Connect with us

انٹرنیشنل

مہنگا ہونے کا خدشہ

شائع شدہ

کو

مہنگا ہونے کا خدشہ

بین الاقوامی توانائی ایجنسی (آئی ای اے) کا کہنا ہے کہ روس اور اوپیک ممالک کی جانب سے تیل کی پیداوار کو محدود کرنے اور شام میں جاری حالیہ خانہ جنگی کی وجہ سے تیل کی قیمتیں بلندی پر ہیں۔ دنیا کی بڑی معاشی طاقتوں امریکا اور چین کی جانب سے تیل کے نرخ کے اعلانات سے یہ ابہام پیدا ہوا کہ اس سے عالمی سطح پر تیل کی قمیت کے مسائل بڑھ سکتے ہیں، اور دونوں ممالک کے درمیان تنازعات ختم ہونے کے بجائے تجارتی جنگ میں تبدیل ہوسکتے ہیں۔ آئی ای اے کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں سیاسی بے یقینی کی کیفیت جاری ہے، شام اور یمن میں اٹھائے جانے والے ممکنہ اقدامات کی غیر یقینی صورتحال کے سبب، خام تیل کی قیمت 70 ڈالر فی بیرل تک جا پہنچی ہے۔
رپورت میں یہ بھی کہا گیا کہ تیل کے نرخ میں اضافے کی ایک وجہ ویانا میں کیا جانے والا معاہدہ بھی ہے، جو سال 2016 میں عالمی سطح پر تیل کے نرخ انتہائی کم ہوجانے کے سبب کیا گیا تھا۔ خیال رہے کہ اس سمجھوتے کے تحت، آرگنائزیشن آف دا پیٹرولیم ایکسپورٹنگ کنٹریز (او پیک) میں شامل تیل نکالنے والے ممالک اور روس، نرخوں میں استحکام کے لیے تیل کی پیداوار میں کمی کرنے کے پابند ہیں۔ اس معاہدے کے بعد کچھ ممالک نے تیل کی پیداوار، کیے گئے وعدے سے بھی کئی گنا کم کردی، جس سے تیل کی قیمت 67.65 سے تجاوز کر کے 72.60 ڈالر فی بیرل تک جاپہنچی ۔ اس بات کو بھی سامنے لایا گیا کہ اوپیک کے سب سے اہم ملک سعودی عرب نے تیل کی پیداوار مقرر کردہ حد سے کافی کم کردی تھی، جبکہ لیبیا میں جاری خانہ جنگی کے سبب وہاں بھی پیداوار متاثر ہوئی۔

انٹرنیشنل

اختیارات چھین گئے

شائع شدہ

کو

اختیارات چھین گئے

اسرائیلی وزیراعظم سے پارلیمنٹ نے جنگی اختیارات واپس لے لیے جس کے بعد اب پوری سکیورٹی کونسل جنگ کا فیصلہ کرے گی۔ غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم کے جنگی اختیارات پھر واپس لے لئے گئے۔ پارلیمنٹ میں اختیار پر نظرثانی اور ترامیم بھی کی گئیں اس حوالے سے پارلیمنٹ میں نئے قانون منظور کئے گئے جس کے تحت اب پوری سکیورٹی کونسل جنگ کا فیصلہ کرے گی۔ اکثریتی ارکان نے نئے وضع کردہ قانون کی حمایت میں ووٹ ڈالے۔ واضح ہو کہ اپریل میں پارلیمنٹ نے وزیراعظم اور وزیر دفاع کو اعلان جنگ کا اختیار دیا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

انٹرنیشنل

تحریک عدم اعتماد

شائع شدہ

کو

تحریک عدم اعتماد

بھارتی میڈیا کے مطابق پارلیمنٹ کے مون سون اجلاس کے پہلے روز پارلیمانی امور کے وزیر اننت کمار نے اسپیکر کو مخاطب کرتے ہوئے یاد دہانی کرائی کہ کئی اپوزیشن جماعتوں نے وزیراعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع کرائی ہے۔ آپ سے درخواست ہے کہ اسے قبول کرلیا جائے تاکہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے۔ پارلیمانی امور کے وزیر کے توجہ دلاؤ نوٹس پر رولنگ دیتے ہوئے لوک سبھا اسپیکر سمترا مہاجن نے کہا کہ تلگو دیشم پارٹی کے سرینواس کی تحریک سب سے پہلے موصول ہوئی تھی اس لیے ان کی تحریک عدم اعتماد کو منظور کرتے ہوئے انہیں تجویز پیش کرنے کی اجازت دے رہی ہوں۔ جمعہ کے روز اس پر بحث کی جائے گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

انٹرنیشنل

ایک اور ناکامی

شائع شدہ

کو

ایک اور ناکامی

سعودی عرب پرحوثیوں کی طرف سے ایک اورمیزائل حملہ کر دیا گیا جسے اتحادی فوج کی جانب سے ناکام بنا دیا گیا۔
غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق آج دوپہرصعدہ کی طرف سے نجران پرمیزائل فائر کیا گیاجسے ناکام بنا دیا گیا۔کرنل ترکئی المالکی کے مطابق میزائل کو نجران پہنچنے سے قبل ہے تباہ کر دیا گیاتھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں