Connect with us

کشمیر

گھٹنے ٹیکنے پر مجبور

شائع شدہ

کو

گھٹنے ٹیکنے پر مجبور

مقبوضہ جموں و کشمیر میں ہندوستان کی کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی تحریک آزادی کی بڑھتی ہوئی جدوجہد کے آگے بندھ باندھنے میں بے بس دکھائی دے رہی ہیں ،اسی لئے اب انہوں نے نیا پینترا بدلتے ہوئے مودی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ رمضان المبارک کے پیش نظر مجاہدین کے خلاف بھارتی فوج یکطرفہ سیز فائر کا اعلان کرے۔بھارتی نجی ٹی وی کے مطابق مقبوضہ جموں و کشمیر کی کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے نام نہاد ’’کل جماعتی کانفرنس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مودی سرکار سے مطالبہ کیا کہ آج ہونے والے کل جماعتی اجلاس میں سبھی پارٹیاں اس بات پر متفق ہیں کہ بھارتی حکومت مجاہدین کے خلاف یکطرفہ سیز فائر کا اعلان کرے جیسے اس سے قبل 2000ہزار میں واجپائی حکومت نے کیا تھا ۔ محبوبہ مفتی کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں کے خلاف کارروائی سے عام لوگوں کو بھی کافی پریشانیاں ہوتی ہیں، عید اور امرناتھ یاترا کے پیش نظر ہماری کوشش پرامن حالات بنائے رکھنے کی ہے۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ ریاست میں اگر پی ڈی پی اور بی جے پی کی مخلوط حکومت کے ایجنڈہ پر عمل کیا جائے تو کشمیر میں حالات بہتر ہوسکتے ہیں ،اجلاس میں سبھی پارٹیوں نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ وزیر اعظم مودی سے ملاقات کرکے مقبوضہ کشمیر کے حالات کی معلومات فراہم کرائیں گے ، تاکہ جموں و کشمیر میں امن بحال ہوسکے۔ محبوبہ مفتی کا کہنا تھا کہ سبھی پارٹیاں مرکز سے اپیل کرنے پر متفق ہوئی ہیں کہ جیسے 2000 میں اس وقت کے وزیر اعظم واجپائی نے یک طرفہ سیز فائر کرکے پاکستان کے ساتھ بات چیت کی تھی ، مرکزی حکومت ایک مرتبہ پھر اسی طرح کا قدم اٹھائے تو ریاست میں امن بحال ہوسکے گا۔

کشمیر

وادی میں’’قاتل قاتل‘‘ کے نعرے

شائع شدہ

کو

وادی میں’’قاتل قاتل‘‘ کے نعرے

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے دورے کے خلاف گزشتہ روز یوم سیاہ منایا گیا اور مکمل ہڑتال کی گئی جب کہ مقبوضہ وادی’’قاتل قاتل مودی قاتل‘‘کے نعروں سے گونجتی رہی۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق میرواعظ عمرفاروق کواس وقت گرفتارکیا گیا جب وہ گھر میں اپنی نظربندی کی پرواہ نہ کرتے ہوئے مارچ کے لیے گھرسے باہر آئے۔گھرکے باہر موجود بھارتی پولیس اہلکاروں نے انھیں گرفتارکر کے شہرکے نگین تھانے میں منتقل کر دیا۔ کٹھ پتلی انتظامیہ نے حریت رہنماؤں سید علی گیلانی، محمد اشرف صحرائی، محمد یاسین ملک، غلام احمدگلزار، یوسف نقاش، بلال صدیقی، مختار احمد وازہ، ظفراکبربٹ، جاوید احمد میر اور محمد اشرف لایا کوگھروں، تھانوں اور جیلوں میں نظربند کردیا۔علاوہ ازیں کٹھ پتلی انتظامیہ نے مارچ کے خوف سے لال چوک کی طرف جانے والی تمام سڑکوں کو بندکردیا اور سرینگر اور مقبوضہ علاقے کے دیگر تمام بڑے قصبوں میں بھارتی فوجی اور پولیس اہلکاروں کی بڑی تعداد تعینات کر دی۔کٹھ پتلی انتظامیہ نے علاقے میں موبائل اور انٹرنیٹ سروسز بھی معطل کر دیں اور تمام تعلیمی ادارے بندکرنے کا حکم جاری کردیا۔
سخت پابندیوں کے باوجود حریت رہنماؤں شبیر احمد ڈار، امتیاز احمد ریشی اور غلام نبی وسیم نے بھارتی وزیراعظم کے دورے کے خلاف سرینگرکے ڈاؤن ٹاؤن علاقے میں ایک احتجاجی مظاہرے کی قیادت کی، مظاہرین نے ہاتھوں میں سیاہ پرچم اٹھا رکھے تھے۔ دریں اثنا مقبوضہ کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے کہا ہے کہ کشمیریوں نے کبھی بھی بھارت کے جبری قبضے کو قبول نہیںکیا ہے اورجب تک انھیں اپنے سیاسی مستقبل کے بارے میں فیصلہ کرنے کا حق نہیں دیا جاتاوہ اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔کشمیر سڑک ، پانی، بجلی،ملازمتوں یا دیگر مراعات کا نہیں بلکہ ڈیڑھ کروڑکشمیریوں کے پیدائشی حق، حق خود ارادیت کا مسئلہ ہے۔ سید علی گیلانی نے کہا کہ بھارت کشمیریوں کیساتھ اپنے وعدے پورے کرنے کے بجائے فوجی طاقت کے بل پر ان کی جدوجہد کو دبانے کی کوشش کر رہا ہے اورگزشتہ ستر برس کے دوران اس نے 6 لاکھ سے زائد کشمیریوں کو شہیدکیا۔ بھارت کو چاہیے کہ وہ ضد اورہٹ دھرمی ترک کر کے کشمیر کے زمینی حقائق قبول کرے اورکشمیریوں کو ان کا پیدائشی دے۔ انھوں نے مزیدکہاکہ بھارت نے مقبوضہ علاقے میں رمضان المبارک کے دوران جنگ بندی کا جواعلان کیا ہے کہ وہ دھوکہ دہی اور ڈھونک کے سوا کچھ نہیں۔
مقبوضہ کشمیرمیں حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمرفاروق نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیرکوصرف کشمیریوںکی خواہشات اورامنگوں کے مطابق ہی حل کیا جا سکتا ہے۔ لہذا بھارت کوکشمیریوں کے من کی بات بھی سننی چاہیے جویہ ہے کہ بھارت تنازع کشمیرکی حقیقت تسلیم کرے اورکشمیریوں کو ان کا پیدائشی حق، حق خودارادیت دے۔ ادھر بھارتی فوجیوں نے ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی میں ضلع کپواڑہ میں ہندواڑہ کے علاقے برنجل ولگام میں ایک اور کشمیری نوجوان کو شہید کردیا۔ علاوہ ازیں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے دورہ مقبوضہ جموں وکشمیرکے موقع پر آر پارکشمیری عوام بھی سراپا احتجاج بن گئے، مقبوضہ جموں وکشمیر متحدہ حریت قیادت کی کال پر مظفرآباد میں احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالی گئیں جس میں سیکڑوں افراد نے شرکت کی، بھارت، نریندرمودی مخالف اور آزادی کے حق میں شدید نعرے بازی، قاتل قاتل نریندر مودی قاتل کے نعروں سے فضا گونج اٹھی۔
شرکا نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے، جن پر نریندرمودی، بھارتی جبری حاکمیت کیخلاف اور آزادی کے حق میں نعرے درج تھے۔ مظاہرین نے نریندر مودی کی مقبوضہ جموں وکشمیر آمدپر سیاہ غبارے فضا میں چھوڑکرمودی سے نفرت کا اظہارکیا۔ آل پارٹیزحریت کانفرنس کے زیراہتمام بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے مجودہ دورہ مقبوضہ کشمیر کیخلاف اسلام آباد میں بھارتی ہائی کمیشن کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے اس موقع پربھارتی حکومت اورنریندرمودی کیخلاف شدید نعرہ بازی کی۔ خبر ایجنسی کے مطابق کشمیری حریت ر ہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک نے کہا ہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کا دورہ مقبوضہ کشمیر کوئی معنی نہیں رکھتا، قابض بھارتی فوج مقبوضہ کشمیرمیں کشمیریوں کی لاشیں گرا رہی ہے، کشمیریوں کو لاشوں کے بدلے مقبوضہ کشمیر میں انفراسٹرکچر، اقتصادی پیکجز منظور نہیں ہے۔ بھارت جو مرضی کر لے ہم اپنا حق آزادی حاصل کر کے رہیں گے۔
بھارتی وزیراعظم مودی نے جارحانہ عزائم جاری رکھتے ہوئے پاکستان کے احتجاج کے باوجود مقبوضہ کشمیر میںمتنازعہ کشن گنگا پاور پلانٹ کا افتتاح کیا۔ پاکستان کشن گنگا ڈیم کو سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی قرار دیتا رہا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

کشمیر

قتل عام پھرہوگا؟

شائع شدہ

کو

قتل عام پھرہوگا؟

کل جماعتی حریت کانفرنس’’ع‘‘ گروپ کے چیئرمین میرواعظ ڈاکٹر مولوی عمر فاروق نے کہا ہے کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کشمیریوں کے من کی بات سنیں ،عارضی اقدامات سے مسئلے کا حل تلاش نہیں کیا جا سکتا۔ سرینگر میڈیا کے مطابق اپنے ایک بیان میں میر واعظ کا کہناتھا کہ بھارت کے وزیر اعظم نریندر مودی سے ہم یہ کہنا چاہتے ہیں کہ آپ ہر ماہ ریڈیو اور ٹی وی کے ذریعے بھارت کے عوام سے ’’ من کی بات ‘‘ پروگرام میں مخاطب ہوتے ہیں آپ کشمیری عوام کے من کی بات سنیں اور کشمیری عوام چاہے وہ جموں ، لداخ، کرگل یا ریاست کے کسی خطے میں رہتے ہوں ان سب کے من کی بات ایک ہی ہے کہ وہ اپنے سیاسی مستقبل کا خود فیصلہ کرنا چاہتے ہیں اور ان وعدوں کی وفا چاہتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے رمضان المبارک کے مہینے میں کشمیریوں کے خلاف گولی نہ چلانے کا فیصلہ کیا ہے،کیا اس کا مطلب یہ لیا جائے کہ رمضان کے بعد پھر کشمیریوں کے قتل و غارت کا سلسلہ شروع ہو جائے گا؟ یہ کونسا سی بی ایم ہے اگر آپ واقعی اعتماد سازی کے اقدامات کے حوالے سے سنجیدگی ہیں تو پہلے جموں و کشمیر سے فوجی انخلاء کے ساتھ ساتھ تمام کالے قوانین پی ایس اے ، افسپا وغیرہ کے خاتمے کا عمل شروع کریں اور اس کے ساتھ ساتھ ایسے حالات پیدا کئے جائیں ۔

پڑھنا جاری رکھیں

کشمیر

آج مارچ کا اعلان

شائع شدہ

کو

آج مارچ کا اعلان

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی وزیراعظم کے دورے کیخلاف حریت قیادت کاآج ہفتے کے روز سرینگر کے تاریخی لال چوک تک احتجاجی مارچ کا اعلان ، متحدہ حریت قیادت نے بھارت کی طرف سے مقبوضہ علاقے میں جنگ بندی کے اعلان کو آزادی پسند کشمیری عوام کے ساتھ بھونڈا مذاق قراردیاہے، انہوں نے وادی میں مستقل طور پر میں جنگ بندی کا مطالبہ کیا ، دوسری جانب بھارتی اور اسرائیل کی ریاستی دہشتگردیوں کے خلاف وادی میں احتجاجی مظاہرے ، ریلیاں ، کئی علاقوں میں مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کی شیلنگ ، پیلٹ گنز کا استعمال ، متعدد افراد زخمی ہوگئے ۔ تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے دورئہ کشمیر کیخلاف آج سرینگر کے تاریخی لال چوک کی طرف ایک بڑا مارچ کیاجائیگا ۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق مارچ کی کال سیدعلی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دی ہے ۔حریت رہنمائوں نے کہاکہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے مقبوضہ علاقے کے مجوزہ دورے کا مقصد عالمی برادری کو یہ جھوٹا تاثر دینا ہے کہ کشمیری عوام بھارتی جمہوریت کے تحت خوش ہیں حالانکہ بھارت نے مقبوضہ علاقے کو جہنم زار بنارکھا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں