Connect with us

انٹرنیشنل

گوگل کے خلاف تحقیقات

شائع شدہ

کو

گوگل کے خلاف تحقیقات

فیس بک کے ڈیٹا لیکس اسکینڈل نے تو صارفین کے اعتماد کو ٹھیس پہنچائی ہی تھی اور اب خبر یہ ہے کہ معروف سرچ انجن کمپنی گوگل بھی بغیر اجازت صارفین کی نقل و حرکت ریکارڈ کرتی رہی ہے۔یہی وجہ ہے کہ آسٹریلیا میں انٹرنیٹ کی سب سے بڑی کمپنی گوگل کے خلاف تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔آسڑیلیا میں گوگل پر یہ الزام عائد کیا گیا ہے کہ اس نے اسمارٹ فون صارفین کی نقل و حرکت کو بغیر اجازت ریکارڈ کیا، یعنی ’لوکیشن‘ فیچر کا استعمال غلط کیا ہے۔گوگل پر عائد الزام کے مطابق اسمارٹ فون میں چاہے سِم کارڈ ہو یا انٹرنیٹ بند ہو تب بھی صارفین کی لوکیشن کمپنی کو پتہ چل رہی تھی۔علاوہ ازیں ایسے صارفین کی نقل و حرکت کا ریکارڈ بھی رکھا گیا جنہوں نے اپنے موبائل فون پر 'مقام بتانے' کا آپشن بند کر رکھا تھا۔گوگل پر یہ بھی الزام عائد کیا گیا کہ وہ ہر صارف کا ماہانہ ایک گیگابائیٹ کے مساوی ڈیٹا ریکارڈ کررہی ہے-
دوسری جانب گوگل ترجمان کا کہنا ہے کہ کمپنی کے پاس صارفین کی جانب سے ڈیٹا جمع کرنے کی اجازت ہے، اس کے علاوہ اکثر صارفین کے موبائل کی لوکیشن سیٹنگز منفرد ہوتی ہے اور لوکیشن فیچر اس باعث بھی فعال رہ سکتا ہے۔

انٹرنیشنل

حکومت سازی تیز

شائع شدہ

کو

حکومت سازی تیز

عراقی وزیراعظم حیدر العبادی نے زور دیا کہ حکومت کی تشکیل نو کا عمل تیز کیا جائے تاکہ مظاہرین کی جانب سے طلب کردہ خدمات فراہم کی جاسکیں اخباری ذرائع کے مطابق عراقی حکومت کی جانب سے جن اصلاحات پر عمل درامد متوقع ہے ان میں ملک کے جنوبی اور وسطی صوبوں کے لیے رقوم کا مختص کیا جانا اور گیس اور تیل کی غیر ملکی کمپنیوں کو اس امر کا پابند بنانا ہے کہ اُن کی نصف ورک فورس عراقی شہریوں پر مشتمل ہوگی۔

پڑھنا جاری رکھیں

انٹرنیشنل

8 ہلاک

شائع شدہ

کو

8 ہلاک

عراق میں آٹھ جولائی سے عوامی احتجاج کے دوران 8 افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو چکے ہیں جب کہ 60 زخمی بھی ہوئے۔

پڑھنا جاری رکھیں

انٹرنیشنل

آزاد معاہدہ

شائع شدہ

کو

آزاد معاہدہ

یورپین یونین اور جاپان کے درمیان آزاد تجارتی معاہدہ طے پا گیا جس کے تحت دونوں فریق ایک دوسرے کی تقریباً تمام برآمدی اشیاء پر ٹیکس ختم کر دیں گے ۔ معاہدے پر دستخط کی تقریب منگل کے روز جاپانی دارالحکومت ٹوکیو میں منعقد ہوئی جہاں یورپین یونین کی جانب سے یورپین کمیشن کے سربراہ جاں کلاڈ جنکر ، یورپین کونسل کے سربراہ ڈونلڈ ٹسک اور جاپانی وزیراعظم شنزو ایبے نے دستخط کئے۔ یورپ کی جانب سے کسی دوسرے فریق کے ساتھ کیا جانے والا یہ سب سے بڑا معاہدہ ہے ۔آزادانہ معاہدہ کرنے والے یہ دونوں فریق دنیا کی مجموعی تجارت کے 30 فیصد حجم کے حامل ہیں ۔ دوسری جانب معاہدے سے یورپین یونین اور امریکہ کے درمیان لفظی گولہ باری میں بھی اضافہ ہوگیا ہے ۔ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے یورپ کو’ دشمن‘ قرار دینے کے بعد یورپی خارجہ امور کی سربراہ فید ریکا موغرینی نے اس معاہدے کے تناظر میں بیان دیتے ہوئے کہا کہ دنیا میں ہمارے بھی اور دوست موجود ہیں ۔ ڈونلڈ ٹسک نے کہا کہ سیاسی طور پر یہ معاہدہ بین الاقوامی سیاست میں بڑھتے ہوئے اندھیروں میں روشنی کی کرن ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ آج کا دن نہ صرف یورپی و جاپانی عوام کیلئے اچھا دن ہے بلکہ ان تمام کیلئے جو باہمی احترام اور تعاون پر یقین رکھتے ہیں ۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں