فائدہ اٹھایا ہے، روس بھی کئی پہلوؤں سے ہمارا دشمن ہے، رہا چین تو وہ ہمارا اقتصادی حریف ہونے کی بنا پر دشمن ہے، اگرچہ یہ ممالک دشمن ہیں مگر اس کا یہ مطلب نہیں کہ وہ سب برے بھی ہیں بلکہ اس سے مراد ہے کہ وہ ہمارا حریف ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

انٹرنیشنل

انوکھا مقدمہ

شائع شدہ

کو

انوکھا مقدمہ

بھارت میں ایک پولیس افسر نے جرائم روکنے میں ناکامی پر اپنے ہی خلاف ہی مقدمہ درج کرالیا۔
بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست اتر پردیش کے شہر میرٹھ میں ایس ایچ او نے تھانے کی حدود میں جانوروں کی اسمگلنگ کی روک تھام میں ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے اپنے خلاف مقدمہ درج کرادیا۔ ایس ایچ او راجیندرا تیاگی نے میڈیا کو بتایا کہ کھڑکودا پولیس اسٹیشن کا چارج سنبھالنے سے قبل ایک اصول وضع کیا تھا کہ فرائض سے غفلت برتنے اور نااہلی کے مرتکب اہلکار کے خلاف ایکشن لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا میں نے یہ تصور متعارف کرایا تھا کہ جرائم کی روک تھام میں ناکامی پر اہلکارکو ذمہ دار ٹھہرایا جائےگا، اگر کسی علاقے میں چوری یا قتل کی ورادات ہوئی تو متعلقہ کانسٹیبل کے خلاف کارروائی کی جائے گی جب کہ متعلقہ کانسٹیبل کو جرائم پر قابو پانے کےلیے دو مواقع دیئے جائیں گے تاہم تیسری بار غفلت پر مقدمہ درج کیا جائے گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں