Connect with us

انٹرنیشنل

مسجد پرقبضہ کی کوشیش

شائع شدہ

کو

مسجد پرقبضہ کی کوشیش

عالمی ذرائع ابلاغ کے مطابق جنوبی دہلی کے کھڑکی گاؤں میں واقع دورسلاطین کی تاریخی ’’کھڑکی مسجد‘‘ کی حفاظت پر مامور سیکیورٹی گارڈ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ڈیڑھ سال قبل یہاں آویزاں بورڈ سے لفظ ’’مسجد‘‘ کو ہٹا دیا گیا تھا جس کی اطلاع حکام کو دینے کے بعد دوبارہ ’’مسجد‘‘ کا لفظ تحریرکیا گیا تاہم دوسرے دن پھراس لفظ کو مٹا دیا گیا۔
گارڈ نے بتایا کہ بعض مقامی لوگوں کاکہنا ہے کہ یہ مسجد نہیں بلکہ مہاراج پرتاپ کا تعمیر کردہ قلعہ ہے۔ اے ایس آئی دہلی زون کے انچارج نے کہا کہ یہ حساس معاملہ ہے۔ لفظ مسجد سے چھیڑ چھاڑ کسی شرپسند کا کام ہے۔ واضح رہے کہ ’’کھڑکی مسجد‘‘ مشہور ساکیت مال کے قریب واقع ہے۔ اسے 14ویں صدی میں سلطان فیروز شاہ تغلق کے وزیر اعظم ملک مقبول نے تعمیر کرایا تھا۔

انٹرنیشنل

پاکستان پیچھے

شائع شدہ

کو

پاکستان پیچھے

ورلڈ جسٹس پراجیکٹ نے رپورٹ جاری کی ہے جس کے مطابق عوام کے جان و مال کے تحفظ میں افغانستان کی صورتحال پاکستان سے بہتر ہے۔
امریکی ادارے ورلڈ جسٹس پراجیکٹ نے قانون کی حکمرانی سے متعلق رینکنگ رپورٹ جاری کی ہے۔ رینکنگ 1 لاکھ 10 ہزار گھروں کے سروے کے بعد جاری کی گئی اور 113 ممالک میں 3 ہزار ماہرین نے سروے کیا، قانون کی حکمرانی کو 8 نکات پر طے کیا گیا جب کہ رینکنگ حکومتی اختیارت، کرپشن کا خاتمہ، شفاف حکمرانی، بنیادی حقوق، احتساب، عوام کے جان و مال کا تحفظ، دیوانی او فوجداری انصاف کے پیمانوں پر کی گئی۔
رپورٹ کے مطابق قانون کی حکمرانی میں 113 میں سے پہلے 50 ممالک میں کوئی جنوبی ایشائی ملک شامل نہیں جب کہ اس حوالے سے پاکستان کا 105 واں نمبرہے، قانون کی حکمرانی میں ڈنمارک پہلے، ناروے دوسرے اور فن لینڈ تیسرے نمبر ہے، قانون کی حکمرانی میں امریکا 19ویں، نیپال 58، سری لنکا کا 59 واں، بھارت کا 62 واں، چین 75 ویں اور افغانستان کا 111واں نمبر ہے۔ رپورٹ کے مطابق کرپشن کی عدم موجودگی میں پاکستان کا 99 واں نمبر ہے، اوپن گورنمنٹ، حکومتی شفافیت میں پاکستان 80ویں، بنیادی حقوق میں 100واں جب کہ عوام کے جان و مال کے تحفظ میں پاکستان سب سے آخر 113 ویں نمبر پر ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

انٹرنیشنل

اندھے ہو گئے

شائع شدہ

کو

اندھے ہو گئے

بھارتی شہر آگرہ میں سڑک کی تعمیر کا کام کرنے والے مزدوروں نے کتے پر تارکول ڈال کر اس کے اوپر ہی سڑک بنا ڈالی۔
آگرہ میں تاج محل کے قریب سڑک کی تعمیر کا کام کرنے والے مزدوروں نے کنارے پر سوئے ہوئے کتے کو ہٹانے کی زحمت کیے بغیر اس کے اوپر گرم تارکول ڈال کر سڑک تعمیر کردی جس سے کتا موقع پر ہی ہلاک ہوگیا۔ حکام نے سارا الزام نجی کمپنی پر رکھتے ہوئے کہا کہ سڑک کی تعمیر اور استر کاری کا کام کمپنی کا تھا۔ اس واقعے پر جانوروں کے حقوق کے ادارے کے نگرانوں کا کہناہے کہ کتا اس وقت سو رہا تھا، اسے بھگانے کے بجائے اسی پر تارکول ڈالا گیا جس کی وجہ سے اس کا آدھا جسم سڑک میں ہی دب گیا۔ جانوروں کے حقوق کے کارکنوں نے زبردست احتجاج کرتے ہوئے تعمیراتی کمپنی کی گاڑیاں ضبط کرلیں اور کام رکوا دیا۔ کمپنی کے اعلیٰ عہدیدار کو جائے وقوعہ پر طلب کرلیا گیا۔ جس کے بعد مشینری کی مدد سے سڑک کو کھود کر کتے کی لاش نکالی گئی۔

پڑھنا جاری رکھیں

انٹرنیشنل

تلاش جاری

شائع شدہ

کو

تلاش جاری

انڈونیشیا کے جزیرے سماٹرا کی جھیل ٹوبا میں کشتی کے حادثے میں لاپتہ افراد 192 افراد کی تلاش جاری ہے، لوگ اپنے پیاروں کے بارے میں جاننے کے لئے جھیل کنارے پہروں انتظار کرتے ہیں۔ کشتی ڈوبنے کا واقعہ 6 روز قبل پیش آیا۔
18 جون کو خراب موسم کے باعث ڈوبنے والی کشتی پر سوار 18 افراد کو بچا لیا گیا جبکہ 4 افراد کی لاشیں تلاش کر لی گئی ہیں۔ اطلاعات کے مطابق کشتی پر 200 سے زائد لوگ سوار تھے اور 192 تاحال لاپتہ ہیں جنکی تلاش جاری ہے۔ حکام کے مطابق جس مقام پر کشتی ڈوبی اسکی گہرائی ساڑھے چار سو میٹر کے لگ بھگ ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں