Connect with us

کشمیر

بربریت کے خلاف مکمل ہڑتال

شائع شدہ

کو

بربریت کے خلاف مکمل ہڑتال

کشمیر میڈیا سیل کے مطابق گزشتہ دو روز کے دوران ایک یونیورسٹی پروفیسر سمیت 14 نوجوانوں کی قابض بھارتی فوج کے ہاتھوں شہادت پر آج پوری وادی میں مکمل ہڑتال ہے۔ تمام اضلاع کے تعلیمی ادارے، کاروباری مراکز اور آمد ورفت کے تمام ذرائع مکمل طور پر بند ہیں۔ مقبوضہ کشمیر کی بھارت نواز کٹھ پتلی انتظامیہ نے احتجاج کو روکنے کے لیے فوج کے مزید نفری طلب کرلی ہے۔ مقبوضہ وادی کے کئی اضلاع آج فوجی چھاونیوں کا منظر پیش کر رہے ہیں جہاں بھارتی فوج نے جگہ جگہ رکاوٹیں کھڑی کرکے راستوں کو مکمل طور پر بند کر دیا ہے جب کے لوگوں کو سخت چیکنگ کے بعد جانے کی اجازت دی جا رہی ہے۔ وادی کے شوپیاں سمیت کچھ اضلاع میں نیٹ سروس بھی بند کردی گئی ہے تاکہ احتجاجی مہم کو روکا جا سکے۔ واضح رہے کہ گزشتہ دو روز میں ضلع چٹہ بل اور شوپیاں میں قابض بھارتی فوج نے نام نہاد سرچ آپریشن کے نام بچوں اور خواتین کو تشدد کا نشانہ بنایا جب کے یونیورسٹی کے پروفیسر سمیت 14 کشمیری نوجوانوں کو فائرنگ کر کے شہید کردیا تھا۔

کشمیر

ریمانڈ پرجیل منتقل

شائع شدہ

کو

ریمانڈ پرجیل منتقل

رپورٹ کے مطابق نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی کی تحویل میں 10 روز گزارنے کے بعد آسیہ اندرابی کو ان کی 2 ساتھیوں فہمیدہ صوفی اور ناہیدہ نسرین سمیت آج نئی دلی کی عدالت میں پیش کیا گیا۔ نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی نے عدالت کے روبرو کہا کہ ایجنسی کو دختران ملت کی تینوں رہنماؤں کی مزید کسٹڈی کی ضرورت نہیں، جس کے بعد ڈسٹرکٹ جج پونم اے بامبا نے انہیں ایک ماہ کے جوڈیشل ریمانڈ پر بھیج دیا۔ آسیہ اندرابی اور ان کی ساتھیوں پر رواں برس اپریل میں بھارت کے خلاف جنگ کے جھوٹے مقدمات بنائے گئے تھے۔ عدالتی حکم کے بعد دختران ملت کی رہنماؤں کو نئی دلی کی بدنام زمانہ تہار جیل میں رکھا جائے گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

کشمیر

نوجوان شہید

شائع شدہ

کو

نوجوان شہید

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے سرچ آپریشن کے دوران فائرنگ کرکے ایک نوجوان کو شہید کردیا، بھارتی فورسز نے نوجوان کی شہادت کے بعد علاقے میں غیر اعلانیہ کرفیو نافذ کردیا۔
تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے علاقے کپواڑہ میں ظالم بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی جاری ہے، بھارتی فوج کے دہشت گرد اہکاروں کی اندھا دھند فائرنگ سے ایک کشمیری نوجوان شہید ہوگیا۔ کشمیری میڈیا کا کہنا ہے کہ کپواڑہ اور اس کے گرد و نواح کے علاقوں میں بھارتی فورسز کا سرچ آپریشن جاری ہے، نوجوان کو بھی سرچ آپریشن کے دوران بھارتی افواج نے نشانہ بنایا ہے۔ کشمیری میڈیا کے مطابق ہندوستانی فوج کی جانب سے نوجوان کی شہادت کے بعد علاقے میں غیر اعلانیہ کرفیو نافذ کردیا گیا ہے، جبکہ انٹرنیٹ اور موبائل فون سروس بھی بند کردی گئی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

کشمیر

پاکستان کی حمایت

شائع شدہ

کو

پاکستان کی حمایت

دفترِ خارجہ نے کشمیر میں جاری بھارت کے ریاستی مظالم پر اقوامِ متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن کی جانب سے تیار کردہ رپورٹ کے حوالے سے سیکریٹری جنرل آنٹونیو گواتیرس کی حمایت کا خیر مقدم کیا ہے۔ اپنے ایک بیان میں دفترِ خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ انسانی حقوق کمیشن آفس (او ایچ سی ایچ آر) کی اس رپورٹ پر بھارتی اعتراضات کو اقوامِ متحدہ کی جنرل اسمبلی کی حمایت سے جواب مل گیا ہے۔ یہاں یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے 12 جولائی کو کشمیر میں ہونے والے مظالم پر مرتب کی گئی رپورٹ کی حمایت میں آواز بلند کی تھی۔ ایک سوال کے جواب میں سیکریٹری جنرل آنٹونیو گواتیرس کا کہنا تھا کہ کشمیر مسئلے پر او ایچ سی ایچ آر کمشنر کے اقدامات اقوامِ متحدہ کے اقدامات کے مترادف ہیں۔خیال رہے کہ اقوامِ متحدہ میں کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی کے حوالے سے پہلی رپورٹ گزشتہ ماہ تیار کی گئی تھی۔
مذکورہ رپورٹ میں بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں ہونے والی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور انصاف کی عدم فراہمی کے حوالے سے نشاندہی کی گئی ہے۔ او ایچ سی ایچ آر کمشنر سربراہ زید راعد الحسین نے انسانی حقوق کونسل سے مطالبہ کیا کہ اس رپورٹ کے پیشِ نظر بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی کی تحقیقات کے حوالے سے ایک انکوائری کمیشن تشکیل دیا جائے۔ پاکستان کی جانب سے اس رپورٹ اور اعلیٰ سطح کے انکوائری کمیشن کے قیام کی تجویز کا خیرمقدم کیا گیا تاہم بھارت کی جانب سے اس رپورٹ کو مسترد کردیا گیا اور موقف اختیار کیا گیا کہ او ایچ سی ایچ آر کمشنر کی رپورٹ میں مینڈیٹ کا فقدان تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں