Connect with us

کشمیر

مزید 3 نوجوان شہید

شائع شدہ

کو

مزید 3 نوجوان شہید

ماچھل سیکٹر میں بھارتی فورسز کی فائرنگ سے 3 نوجوان شہید ہوئے، دریں اثنا کپواڑہ میں بھارتی فوج نے دوران حراست نوجوان کو قتل کرکے لاش جنگل میں پھینک دی، کپواڑہ کے خزان متی علاقے کے جنگل میں ہفتے کی صبح چرواہوں نے ایک لاش دیکھی جس کا چہرہ ناقابل شناخت حد تک مسخ شدہ تھا، پولیس نے لاش اپنی تحویل میں لے لی۔
مقبوضہ کشمیر کے کئی مقامات پر بھارت مخالف مظاہرے ہوئے، سری نگر، شوپیاں اور اننت ناگ میں احتجاجی جلوسوں پر پیلٹ فائرنگ اور ٹیئر گیس شیلنگ ہوئی جس میں متعدد افراد زخمی ہوگئے، کئی نوجوانوں کی گرفتاری بھی عمل میں لائی گئی، نوہٹہ علاقے میں نوجوانوں کی مختلف ٹولیوں نے احتجاجی مظاہرے کرتے ہوئے فورسز پر سنگ باری کی۔
دوسری جانب یاسین ملک نے کہا ہے کہ کشمیر، فلسطین اور دوسری مظلوم اقوام عزت وقار اور آزادی کے ساتھ جینے کی خواہش رکھتے ہیں لیکن عالمی برادری ان بنیادی انسانی خواہشات کو بھی دبانے میں مصروف ہے۔
سید علی گیلانی نے کہا کہ بھارت کشمیریوں کے لیے سیاسی پلیٹ فارم کو مسمار کرتے ہوئے ان کا سیاسی مقابلہ کرنے سے خائف ہو چکا ہے، مقبوضہ کشمیر میں ہائی کورٹ نے 7 کشمیریوں کی کالے قانون پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت نظر بندی کالعدم قرار دیتے ہوئے قابض انتظامیہ کو انھیں رہا کرنے کے احکام دیے ہیں۔

کشمیر

خونی کھیل شروع

شائع شدہ

کو

5 کشمیری شہید

بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں گورنر راج نافذ کرکے خونی کھیل شروع کردیا ہے۔

واضح ہو کہ اقوام متحدہ کی جانب سے وادی کشمیر میں ہونے والے انسانیت سوز واقعات کی تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا تھا جس کے بعد فوراً گورنر راج شروع کردیا گیا ہے جس کا مقصد کشمیر میں بلا روک ٹوک خونی کھیل جاری رکھنا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

کشمیر

گورنر راج سے فرق نہیں پڑتا

شائع شدہ

کو

گورنر راج سے فرق نہیں پڑتا

ہندوستانی فوج کے سربراہ جنرل بپن راوت نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں حکومت کے خاتمے اور گورنر رج کے نفاذ اسے بھارتی فوجی مہم پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

ہندوستانی آرمی چیف جنرل بپن راوت کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں جاری فوجی مہم کو گورنر راج سے کوئی فرق نہیں پڑے گا ،مقبوضہ کشمیر میں فوجی مہم پہلے کی طرح جاری رہے گی ، فوجی آپریشن پہلے جاری تھا تاہم ماہ رمضان میں ہم نے اس جاری فوجی مہم کو روکنے کا فیصلہ کیا اور سیز فائر کرتے ہوئے ہم نے تمام فوجی آپریشن روک دیئے تھے کیونکہ ہم چاہتے تھے کہ رمضان کے دوران لوگوں کو بغیر کسی پریشانی کے نمازادا کرنے کا موقع ملے،اس کے باوجود دہشتگردوں (مجاہدین ) نے اپنی سرگرمیاں جاری رکھیں، جس کی وجہ سے مہم پرروک لگانے کا فیصلہ منسوخ کردیا گیا۔بی جے پی کے جموں وکشمیر حکومت سے الگ ہوجانے کے بعد ریاست میں گورنر راج لگائے جانے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم نہیں سمجھتے کہ اس کا کوئی اثر پڑے گا،ہمارے یہاں سیاسی مداخلت نہیں ہے، آرمی کے کام کرنے کے طور طریقے پر کبھی کوئی بندش نہیں رہی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

کشمیر

مکمل شٹرڈاؤن کا اعلان

شائع شدہ

کو

مکمل شٹرڈاؤن کا اعلان

مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی کے قائدین سید علی شاہ گیلانی، میرواعظ محمد عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے حالیہ دنوں میں قابض بھارتی فوج کے ہاتھوں کشمیری نوجوانوں کی بڑھتی ہوئی شہادتوں اور وادی کے سرکردہ صحافی، ادیب اور قلمکار سید شجاعت بخاری کی شہادت کے خلاف 21 جون ( بروز جمعرات )کو پورے مقبوضہ کشمیرمیں احتجاج اور مکمل ہڑتا ل کا اعلان کردیا ہے۔

سید علی گیلانی، میرواعظ عمر فاروق اور یاسین ملک نے عوام کے خلاف قابض فورسز کی اس شدید جارحیت اور بے رحمانہ پالیسیوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ طاقت اور تشدد کا بے تحاشا استعمال کشمیریوں کے جذبہ مزاحمت کو توڑنے میں ہمیشہ ناکام ثابت ہوا ہے اوراس طرح کی جارحانہ پالیسی کسی بھی طورمسئلہ کو حل کرنے میں معاون ثابت نہیں ہوسکتی۔انہوں نے سرکردہ صحافی شجاعت بخاری کی شہادت کی عالمی سطح پر کسی آزاد ادارے کے ذریعے تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے رواں تحریک مزاحمت کے دوران کشمیر کی صحافتی برادری کی خدمات کو ناقابل فراموش قرار دیتے ہوئے کہا کہ مشکل حالات میں صحافت کے پیشے سے وابستہ افراد نے گزشتہ کئی دہائیوں کے دوران اپنی پیشہ ورانہ خدمات کو نہ صرف جاری رکھا بلکہ کشمیری عوام پرہو رہے مظالم اور یہاں کے عوام کی جائزآوازکو باہر کی دنیا تک پہنچانے کے لئے بھی ایک گرانقدر کردار ادا کیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں