Connect with us

صحت

موسم گرما کا ڈائٹ پلان

شائع شدہ

کو

موسم گرما کا ڈائٹ پلان

کچھ عرصہ قبل یہ مشہور تھا کہ صنف نازک اپنی خوبصورتی اور نزاکت کے حوالے سے خاصی حساس ہوتی ہیں تاہم اس کے بعد خواتین اور ان کی حساسیت میں تبدیلی دیکھنے میں آئی اور خوبصورتی کے ساتھ ساتھ خواتین خود کو سلم و اسمارٹ رکھنے میں کافی دلچسپی لینے لگیں اور یہ دلچسپی اب تیزی سے جنون کی حیثیت اختیار کرتی جارہی ہے۔ موسم گرما کی آمد کے ساتھ جہاں خواتین ایک طرف گرمیوں کے ملبوسات کی خریداری میں دلچسپی لینے لگتی ہیں وہیں انھیں گرمیوں کے شروع ہوتے ہی اپنی ڈائٹنگ متاثر ہونے کی فکر بھی ستانے لگتی ہےچونکہ گرمیوں کے شروع ہوتے ہی ہر ایک کے کھانے پینے کے انداز میں تبدیلی آجاتی ہے یہی وجہ ہے کہ وزن کم کرنے کی خواہشمند خواتین بھی اس سلسلے میں خاصی فکر مند ہونے لگتی ہیں کہ انھیں اب کیسی غذا لینی چاہیئے۔
گرمیوں میں چونکہ انسانی جسم کو کم کیلوریز کی ضرورت ہوتی ہے اورزیادہ گرمی انسانی جسم میں پانی کی کمی جیسے مسائل پیدا کرتی ہےجو ہمارے میٹا بولزم پر اثرانداز ہوتا ہے۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ گرمی میں بغیر ورزش انسانی جسم سے پسینہ ، سانس لینے سمیت فاضل مادوں کا اخراج روزانہ10کپ پانی ضائع کرنے کا سبب بن جاتا ہے۔اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ خواتین سمر کا ڈائٹ پلان کیسے مرتب کریں جو انھیں ایک طرف پانی کی کمی جیسے مسائل سے دور رکھے تو دوسری جانب ان کی ڈائٹنگ پر بھی اثر انداز نہ ہو ۔آئیے پھر بات کرتے ہیں موسم گرما میں خواتین کے ڈائیٹ پلان پر ،کہ انھیں گرم موسم میں ناشتہ ،دوپہر کا کھانا یا پھر رات کا کھانا کیسا لینا چاہئیے اور کتنی کیلوریز لینی چاہئیں۔
صبح کا ناشتہ
کوئی مجبوری ہو یاڈائٹنگ ،طبی ماہرین ازخود ناشتہ چھوڑنے کا مشورہ نہیں دیتے ۔ان کے نزدیک ناشتہ نہ کرنا انسانی صحت پر منفی اثرات مرتب کرتا ہے۔رات کے طویل آرام کے بعد جب انسان نیند سے بیدار ہوتا ہے تو اس کا مطلب یہ ہے کہ انسانی جسم میں موجود مشینری سسٹم 12 گھنٹوں سے بغیر کسی ایندھن کام کررہا تھا اب فوری طور پر اسے ایندھن درکار ہے ۔ جسم کو ایندھن نہ ملنے کے باعث آپ کے خون میں گلوکوز کی کمی ہو جاتی ہے۔موسم گرما میں چونکہ انسان کو کم کیلوریز والی غذائیں لینی چاہئیںچنانچہ صبح ناشتے میںخواتین کے لئے270کیلوریزکا ہونا ضروری ہے ۔اس کا مطلب ہے کہ وہ غذائیں لی جائیں جن میں کم ازکم 270 کیلوریز لازمی موجود ہوںیہاں دوقسم کے ناشتوں کا چارٹ موجود ہے جنھیں موسم گرما میں خواتین اپنی پسند کے مطابق اپنا سکتی ہیں۔
1۔آملیٹ
تین انڈے
چاپ کی ہوئی سبزیاں((مثال کے طور پر، پیاز، مشروم، ٹماٹر)
ا یک کپ فروٹ سلاد
ان کیلوریز کے ساتھ لیے گئے ناشتے میں خواتین عام خواتین کی نسبت 65فیصد زیادہ جلدی وزن میں کمی لاسکتی ہیں۔
2۔اسمارٹ اسمودی
3/4کپ کم بالائی والا دہی
1/2کپ اسکیمڈ ملک
1 کیلا
1/2کپ تازہ یا جمی ہوئی بیریز۔
سمودی ایک صحت بخش غذاہے۔یہ مختلف پھلوں،سبزیوں،دودھ،دہی،برف اورپانی وغیرہ پرمشتمل اجزاء کوبلینڈر میں بلینڈ کرنے کاجدید تصورہے۔اس میں استعمال کیے جانے والے مختلف پھل میگنیشیم اورپوٹاشیم کے حصول کابہترین ذریعہ ہیں۔اس میں دودھ کے استعمال سے کیلشیم اورپوٹاشیم بھی مل جاتاہے۔اسی لئے اسمودی کی بدولت جسم میں الیکٹرولائٹس کومتوازن رکھاجاسکتاہے۔
دوپہر کا کھا نا
ڈائٹنگ کا صحیح مطلب خود پر بڑھے ہوئے وزن کو لےکر ذہنی دباؤ ڈالنا نہیں بلکہ صحت کے اصولوں پر عمل کرنا ہے موسم گرما میںماہرین دوپہر کے کھانے کے لئے 360کیلوریز اپنانے کا مشورہ دیتے ہیں۔
1/2کپ کین ٹونا فش
دو ٹیبل اسپون (10ملی گرام)کم کیلوریز والامایو
دو سلائس (گندم )
1/3کپ یا 75ملی گرام کم کیلوریز والی پنیر
ٹونا مچھلی میں مایو مکس کرلیں اور سلائس، ٹماٹر ،پیاز اور پنیر کے ساتھ استعمال کی جاسکتی ہیں ۔
رات کا کھانا
115گرام ،لین بیف یا چکن
سبزی کی ترکاری گاجر،بروکولی،،مرچ اور گوبھی
تریاکی ساس
ایک کپ براؤن رائس
پی میں تھوڑا سا آئل ڈال کر تمام چیزیں ہلکی سا براؤن کرلیں اس میں ساس بھی شامل کرلیں پاستا یا چاول کے ساتھ استعمال کیے جاسکتے ہیں۔
مشروبات
شدید گرمی اور بڑھتا درجہ حرارت نہ صرف انسانی صحت بلکہ انسان کےموڈکو بھی خاصا متاثر کرتا ہے جس کے باعث جسم میں پانی کی کمی، چڑچڑاپن ،نیند کی کمی اور تھکن جیسے مسائل پیدا ہونے لگتے ہیں ۔گرمی سے چھٹکارا حاصل کرنے اور ہلکے پن و ٹھنڈک کے احساس کو برقرار رکھنے اس موسم کے حساب سے درست غذاؤں کا انتخاب ضروری ہوتا ہے جو کہ آپ کو جسمانی طور پر مضبوط بناتا ہے۔آئیے ذکر کرتے ہیں موسم گرما کے ان مشروبات کا جو دوران ڈائٹنگ بھی خواتین بآسانی استعمال کرسکتی ہیں۔٭پانی اور کلب سوڈا٭لیموں پانی٭بغیر چینی کی چائے٭ لیمن ٹی یاگرین ٹی ٭بلیک کافی

صحت

اینٹی آکسیڈنٹ دریافت

شائع شدہ

کو

اینٹی آکسیڈنٹ دریافت

طب کی دنیا سے ایک اچھی خبر آئی ہے کہ ایک خاص قسم کا اینٹی آکسیڈنٹ خون کی نالیوں اور رگوں کو پھر سے نیا کرنے کی مکمل اہلیت رکھتا ہے۔ یعنی بوڑھے افراد میں بھی خون کی رگیں جوان بنائی جاسکتی ہیں۔ اس اینٹی آکسیڈنٹ کو MitoQ کا نام دیا گیا ہے جو خصوصاً مائٹوکونڈریا پر اثر دکھاتا ہے جسے خلیات (سیلز) کا پاور ہاؤس بھی کہا جاتا ہے۔ ماہرین کے مطابق اس کا مسلسل چھ ہفتے تک استعمال خون کی رگوں میں بڑھاپے کے اثرات کو ختم کرتا ہے اور ان کی عمر میں 15 سے 20 سال جتنی کمی کرتا ہے۔
یونیورسٹی آف کولاراڈو بولڈر کےماہرین نے اس ضمن میں ایک مطالعہ کیا ہے جس کی تفصیلات امریکن ہارٹ ایسوسی ایشن کے ایک تحقیقی جرنل ہائپرٹینشن میں شائع ہوئی ہیں۔ ان سےمعلوم ہوا ہے کہ غذائیت سے بھرپور سپلیمنٹ دل اور خون کی رگوں کے امراض کو روکنے میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔ اگرچہ اینٹی آکسیڈنٹس کی افادیت پر کئی سوالات اٹھائے گئے ہیں لیکن اس تحقیق سے انکشاف ہوا ہے کہ ایک خاص اینٹی آکسیڈنٹ MitoQ دل سے لے کر دماغ تک کی رگوں کو جوان رکھتا ہے اور ان سے وابستہ امراض مثلاً امراضِ قلب اور فالج سے بچاتا ہے۔
اس مطالعے سے وابستہ اہم ماہر ڈاکٹر میتھیو روسمین کہتے ہیں کہ پہلی مرتبہ مائٹوکونڈریا پر اثرانداز ہونے والے کسی اینٹی آکسیڈنٹ پر تحقیق کی گئی ہے جو رگوں کو بہتر بناتا ہے۔ اس کی بنا پر امراضِ قلب کو دور کرنے والے نئے طریقہ علاج میں بھی مدد ملے گی۔
مطالعے میں 60 سے 79 سال تک کے 20 افراد کو بھرتی کیا گیا اور ان میں سے ایک گروپ کو روزانہ MitoQ کی 20 ملی گرام مقدار کھلائی گئی جبکہ بقیہ افراد کو کوئی سپلیمنٹ نہیں دیا گیا اور انہیں ایک فرضی دوا یا پلیسیبو دی گئی۔ چھ ہفتے بعد دونوں گروہوں میں رگوں کی لچک، خون کے بہاؤ اور دیگر پہلو نوٹ کیے گئے۔ اس کے بعد دو ہفتےتک کوئی دوا نہیں دی گئی۔
اس کے بعد جس گروپ کو فرضی دوا دی جارہی تھی اسے اینٹی آکسیڈنٹ سپلیمنٹ دیا جانے لگا اور دوسرے گروہ کو فرضی دوا دی گئی اور یہ عمل بھی چھ ہفتوں کےلیے دوہرایا گیا۔ اس کے بعد دونوں مطالعات سے معلوم ہوا کہ MitoQ سپلیمنٹ سے رگوں کے پھیلنے اور سکڑنے کی شرح 42 فیصد تک بہتر ہوئی جس کا مطلب یہ ہے کہ وہ اتنی جوان ہوگئیں جتنا 15 سے 20 سال قبل تھیں۔
ماہرین نے اس تحقیق کے بعد محتاط اندازہ لگایا کہ MitoQ کے مسلسل استعمال سے دل کے امراض کا خطرہ 13 فیصد تک کم ہوسکتا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

سمارٹ فون دیکھنا نقصان دہ

شائع شدہ

کو

سمارٹ فون دیکھنا نقصان دہ

ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ اسمارٹ فون کو بار بار دیکھنے کی شدید عادت اس شخص کو منشیات کی لت کی مانند جکڑلیتی ہے۔ سان فرانسسکو اسٹیٹ یونیورسٹی کے پروفیسر ایرک پیپر کے مطابق اسمارٹ فون کا استعمال عین اسی طرح ہے جس طرح کوئی شخص منشیات استعمال کرتا ہے لیکن اس کی باقاعدہ سائنسی وجوہ ہیں جنہیں جاننا بہت ضروری ہے۔ شروع شروع میں سوشل میڈیا ایپس کے نوٹی فکیشن کی آواز کو نظر انداز کرنا مشکل ہوتا ہے بعد ازاں اس کا انتظار رہتا ہے اور بعد میں یہ ایک نشے کی عادت بن جاتی ہے اس موقع پر اسمارٹ فون کا استعمال منشیات کے استعمال جیسا ہوجاتا ہے لیکن ایسے افراد میں اداسی، تنہائی اور بے چینی کا تناسب بھی بہت زیادہ ہوتا ہے۔ پروفیسر پیپر کے مطابق اسمارٹ فون کی لت دماغ کے اندر خلیات کے روابط (کنکشنز) عین اسی طرح کردیتی ہے جس طرح افیون استعمال کرنے والے کے دماغ میں ہوتے ہیں، جس طرح لوگ خود کو بھلانے اور درد بھگانے کے لیے افیون اور نشہ استعمال کرتے ہیں عین اسی طرح وہ اسمارٹ فون پر سوشل میڈیا ایپس کو بار بار کھول کر دیکھتے رہتے ہیں۔
اس ضمن میں ایرک پیپر اور ان کے ساتھیوں نے 135 افراد کا سروے کیا اور بتایا کہ اسمارٹ فون کے بہت زیادہ عادی افراد ایک کام پر توجہ نہیں دے پاتے اور وہ ڈپریشن، بے چینی اور اکیلے پن کے بھی شکار ہوتے ہیں۔ نفسیات دانوں کے مطابق اسمارٹ فون کی سب سے بڑی وجہ مختلف ایپس پر آنے والی اپ ڈیٹس اور پیغامات ہیں جو اسمارٹ فون کے عادی شخص کے لیے ایک زنجیر کی مانند ہیں۔ ایرک کہتے ہیں کہ سوشل میڈیا کمپنیوں کو زیادہ نگاہیں، زیادہ کلک اور بار بار توجہ چاہیے اور یہ سب زیادہ رقم کے لالچ میں کیا جاتا ہے، اب حال یہ ہے کہ اسمارٹ فون نے لوگوں کی توجہ کو اغوا کر رکھا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

چکن چائنیز پکوڑے

شائع شدہ

کو

چکن چائنیز پکوڑے

ہم بتارہے ہیں آپ کو چکن چائنیزپکوڑے بنانے کی ترکیب جو بڑوں کے ساتھ بچوں کو بھی پسند آئیں گے۔
اجزا:
چکن …آدھی پیالی ابال کر ریشے کرلیں
گائے کا قیمہ ابلا ہوا…آدھی پیالی
انڈا …ایک عدد
چکن کی یخنی…آدھی پیالی
شملہ مرچ…ایک عدد
آلو چھوٹے سائز کا…ایک عدد
پیاز…ایک عدد
بیسن…آدھی پیالی
ہری مرچ…2عدد
لہسن ادرک کا پیسٹ…ایک کھانے کا چمچہ
نمک…حسب ذائقہ
چائنیز نمک…ایک کھانے کا چمچہ
پسی ہوئی کالی مرچ…آدھا چائے کا چمچہ
ہرا دھنیا…آدھا کپ
پسی لال مرچ…آدھا چائے کا چمچہ
ترکیب:
ایک باؤل میں شملہ مرچ، آلو، پیاز اور ہری مرچ کو لمبائی میں کاٹ کر ڈالیں، چکن کا ریشہ ابلا ہوا قیمہ،انڈا، بیسن، لہسن ادرک کا پیسٹ، نمک، چائنیز نمک، کالی مرچ، ہرا دھنیا ،پسی ہوئی لال مرچ ڈالیں، چکن کی یخنی ڈال کر مکس کریں۔ کڑاہی میں تیل گرم کرکے فرائی کریں اور املی کی چٹنی کے ساتھ گرما گرم پیش کریں۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں