Connect with us

پاکستان

ہار ماننے سے انکار

شائع شدہ

کو

فیصلہ کن جنگ کا اعلان

مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نوازشریف نے سینیٹ الیکشن پر مخالفین کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سب چابی والے کھلونے ہیں جو کل ایک ہی جگہ جاکر جھک گئے۔

اسلام آباد میں پارٹی کے جنرل ورکرز اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میاں نوازشریف نے کہا کہ ہم نے قلیل مدت میں لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کیا، آج دل چاہتا ہے کہ کہیں منصوبوں کا افتتاح کرنے جاؤ، اس میں میرا بھی خون پسینہ گرا ہوا ہے، یقین ہے شاہد خاقان عباسی اور شہبازشریف بھی مجھے اس وقت مجھے یاد کرتے ہوں گے۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جو میرے ساتھ ہوا اس کے بعد کسی چیز کا افتتاح کرنے کا دل نہیں چاہتا، انسان کا دل ٹوٹ جاتا ہے لیکن میرا دل اتنا بھی نہیں ٹوٹا کہ پیچھے ہٹ جاؤں، جو مشن چن لیا ہے اس کی تکمیل تک کبھی پیچھے نہیں ہٹوں گا، یہ ہمارے ایمان کا حصہ ہے۔میاں نوازشریف کا کہنا تھا کہ (ن) لیگ کا منشور اب صرف ان چار الفاظ پر ہوگا کہ ’ووٹ کو عزت دو‘، کوئی نعرہ لگائے نہ لگائے لاکھوں کے مجمہ یہی نعرہ لگارہا ہے، اس کا مطلب ہے عوام کے حق حکمرانی کو اور انہیں عزت دو، یہ نعرہ اپنی ذات کے لیے نہیں لگاتا، میری ذات کی کوئی حیثیت نہیں، اگر اب کسی کی حیثیت ہے تو قوم ملک اور آنے والی نسلوں کی ہے۔انہوں نے چیئرمین سینیٹ کے الیکشن کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ کل ملک میں ایک تماشہ لگا، بڑے اصولوں کی بات کرتے ہیں، کل دیکھا کس طرح سے ایک ہی بارگاہ میں سب جاکر جھک گئے، بنی گالہ، بلاول ہاؤس والے اور کے پی کے سے چلنے والے قافلے بھی وہیں جاکر جھک گئے، ایک ہی جگہ پر جاکر سجدہ کردیا، کس کے آگے جاکر جھکے ہو، اس کی کیا خدمات ہیں پاکستان کے لیے، کتنا قد کاٹ ہے، وہ کیا شخص ہے کسی کو کوئی پتا نہیں، یہ سب چابی والے کھلونے ہیں، کیا کہوگے اس جگہ پر کیوں جھکے، کیسے سجدہ ریز ہوگئے۔

پاکستان

پابندی عائد

شائع شدہ

کو

پابندی عائد

سابق سیاسی حکومتوں کے ادوار میں سندھ کے سرکاری محکموں بالخصوص بلدیاتی اداروں اور محکمہ تعلیم میں صفائی کے عملے کی اسامیوں پر بھی من پسند افراد بھرتی ہونے کی شکایات کے بعد صوبے کے سرکاری اداروں میں” وائٹ کالر” سینیٹری ورکرز کی بھرتی پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔
اس بات کا انکشاف حال ہی میں بعض بلدیاتی اداروں کی جانب سے سینیٹری ورکرز کی اسامیوں کے حوالے سے جاری کیے گئے اشتہار میں ہوا ہے۔ اس سلسلے میں ٹائون کمیٹی اڈیرو لعل اسٹیشن کے چیئرمین کی جانب سے 7 جون کو ایک اشتہار جاری کیا گیا ہے جس میں 500 روپے روزانہ اجرت پر سینیٹری ورکرز کی اسامیوں کا اعلان کیا گیا ہے، مذکورہ اشتہار میں واضح طور پر لکھا گیا ہے کہ ’’ امیدوار وائٹ کالر نہیں ہونے چاہئیں‘‘۔ یہ پہلی مرتبہ ہے کہ صوبہ سندھ میں سرکاری ادارے کی جانب سے سینیٹری ورکرز کی اسامیوں کے لیے ’’ وائٹ کالر‘‘ نہ ہونے کی شرط عائد کی گئی ہے۔ واضح رہے کہ صوبے میں ’’وائٹ کالر‘‘ سینیٹری ورکرز کی اصطلاح اس وقت سے رائج ہوئی جب صوبے کے سرکاری اداروں بالخصوص بلدیاتی اداروں،اسپتالوں اور سرکاری تعلیمی اداروں میں سینیٹری ورکرز کی اسامیوں پرمن پسند اور کھاتے پیتے گھرانوں کے نوجوانوں کو بھرتی کیا گیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

معمہ حل

شائع شدہ

کو

معمہ حل

نیوکراچی میں ڈھائی ماہ قبل قتل کی جانے والے لڑکی کے قتل کا معمہ حل ہوگیا قتل میں ملوث مرکزی ملزم سمیت2 ملزمان کو گرفتارکرکے مقتولہ اور اس کے بھائی کے موبائل فون اور آلہ قتل بھی برآمد کرلیا گیا مقتولہ 5 ہزار روپے کی مقروض تھی رقم نہ دینے پر ملزم نے اپنے دوست کے ساتھ مل کر قتل کیا۔
ایس ایس سینٹرل ڈاکٹررضوان نے گزشتہ روز پریس کانفرنس میں بتایا کہ30 اپریل کو نیو کراچی تھانے کی حدود میں مکان میں 20 سالہ لڑکی رمشا کو قتل اور اس کے چھوٹے بھائی کو شدید زخمی کردیا تھا واقعے کا مقدمہ مقتولہ کی والدہ لبنیٰ کی مدعیت میں درج کرکے تفتیش شروع کی تھی، ایس ایس پی نے بتایا کہ قتل کی واردات کے بعد سے مقتولہ رمشا اور اس کے بھائی وجاہت کا موبائل فون غائب تھا، شروع میں جب پولیس ان دونوں موبائل فونز کو چیک کیا تو دونوں موبائل فون بند تھے پولیس 26 سے31 مئی تک موبائل فون چیک کرتی رہی تو موبائل آن اور کسی دوسری سم پر چل رہا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

گرمی کا زور ٹوٹ گیا

شائع شدہ

کو

گرمی کا زور ٹوٹ گیا

شہر قائد میں گرمی کی شدید لہرکے امکانات معدوم ہو گئے15 جولائی سے 15ستمبر تک شہر میں مون سون بارشوں کا دورانیہ ہے تاہم قبل از وقت مون سون کے اثرات ماہ جولائی کے آغاز میں ہی نمودار ہونا شروع ہوجائیں گے۔
رمضان المبارک کے آخری عشرے جبکہ عید تعطیلات کے دوران شہرپر موجود بادل بھی پری مون سون ہی کی وجہ سے نمودار ہوئے تھے، پری مون سون کے بعد موسم میں بہتری آنے کی توقع ہے، رواں اور اگلے ماہ سمندر میں موسمیاتی تبدیلی کی کوئی غیر معمولی سرگرمی دکھائی نہیں دے رہی ہے۔ ڈائریکٹر محکمہ موسمیات عبدالرشید کے مطابق جون اور اگلے مہینے جولائی میں شہر میں رواں سال آنے والی گرمی کی لہر (ہیٹ ویو)کی طرز پر صورت حال دکھائی نہیں دے رہی اور واضح امکان ہے کہ مون سون کے اثرات کی وجہ موسم بتدریج بہتری کی جانب جائے گا، ڈائریکٹر محکمہ موسمیات کے مطابق رواں سال مون سون کی بارشیں کراچی میں ملک کے دیگر شہروں کے مقابلے میں کم ہونے کی توقع ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں