Connect with us

شوبز

ڈپریشن ک اشکار

شائع شدہ

کو

ڈپریشن ک اشکار

'دی راک' کے نام سے مشہور ہالی وڈ اداکار ڈوائن جونسن کے لیے فلموں میں خطرناک کردار نبھانا تو شاید مشکل نہ رہا ہو، لیکن اصل زندگی میں ڈپریشن پر قابو پانے میں انہیں یقیناً مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ ریسلنگ سے اداکاری کے شعبے میں آنے والے 'دی راک' نے بتایا کہ کس طرح انہوں نے نوعمری کے دور میں اپنے ڈپریشن پر قابو پایا۔ انٹرویو کے دوران انہوں نے بتایا، 'میں ایک ایسے مقام پر پہنچ گیا تھا جہاں میں کوئی کام نہیں کرنا چاہتا تھا اور نہ ہی میرا کہیں جانے کو دل چاہتا تھا، میں مسلسل روتا رہتا تھا۔' 'دی راک' نے بتایا، 'جب میں 15 برس کا تھا تو میری والدہ نے میرے سامنے خودکشی کی کوشش کی، وہ کار میں سے نکلیں اور انتہائی مصروف سڑک پر گاڑیوں کے سامنے آگئیں، جس پر میں نے انہیں بازو سے پکڑ کر سڑک سے ہٹایا'۔چند سال بعد ڈوائن جونسن کا پروفیشنل فٹبالر بننے کا خواب بھی انجریز کے باعث چکنا چور ہوگیا اور اس کے بعد ان کی دوست نے بھی ان سے تعلق ختم کرلیا۔
'دی راک' کے مطابق یہ وقت ان کے لیے انتہائی بدترین تھا۔ انہوں نے بتایا کہ یہ وہ وقت تھا، جب ان کے اندر خود کو جمع کرکے زندگی کے معمولات کو جاری رکھنے کی بھی ہمت نہیں بچی تھی اور امکان تھا کہ وہ بھی اپنی والدہ کی طرح خودکشی کی کوشش کرتے۔ ڈوائن جونسن نے بتایا کہ وقت کے ساتھ ساتھ ہم دونوں بہتر ہوگئے لیکن اب بھی جب ہم کسی کو تکلیف میں دیکھتے ہیں تو اپنی تکلیف کو یاد کرکے ان کی مدد ضرور کرتے ہیں اور انہیں بتاتے ہیں کہ وہ اکیلے نہیں ہیں۔
واضح رہے کہ 'دی راک' نے 2004 کے آغاز میں ریسلنگ کو ہمیشہ کے لیے خیرباد کہہ کر ہالی وڈ میں قدم رکھا اور 'فاسٹ اینڈ فیوریس'، 'اسکارپین کنگ'، 'ممی ریٹرنز' اور 'جمان جی' جیسی فلموں میں اپنی اداکاری کی بناء پر شہرت حاصل کی۔ ریسلنگ کے شعبے میں بھی وہ 8 بار ورلڈ چیمپیئن رہ چکے ہیں۔

شوبز

35 بہاریں دیکھ لیں

شائع شدہ

کو

35 بہاریں دیکھ لیں

اداکارہ کترینہ کیف نے زندگی کی 35 بہاریں دیکھ لیں۔16 جولائی 1983 کو ہانگ کانگ میں پیدا ہونے والی کترینہ کیف کے والد ’’محمد کیف‘‘ کا تعلق مقبوضہ کشمیر جبکہ والدہ ’’سوسانا ٹرکیوئٹ‘‘ برطانوی شہری ہیں، کترینہ کیف نے لڑکپن میں ہی ماڈلنگ کے میدان میں قدم رکھ دیا تھا، ماڈلنگ کے دوران ہی انہیں بھارتی نژاد برطانوی فلم ہدایت کار کیزاد گستاد نے فلم ’’بوم‘‘ میں اداکاری کی پیشکش کی جس میں امیتابھ بچن اور گلشن گروور جیسے بڑے ستاروں نے کام کیا، جس کے بعد انہوں نے تیلگو اور تمل فلموں میں بھی اداکاری کے جوہر دکھائے۔بالی ووڈ میں ان کی صحیح معنوں میں انٹری 2005 کی بلاک بسٹر فلم ’’سرکار‘‘سے ہوئی جس کے بعد انہوں نے پیچھے مڑکر نہیں دیکھا، ان کی کامیابی کا ثبوت یہ ہے کہ وہ موجودہ دور کی ان چند سپر اسٹارز میں شامل ہیں جنہوں نے بالی ووڈ پر راج کرنے والے تینوں خانز کے ساتھ کام کیا ہے۔ کترینہ کیف کی کامیابی میں سب سے بڑا کردار سلمان خان سے ان کی دوستی ہے، جنہوں نے ہر مشکل وقت میں ان کا ساتھ نبھایا۔

پڑھنا جاری رکھیں

شوبز

ٹریلر جاری

شائع شدہ

کو

ٹریلر جاری

ایکشن سے بھرپور نئی ایکشن ایڈونچرفلم 'بمبل بی کا ٹریلر جاری کر دیا گیا ہے -ہالی وڈ ہدایت کارٹریوس نائٹ کی یہ فلم 1987کے دور کی عکاسی کر رہی ہے جب بمبل بی کیلیفورنیا کے ایک کباڑ خانے میں پڑا ہوتا ہے اورخلاء سے زمین پرآنے کے بعد اب اپنی نئے گھر کی تلاش میں مصروف ہوتا ہے ۔نامور پروڈیوسر مائیکل بے اور اسٹیفن ڈیوس کی مشترکہ پروڈکشن میں بننے والی اس فلم کی کاسٹ میں نامور ریسلر اور اداکار جان سینا جلوۂ گر ہو رہے ہیں۔فلم کی دیگر کاسٹ میں پامیلا ایڈلن ، ہیلی اسٹین فیلڈ،مارٹن شارٹ (بمبل بی )،مارسیلا بریگیو، پیٹر کولن اورکینیتھ کوئی سمیت کئی فنکار شامل ہیں-

پڑھنا جاری رکھیں

شوبز

پاکستان چھوڑ دیا

شائع شدہ

کو

پاکستان چھوڑ دیا

پاکستان ٹیلی ویژن پر1992 میں نشر ہونے والے ڈرامہ سیریل 'دھواں' سے شہرت کی بلندیوں پر پہنچنے والے اداکار، ہدایتکار اور مصنف عاشر عظیم نے پاکستان چھوڑ دیا۔اپنے ٹوئٹر پیغام میں عاشر عظیم نے وطن چھوڑنے کی تصدیق کرتے ہوئے لکھا، 'میں نے ملک چھوڑ دیا ہے، کیونکہ میں مایوس ہوگیا ہوں۔ شریف یا زرداری کی وجہ سے نہیں، یہ تو ہمیشہ ایسے ہی تھے، میں یہاں کے لوگوں سے مایوس ہوگیا ہوں۔'عاشر عظیم نے مزید لکھا، 'لوگ اصول کی بات نہیں کرتے، اصول پر نہیں لڑتے، اصول پر ہنستے ہیں، انہیں شریف، زرداری اور راؤ جیسے لوگ ہی ملیں گے، بس نام تبدیل ہوجائیں گے-
اپنے پیغام میں عاشرعظیم نے ڈرامہ سیریل 'دھواں' کا ایک سین بھی شیئر کیا، جس میں وہ یعنی اے ایس پی اظہر ڈرامے کے دیگر کرداروں کے ساتھ ملکی حالات پر گفتگو کرتے نظر آئے۔
شاہکار ڈرامے "دھواں" کے تقریباً 20 سال بعد عاشر عظیم نے اپنی فلم 'مالک' کے ذریعے شوبز میں واپسی اختیار کی تھی، لیکن اس فلم کو سنسر بورڈ کی جانب سے پابندیوں کا سامنا کرنا پڑا۔تاہم عاشر عظیم نے ہمت نہ ہاری اور سنسر بورڈ کے فیصلے کے خلاف عدالت سے رجوع کیا، بالآخر وہ کیس تو جیت گئے اور فلم بھی ریلیز ہوگئی، لیکن اس سب قصے میں انہیں کافی زیادہ مالی خسارے کا سامنا کرنا پڑا۔عاشر عظیم پاکستان کسٹمز میں ایک اہم عہدے پر تعینات تھے، لیکن کچھ ناگزیر وجوہات کی بناء پر انہوں نے اپنی ملازمت سے استعفیٰ دیا اور پھر پاکستان بھی چھوڑ دیا اور اب وہ کینیڈا میں ٹرک چلاکر گزر بسر کر رہے ہیں، جس کی تصدیق انہوں نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کی۔پاکستان چھوڑ دیا

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں