Connect with us

صحت

موسم گرما میں مفید غذائیں

شائع شدہ

کو

موسم گرما میں مفید غذائیں

موسم گرما جب آتا ہے تو اپنی پوری حشر سامانیوں کے ساتھ آتا ہے ۔موسم گرما میں تیزی سے بہنے والا پسینہ جسم میں پانی کی کمی پید اکرتا ہے اور نمکیات کی مقدار کا توازن بگڑ جاتا ہے ۔اس صورت حال میں دل گرم اور چکنی چیزوں کی طرف مائل نہیں ہوتا یوں جسمانی کمزوری بڑھنے لگتی ہے ۔ایسے میں اگر ہلکی صحت بخش غذائیں اور مشروبات استعمال کئے جائیں تو پانی ،نمکیات ملنے کے ساتھ ساتھ جسم کو درکار توانائی بھی مل جاتی ہے ۔

گرمی میں ناشتہ میں پراٹھے کے بجائے پین کیکس ،مینڈ وچ ۔کارن فلیکس لیا جاسکتا ہے ۔دوپہر کے کھانے میں سبزی کی بھجیا کے ساتھ مونگ کی دال ۔چپاتی لی جا سکتی ہے ،ساتھ پلیٹ بھر کر سلاد اور دہی ایک مکمل غذا ہے ۔گرمی میں پودینے کی چٹنی بھی مفید رہتی ہے ۔رات کے کھانے میں چکن اور سبزیوں کے ساتھ بنا پاستہ لیا جا سکتا ہے ۔

چاولوں کا مزاج سرد ہوتا ہے ۔پیٹ میں گرمی بھرنے پر اور گرمی کے موسم میں روزانہ چاول کھانے سے ٹھنڈک ملتی ہے ۔گرمی میں چاول کئی طرح سے استعمال کئے جا سکتے ہیں ۔دال کے ساتھ یا شوربے کے ساتھ ۔گرمی میں چاولوں کے ساتھ سبزیاں کھانے سے زیادہ فائدہ ہوتا ہے ۔گرمیوں میں کھچڑی دہی کے ساتھ بہترین رہتی ہے ۔

سیاہ چنے فائبر حاصل کرنے کا اہم ذریعہ ہوتے ہیں۔گرمی میں زیادہ چکنی چیزوں سے پر ہیز کرنا چاہئے ۔چنے کاربوہائڈریٹس اور فایبر حاصل کرنے کا اہم ذریعہ ہیں ۔
أبلے ہوئے سیاہ چنے ایک کپ ،سلاد کے پتے ،کھیرا ،پیاز ،ہرا دھنیا ،ہری مرچ ،لیموں کا رس اندازے کے مطابق ،تین بڑے چمچ دہی زیرہ ایک چمچ نمک مرچ ڈال کر یکجاں کر لیں ۔یہ چاٹ گرمی کے موسم میں ٹھنڈی زیادہ اچھی لگتی ہے

سلاد قدرتی چیزوں کو تازہ اور قدرتی شکل میں کھانے کا ذریعہ ہے سلاد کچی اور کچھ ابلی ہوئی اشیائے خوراک کے مجموئے کا نام ہے ۔طبی افادیت کے اعتبار سے ہر گھر میں ہونا ضروری ہے ۔گرمیوں میں اس کی ضرورت بڑھ جاتی ہے کیوں کہ کچی سبزیوں میں حیاتین اور ریشہ کے علاوہ معدنی نمک بھی ہوتا ہے۔سلاد میں کھیرا گرمی کی شدت کو کم کرتا ہے ۔سبز دھنیا دماغی کمزوری دور کرتا ہے،چقندر دل کے امراض کے لئے مفید ہے ،مولی خون میں یورک ایسڈ کی مقدار کو متوازن رکھتی ہے۔ ٹماٹر فولا ور کیشیم کا خزانہ ہے ۔سلاد کے طور پر پیاز دو بار لازمی کھانی چاہئے ۔کھانے کے ساتھ پیاز کے استعمال سے لو نہیں لگتی ۔یہ بھوک پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ ہاضمے میں مدد دیتی ہے اور قبض دور کرتی ہے ۔سبزیوں کے ساتھ پھلوں کو بھی سلاد میں شامل کیا جاتا ہے ۔جیسے کینو کا رس ،سیب ،انناس اور گریپ فروٹ۔

گرمی میں املی کا پانی مفید ہوتا ہے ۔املی کا رس کھانوں میں بھی استعمال ہوتا ہے اور شربت میں بھی ۔املی کی چٹنی بھی گرمی میں بہت فائدہ دیتی ہے ہرا دھنیا اور پودینہ گرمی میں تازگی کا احساس دیتے ہیں ان کو پیس کر املی کے رس میں ملا کر نمک مرچ اور زیرہ ڈال کر چٹنی تیار کرکے فرج میں محفوظ کی جا سکتی ہے ۔آ لو بخارا چونکہ موسم گرما کا پھل ہے اس لئے قدرتی طور پر موسمی تقاضوں کو پورا کرتے ہوئے گرمی کے مضر اثرات سے بچاتا ہے ۔اس کی چٹنی اور مربہ أن لوگوں کے لئے مفید ہے جن کو گرمی میں سر میں درد ہوتا ہو اور قے اور جی متلانے کی شکایت ہو ۔

فالسے کا شربت دل کی گھبراہٹ ،اختلاج قلب ،پیاس کی شدت ،معدے کی کمزوری ،پیشاب کی جلن اور سینے کی جلن کو دور کر کے ٹھنڈک پیدا کرتا ہے۔ فالسے استعمال کرتے ہوے اس بات کا خیال رکھنا چاہئے کہ فالسہ ہمیشہ پکا ہوا ہو اور نرمی مائل ہو ۔کچا یا نہت پکا ہو فالسہ نقصان دہ ہوتا ہے ۔

چلچلاتی دھوپ میں گھر سے باہر نکلنے سے پہلے منہ میں ایک الائچی رکھ لیں یہ نسخہ خلیجی ممالک میں بے حد مقبول ہے زیادہ تر عرب تیز دھوپ سے بچنے کے لئے الائچی کھاتے ہیں۔اس کے علاوہ الائچی کا شربت بھی گرمی میں ہیٹ اسٹروک سے بچاتا ہے۔

صحت

علاج دریافت

شائع شدہ

کو

علاج دریافت

ہانگ کانگ یونیورسٹی کی تحقیقی ٹیم نے ایڈز کا علاج دریافت کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔
ہانگ کانگ یونیورسٹی کے محققین نےعلاج کو "فنکشنل ٹریٹمینٹ" کا نام دیا ہے۔اس کو چوہوں پر جب آزمایا گیا تو حیران کن طور پر قوت مدافعت میں اضافے کی وجہ سے ان میں ایڈز کا مرض ختم ہو گیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

چیری کے فوائد

شائع شدہ

کو

چیری کے فوائد

ماہرینِ غذائیات کے مطابق چیری کھانے سے کئی فوائد حاصل ہوتے ہیں کیونکہ یہ خوش نما اور خوش ذائقہ پھل کئی اہم طبی اجزا سے بھرپور ہے۔
ایک کپ یا 20 چیری میں 100 کیلوریز ہوتی ہیں جو وٹامن سی کی روزمرہ ضروریات کی 15 فیصد مقدار پوری کرنے کے لیے کافی ہوتی ہے۔ لیکن اس کے علاوہ چیری کے سات اہم ترین فوائد یہ بھی ہیں۔
اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرپور
اینٹی آکسیڈنٹس ہمارے جسم کے باڈی گارڈز ہیں جو کئی امراض سے دور رکھتے ہیں۔ اینٹی آکسیڈنٹس جسم میں اس بگاڑ کو روکتے ہیں جو کینسر، الزائیمر اور دل کے امراض کی وجہ بنتے ہیں۔
ذیابیطس سے محفوظ رکھے
چیری بدن کی اندرونی سوزش کو دور کرنے کے ساتھ ساتھ ان پھلوں میں شامل ہے جس کا گلاسیمک انڈیکس سب سے کم ہے۔ اسے کھانے سے ئہ ہی شوگر بڑھتی ہے اور نہ ہی انسولین کے مسائل پیدا ہوتے ہیں۔ اس طرح یہ ذیابیطس سے محفوظ رکھنے میں بہت مؤثر پھل ہے۔
پرسکون نیند کی ضمانت
بہت کم پھل ایسے ہیں جن میں ایک اہم ہارمون میلاٹونِن پایا جاتا ہے اور چیری ان میں شامل ہے۔ یہ ہارمون سونے اور جاگنے کے چکر کو متوازن رکھتا ہے۔ اس پر ایک سروے کیا گیا تو معلوم ہوا کہ چیری کھانے سے نیند بہتر ہوتی ہے اور نیند بہتر ہونے سے تمام جسمانی اور دماغی افعال بہتر اور منظم ہوتے ہیں۔
جوڑوں کے درد میں آرام
چیری پر کیے گئے کئی اہم تجربات اور سروے سے انکشاف ہوا ہے کہ اس کا جوس جوڑوں کے درد کو کم کرتا ہے اور گٹھیا کے مرض میں فائدہ پہنچاتا ہے۔
کولیسٹرول گھٹائے
چیری کا جوس برے کولیسٹرول یعنی ’ایل ڈی ایل‘ کولیسٹرول کا دشمن ہے۔ اگر کولیسٹرول میں ایک فیصد کمی ہوجائے تو اس سے دل کے عارضے کا خدشہ دو فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔ اسی لیے چیری کا رس کولیسٹرل گھٹانے میں بہت معاون ہے۔
ورزش کا درد گھٹائے
ورزش کے بعد بدن میں درد ہونے لگتا ہے اور اس صورتحال میں چیری بدن کے درد کو کم کرتی ہے۔ خلیات کی ٹوٹ پھوٹ اور فرسودگی کو دور کرنے کی بہترین صلاحیت رکھتی ہیں۔ اس کے علاوہ پٹھوں اور عضلات میں اینٹھن کا بھی علاج ہے۔ جسمانی مشقت کرنے والے اور کھلاڑی حضرات چیری کا بطورِ خاص استعمال کریں۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

انگوٹھے چرا لیے

شائع شدہ

کو

انگوٹھے چرا لیے

انسانی لاشوں کی نمائش سے ایک شخص نے نہایت چالاکی سے پیرکے دوانگوٹھے کاٹ کرچرالیے۔
اصل انسانی لاشوں کی نمائش سے ایک شخص نے نہایت چالاکی سے پیر کےدو انگوٹھے کاٹ کرچرالیے۔ پولیس نے واقعے کے بعد مشتبہ شخص کو گرفتار کرلیا جس نے نمائش میں رکھی ایک لاش کے دونوں انگوٹھے چرائے تھے اور ان کی قیمت تیرہ لاکھ روپے سے بھی ذیادہ بتائی جارہی ہے۔ نیوزی لینڈ ہیرالڈ کے مطابق اس شخص پر چوری اور نامعلوم شخص کی لاش میں دخل اندازی اور بے حرمتی کے الزامات بھی عائد کیے گئے ہیں۔ پہلی مرتبہ اس شخص کو آکلینڈ کے ڈسٹرکٹ کورٹ میں پیش کیا گیا جہاں اس کی ضمانت ہوگئی اور اس کے بعد وہ سال کے آخر تک ویلنگٹن ڈسٹرکٹ کورٹ میں دوبارہ پیش ہوگا۔ اصل انسانی لاشوں کی اس عجیب و غریب نمائش کا نام ’باڈی ورلڈ وائٹلز‘ تھا جو ایک سفری نمائش تھی اور پہلی مرتبہ آکلینڈ میں منعقد ہوئی تھی جہاں سے لاش سے انگوٹھے چرالیے گئے۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں