Connect with us

کھیل

تاریخی ٹیسٹ میں کامیابی

شائع شدہ

کو

تاریخی ٹیسٹ میں کامیابی

آئرلینڈ کے خلاف تاریخی ٹیسٹ میچ میں بابر اعظم اور امام الحق کی شاندار نصف سنچریوں کی بدولت پاکستان نے 5 وکٹوں سے کامیابی حاصل کرلی۔

پاکستان نے آئرلینڈ کی جانب سے دیا جانے والا 160 رنز کا ہدف 5 وکٹوں کے نقصان پر پورا کرلیا۔میچ کے پانچویں روز آئرلینڈ نے 7 وکٹوں کے نقصان پر 319 رنز سے اپنی دوسری اننگز شروع کی لیکن اس کے آخری تینوں کھلاڑی محض 20 رنز کا اضافہ کرسکے اور پوری ٹیم 339 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئی۔160 رنز کے ہدف کے تعاقب میں پاکستان کا آغاز اچھا نہ تھا اور اس کی تین وکٹیں صرف 14 رنز کے مجموعے پر گرگئیں۔اظہر علی 2، حارث سہیل 7 اور اسد شفیق صرف ایک رن بناکر پویلین لوٹ گئے۔چوتھی وکٹ پر بابر اعظم اور امام الحق نے ٹیم کو سہارا دیا اور ذمہ دارانہ بیٹنگ کرتے ہوئے پاکستان کی جیت کی بنیاد رکھی۔دونوں کھلاڑیوں نے اپنی نصف سنچریاں مکمل کیں اور 126 رنز کی پارٹنرشپ قائم کی جس کے بعد بابر اعظم 140 کے مجموعی اسکور پر 59 رنز بناکر رن آؤٹ ہوگئے۔اس کے بعد کپتان سرفراز احمد بیٹنگ کے لیے آئے تاہم وہ میچ فنش نہ کرسکے اور 8 رنز بناکر ایل بی ڈبلیو ہوگئے۔

سرفراز کے بعد شاداب خان کریز پر آئے جنہوں نے امام الحق کا خوب ساتھ دیا اور میچ کو منطقی انجام تک پہنچایا۔نوجوان لیفٹ آرم بیٹسمین امام الحق 74 رنز بناکر ناٹ آؤٹ رہے اور وہ دوسری اننگز میں پاکستان کے ٹاپ اسکورر رہے جبکہ شاداب خان 4 رنز بناکر ناٹ آؤٹ رہے۔ٹیسٹ ٹیم کا درجہ ملنے کے بعد یہ آئرلینڈ کا پہلا ٹیسٹ میچ تھا جس میں اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

کھیل

بیٹنگ کا فیصلہ

شائع شدہ

کو

بیٹنگ کا فیصلہ

پاکستان کے خلاف سیریز کے تیسرے ایک روزہ میچ میں زمبابوے نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا ہے۔
ٹاس جیتنے کے بعد زمبابوے کے کپتان کا کہنا تھا کہ پہلے دو میچوں میں پاکستان نے بہترین کارکردگی دکھا کر کامیابی حاصل کی لیکن اس میچ میں وہ اپنی بھرپور کوشش کرکے کم بیک کریں گے۔ دوسری جانب پاکستانی کپتان سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ پہلے دونوں میچز میں کامیابی کے بعد قومی ٹیم کے حوصلے بلند ہیں اور وہ کوشش کریں گے کہ سیریز میں تمام میچز جیت کر کلین سویپ کریں۔ زمبابوے کی جانب سے ٹیم میں تین جبکہ پاکستان نے دو تبدیلیاں کی ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

کھیل

تیسرا ون ڈے آج

شائع شدہ

کو

تیسرا ون ڈے آج

پاکستان اور میزبان زمبابوے کے درمیان تیسرے ون ڈے کا میدان آج لگے گا، شاہینوں نے فتوحات کی ہیٹ ٹرک سمیت سال کی پہلی سیریز پر نظریں جما لیں۔ ایک روزہ سیریز کا تیسرا مقابلہ پاکستان اور میزبان زمبابوے کے درمیان آج ہو رہا ہے ۔
آج پھر سوا بارہ بجے میدان لگے گا۔ میچ کیلئے تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں، دونوں ٹیموں نے پلاننگ بھی کر لی ہے اور مورال بھی ہائی دکھائی دیتا ہے ۔ آج کی جیت سے شاہین مسلسل تیسری فتح اور سال کی پہلی سیریز اپنے نام کر لیں گے۔ شعیب ملک کے لیے سات ہزار رنز مکمل کرنے کا پھر موقع ہے۔ گرین شرٹس میں ایک تبدیلی کا امکان ہے، محمد عامر کی جگہ یاسر شاہ کی انٹری متوقع ہے۔ ادھر زمبابوے بھی کامیابی کے لیے پُرجوش ہے۔ زمبابوے کے کپتان ہمیلٹن ماساکاڈزا کا کہنا ہے سیریز میں کم بیک کریں گے۔ یاد رہے کہ سیریز کے افتتاحی ون ڈے میں پاکستان نے دو سو ایک اور دوسرے میچ میں نو وکٹ سے کامیابی حاصل کر کے مخالف ٹیم پر اپنی برتری کی دھاک بٹھائی تھی ۔

پڑھنا جاری رکھیں

کھیل

پاکستان کا نقصان

شائع شدہ

کو

پاکستان کا نقصان

زمبابوے کے خلاف تیسرے ون ڈے میچ میں پاکستان کو دو اہم ترین فاسٹ بولرز محمد عامر اور حسن علی کی خدمات حاصل نہیں ہوں گی۔ سینیئر فاسٹ بولر وہاب ریاض اور راحت علی ٹیم سے باہر ہیں، جنید خان کو ٹیم میں جگہ حاصل کرنے میں مشکل پیش آرہی ہے جبکہ نوجوان بولرز حسن علی،عثمان خان شنواری اور شاہین شاہ آفریدی نے اپنی کارکردگی سے سینیئرز کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے۔ محمد عامر آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی فائنل کے بعد بہت کم میچز میں نمایاں کارکردگی دکھا سکے ہیں۔ پاکستانی کرکٹ ٹیم انتظامیہ فاسٹ بولر محمد عامر کی غیر مستقل مزاج کارکردگی سے پریشان ہے اور انہیں زمبابوے کے خلاف بدھ کو ہونے والے تیسرے ون ڈے انٹر نیشنل میں آرام دینے کی تجویز ہے۔ توقع ہے کہ محمد عامر کی جگہ ایک اور لیفٹ آرم فاسٹ بولر جنید خان کو موقع دیا جائے گا جبکہ شعیب ملک کی جگہ چوتھے نمبر پر آل راؤنڈر فہیم اشر ف کو بیٹنگ میں اوپر کے نمبر پر کھلانے کی تجویز ہے۔
شعیب ملک پانچویں اور سرفراز احمد چھٹے نمبر پر آئیں گے۔ فہیم اشرف کو مڈل آرڈر میں جارحانہ بیٹنگ کے لیے استعمال کیا جائے گا تاکہ پاکستانی ٹیم بڑا اسکور بنا سکے۔ اس وقت یہی تاثر ہے کہ مڈل آرڈر میں سلو بیٹنگ کی وجہ سے پاکستانی ٹیم کے رنز بنانے کی رفتار کم ہو جاتی ہے۔پاکستان اور زمبابوے کے درمیان تیسرا ون ڈے انٹر نیشنل آج کوئینز کلب بولاوائیو میں کھیلا جائے گا۔ پانچ میچوں کی سیریز میں پاکستان کو دو صفر کی برتری حاصل ہے۔ محمد عامر نے پہلے میچ میں 21رنز دے کر ایک وکٹ حاصل کی تھی دوسرے میچ میں انہوں نے33رنز دیے تھے اور کوئی وکٹ حاصل نہیں کرسکے تھے۔ محمد عامر ٹیسٹ کرکٹ کو خیرباد کہنے پر غور کررہے ہیں اورتمام تر توجہ محدود اوورز کی کرکٹ پر دینا چاہتے ہیں لیکن محمد عامر ابھی تک سینیئر بولر والا کردار ادا کرنے میں ناکام ہیں۔
ون ڈے سیریز سے قبل ٹی ٹوئنٹی سیریز میں بھی محمد عامر کو پانچ میں سے تین میچ کھلائے گئے تھے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مکی آرتھر اور سرفراز احمد چاہتے ہیں کہ محمد عامر فرنٹ سے لیڈ کریں لیکن ان کی کارکردگی میں تسلسل دکھائی نہیں دیتا۔ تیسرے میچ میں محمد عامر کی جگہ جنید خان کھیلیں گے۔26 سالہ محمد عامر پاکستان کی جانب سے33 ٹیسٹ 42 ون ڈے اور 41 ٹی ٹوئنٹی کھیل چکے ہیں۔ جنید خان اکتوبر کے بعد پاکستان کے لیے پہلا میچ کھیلیں گے۔ انہوں نے آخری ون ڈے سری لنکا کے خلاف شارجہ میں کھیلا تھا۔ دوسری جانب فاسٹ بولر حسن علی بھی گردن کی انجری کا شکار ہوگئے ہیں جس کے باعث تیسرے ون ڈے میں ان کی جگہ یاسر شاہ کو کھلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں