Connect with us

ٹیکنا لوجی

تھری ڈی آرکٹیکٹ سافٹ ویئرتیار

شائع شدہ

کو

تھری ڈی آرکٹیکٹ سافٹ ویئرتیار

پاکستان میں پہلی بارکراچی کے نوجوان نے تھری ڈی آرکیٹکٹ پراجیکٹ تیار کرلیا جس کی مدد سے بلڈر اور ڈیولپرز کمپیوٹر پرتھری ڈی ماڈلز کی مدد سے مستقبل میں اپنے منصوبوں کی حتمی شکل دیکھ سکتے ہیں۔ روزنامہ ایکسپریس کے مطابق کراچی میں موجود نجی جامعہ سرسید یونیورسٹی کے فارغ التحصیل باصلاحیت نوجوان مدثر اکبر خان نے نوکری کے جھنجھٹ میں پڑنے کے بجائے تخلیقی صلاحیتوں کے ذریعے تھری ڈی آرکیٹکٹ پراجیکٹ تیارکرلیا، جس کی مدد سے بلڈر اور ڈیولپرز کمپیوٹر پر تھری ڈی ماڈلز کی مدد سے مستقبل میں اپنے منصوبوں کی حتمی اور قریب قریب حقیقی شکل دیکھ سکتے ہیں جسے iorena کا نام دیا گیا ہے۔ پاکستان کے علاوہ مڈل ایسٹ اور خلیجی ریاستوں کے بڑے بلڈرزبھی اس پراجیکٹ میں گہری دلچسپی لے رہے ہیں۔ بنیادی طور پر یہ ایک آرکیٹکٹ سافٹ ویئرہے جس میں تعمیراتی منصوبوں کو حقیقت سے قریب تردیکھا جاسکتا ہے لیکن اس کے استعمال کو اس حد تک آسان بنایا گیا ہے کہ بلڈراورڈیولپرز کے علاوہ فیصلہ کرنے والی شخصیات خود اپنے موبائل فون یا کمپیوٹر کی اسکرین پر دیواروں کے رنگ اور ٹائلز تک تبدیل کرکے دیکھ سکتے ہیں۔
یہ پراجیکٹ بلڈرزاورڈیولپرز کے علاوہ بڑے گھر تعمیر کرنے والے افراد کے لیے بھی فیصلہ کو آسان بنانے اور سرمائے کی بچت اور بہترین انتخاب میں مدد دے گا۔ پاکستان میں یہ سافٹ ویئر پہلی مرتبہ متعارف کرایا گیا اور کراچی سپر ہائی وے میں زیر تعمیر ڈی ایچ اے میڈیکل سینٹر کی تعمیر سے قبل اس پراجیکٹ کے ذریعے حقیقت سے قریب لاکر تھری ڈی اینگل کے لحاظ سے پرکھا گیا۔تھری ڈی آرکیٹکٹ پراجیکٹ کی کراچی ایکسپو سینٹر میں منعقدہ مومینٹم کانفرنس میں نمائش کی گئی جس میں ملکی و غیرملکی ماہرین نے تعریف کی۔ اس سہولت کو موثر بنانے کے لیے ٹائلز اور رنگوں کی لائبریری تیار کی جارہی ہے ملک میں پینٹ اور ٹائلز بنانے والی معروف کمپنیاں اپنے ڈیزائن اور نمونے اس لائبریری کا حصہ بنارہی ہیں اگلے مرحلے میں فرنیچر، کارپٹ، آرائشی اشیا، پودوں اور گھریلو برقی آلات کا بھی اضافہ کیا جائے گا۔
اس طرح گھر یا بنگلہ تعمیر کرنے والے افراد منصوبے کو حقیقت کا روپ دینے سے قبل ہی اپنی اسکرین پر دیکھ سکیں گے۔ اس پراجیکٹ کے تحت 500 گز کے پراجیکٹ کے تھری ڈی ماڈل کی تیاری کی لاگت 3 لاکھ روپے آرہی ہے اس طرح 120 گز کے گھر تعمیر کرنے والے افراد 1.5 لاکھ روپے خرچ کرکے تعمیر سے قبل ہی حقیقت سے قریب تر نظارہ کرسکیں گے۔ پاکستان کے تمام بڑے بلڈرز اس پراجیکٹ میں گہری دلچسپی لے رہے ہیں تاہم وہ نظر آنے والے مناظر حقیقت سے بہت قریب دکھانا چاہتے ہیں جس کے لیے پراجیکٹ پر مزید کام جاری ہے جس کے بعد یہ پراجیکٹ ممکنہ طور پر پاکستان کے رئیل اسٹیٹ سیکٹر میں ایک اہم مقام حاصل کرلے گا۔

ٹیکنا لوجی

نئی ایپ متعارف

شائع شدہ

کو

نئی ایپ متعارف

ایپل فون کے سافٹ ویئر آئی او ایس کے لیے پکسار اور ایپل کمپنی نے مشترکہ طور پر ایک نیا فائل فارمیٹ متعارف کرایا ہے جسے یو ایس ڈی زیڈ فائل فارمیٹ کا نام دیا گیا ہے۔
ہم کمپیوٹراورٹیبلٹ پر تصاویر اور ویڈیو کے کئی فارمیٹ سے واقف ہیں تاہم موبائل فون کی آمد سے ہم آگمینٹڈ ریئلٹی کے ایک نئے تصور سے روشناس ہوئے ہیں جو اس سے قبل خاص ہیلمٹ ڈسپلے کی بدولت ہی ممکن تھا۔ لیکن اب یو ایس ڈی زیڈ فارمیٹ والی فائلوں کو کسی بھی حقیقی ماحول کی ویڈیو میں رکھ کر اس کو تھری ڈی انداز میں دیکھنا ممکن ہوگا اور اسے بطور معیار اپنا کر لاتعداد اقسام کے آلات کے لیے استعمال کیا جاسکے گا۔ یوایس ڈی زیڈ فائلوں کی دوسری اہم بات یہ ہے کہ ان پر کلک کرکے انہیں انٹرایکٹو انداز میں بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹیکنا لوجی

نئی دلچسپ ایپلی کیشن

شائع شدہ

کو

نئی دلچسپ ایپلی کیشن

ایپل فون کے سافٹ ویئر آئی او ایس کے لیے پکسار اور ایپل کمپنی نے مشترکہ طور پر ایک نیا فائل فارمیٹ متعارف کرایا ہے جسے یو ایس ڈی زیڈ فائل فارمیٹ کا نام دیا گیا ہے۔ہم کمپیوٹراورٹیبلٹ پر تصاویر اور ویڈیو کے کئی فارمیٹ سے واقف ہیں تاہم موبائل فون کی آمد سے ہم آگمینٹڈ ریئلٹی کے ایک نئے تصور سے روشناس ہوئے ہیں جو اس سے قبل خاص ہیلمٹ ڈسپلے کی بدولت ہی ممکن تھا۔ لیکن اب یو ایس ڈی زیڈ فارمیٹ والی فائلوں کو کسی بھی حقیقی ماحول کی ویڈیو میں رکھ کر اس کو تھری ڈی انداز میں دیکھنا ممکن ہوگا اور اسے بطور معیار اپنا کر لاتعداد اقسام کے آلات کے لیے استعمال کیا جاسکےگا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹیکنا لوجی

نئی ایجاد

شائع شدہ

کو

نئی ایجاد

گوگل کمپنی صارفین کی سہولت کے پیش نظر مختلف اقدامات اٹھاتی رہتی ہے اور اب اس نے ایک نئی اَپ ڈیٹ متعارف کروائی ہے، جس کے تحت اینڈرائڈ موبائل پیغامات یعنی میسجز ڈیسک ٹاپ پر بھی آسانی کے ساتھ وصول اور بھیجے جا سکتے ہیں۔
ٹیکنالوجی ویب سائٹ میش ایبل کی رپورٹ کے مطابق گوگل آج سے اینڈرائڈ میسجز کے لیے ڈیسک ٹاپ کی خدمات فراہم کر رہا ہے، بالکل اُسی طرح جیسے واٹس ایپ اور آئی او ایس میسجز کے لیے ڈیسک ٹاپ کی سہولت موجود ہے۔ اب صارف چاہے لیپ ٹاپ، کمپیوٹر یا آئی پیڈ استعمال کر رہا ہو، اسے صرف اینڈرائڈ میسجز ویب کو ڈیسک ٹاپ پر کھولنا ہوگا جس کے بعد کیو آر کوڈ موبائل سے اسکین کرکے چلانا ہوگا۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں