Connect with us

شوبز

8 فلموں کی نمائش

شائع شدہ

کو

8 فلموں کی نمائش

کراچی میں جاری "پاکستان انٹرنیشنل فلم فیسٹیول" کے پہلے روز 8 فلموں کی نمائش کی گئی.پاکستان انٹرنیشنل فلم فیسٹیول کے آغاز کا انتظار مداحوں کو طویل عرصے سے تھا جو آخر کار اب ختم ہوگیا۔4 روزہ اس فیسٹیول میں تقریباً 93 ممالک سے بھیجی گئی 210 فلموں کی نمائش کی جائے گی، جن میں ڈاکیومنٹریز، شارٹ فلمز اور فیچر فلمز شامل ہیں۔فیسٹیول کے حوالے سے رکھی پہلی تقریب میں نامور پینٹر عبدل جبار گل کی جانب سے بنائی گئی ٹرافی ’دی سپرٹ آف کولاچی‘ کو بھی پیش کیا گیا.پاکستان انٹرنیشنل فلم فیسٹیول (پی آئی ایف ایف) 2018 میں ہندوستان، جرمنی، اٹلی سمیت کئی ممالک کے فلم سازوں کو مدعو کیا گیا ہے۔تقریب کے پینل میں سلطانہ صدیقی، عاصم رضا اور سجل علی جیسی پاکستانی شخصیات سپیکرز کے طور پر موجود رہیں، جبکہ ہندوستان سے نندیتا داس، ویشال بھردواج اور ساکیت چوہدری بھی اس پینل کا حصہ بنے۔فلم ساز شرمین عبید چنائے کا اس موقع پر کہنا تھا کہ ’میں پی آئی ایف ایف کے لیے بےحد پرجوش ہوں، کیوں کہ نئے فلم سازوں کے لیے اپنے کام کو پیش کرنے کے لیے یہ ایک بہترین پلیٹ فارم ہوگا، جبکہ شائقین کو ایسی فلمیں دیکھنے کا موقع بھی ملے گا جو وہ عام طور پر نہیں دیکھ پاتے.
نیوپلیکس سینما کے مالک جمیل بیگ نے کہا کہ ’آپ کو پی آئی ایف ایف کے پلیٹ فارم پر نیا ٹیلنٹ دیکھنے کو ملے گا، نئے ہدایت کار، پروڈیوسرز اور فنکاروں کے ساتھ ہم اپنی انڈسٹری میں مزید بہتر کام پیش کرسکیں گے‘۔نیوپلیکس سینما میں 8 فلموں کو نمائش کے لیے پیش کیا جائے گا جن میں ’کیک‘، ’دی وشنگ ٹری‘ اور ایک بلوچی زبان کی فلم شامل ہوگی۔ان 8 پریمیئرز کے علاوہ مختلف مقامات پر شارٹ فلمز، ڈاکیومنٹریز اور فیچر فلموں کی نمائش ہوگی۔

شوبز

کنگ خان کو ہرا دیا

شائع شدہ

کو

کنگ خان کو ہرا دیا

بالی ووڈ کنگ شاہ رخ خان رواں سال امریکی جریدے کی 100 مشہور شخصیات کی فہرست میں جگہ بنانے میں ناکام رہے رواں سال کی اس فہرست میں بالی ووڈ کی صرف 2 شخصیات ہی جگہ بناسکیں میڈیا رپورتس کے مطابق گزشتہ سال سرفہرست رہنے والی شاہ رخ خان اس بار جگہ بنانے میں ناکام رہے جب کہ بالی ووڈ کے کھلاڑی اکشے کمار نے سلمان خان کو پیچھے چھوڑ دیا۔ اکشے کمار 40.5 ملین ڈالر کے ساتھ 76 ویں نمبر پر رہے اور سلو میاں نے 37.7 ملین ڈالر کے ساتھ 82 ویں پوزیشن سنبھالی۔

پڑھنا جاری رکھیں

شوبز

قینچی کے وار

شائع شدہ

کو

قینچی کے وار

سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر نے بالی وڈ اسٹار امیتابھ بچن، شاہ رخ خان، سلمان خان، پریانکا چوپڑا اور دپیکا پڈوکون کے لاکھوں فالورز جعلی نکلے۔
بالی وڈ کے میگا اسٹار امیتابھ بچن، شاہ رخ خان، سلمان خان، سمیت کئی ستارے سوشل میڈیا پر خاصے فعال ہیں اور گاہے بگاہے اپنی مصروفیات و خیالات سے مداحوں کو آگاہ کرتے رہتے ہیں۔ ان ستاروں کے سوشل میڈیا پر کروڑوں پرستار ہیں لیکن اب ٹوئٹر کی پالیسی نے بڑے بڑے ناموں کے لاکھوں فالور پر قینچی چلادی۔ ٹوئٹر نے کچھ عرصہ قبل اعلان کیا تھا کہ وہ غیر مؤثر یا کسی وجہ سے عارضی بند اکاؤنٹس کا صفایا کرے گا۔
اسی صفائی مہم نے امیتابھ بچن کو 4 لاکھ 24 ہزار، شاہ رخ خان کو 3 لاکھ 62 ہزار 141 اور سلمان خان کو 3 لاکھ 40 ہزار 884 فالورز سے ہاتھ دھونے پڑے ہیں۔ پریانکا چوپڑا کو بھی 3 لاکھ 54 ہزار 830 جعلی فالورز سے ہاتھ دھونا پڑا جب کہ دپیکا پڈوکون بھی 2 لاکھ 88 ہزار 298 فالورز سے محروم ہو گئیں۔ یاد رہے کہ یہ پہلی بار نہیں ہے کہ بالی وڈ اسٹارز کے فالورز میں کمی ہے، اس سے قبل بھی امیتابھ بچن سمیت کئی اداکاروں کے ٹوئٹرز فالورز میں کمی کی گئی تھی۔

پڑھنا جاری رکھیں

شوبز

گوگل کا خراج تحسین

شائع شدہ

کو

پیسے نہیں،فٹ پاتھ پرکنونشن

پاکستانی گلوکار مہدی حسن کی 91 ویں سالگرہ پر گوگل نے انہیں ڈوڈل کے ذریعے خراج تحسین پیش کیا ہے۔ مہدی حسن بلاشبہ شہنشاہِ غزل تھے انہوں نے جدت، روایت اور نئے تجربات سے گائیکی کو ایک نیا اسلوب بخشا یہی وجہ ہے کہ دنیا میں جہاں بھی لوگ اردو گائیکی سے واقف ہیں وہ مہدی حسن کے نام سے بھی آشنا ہیں۔ پیار بھرے دو شرمیلے نین جیسے ہزاروں لازوال گیتوں کو اپنی آواز دینے والے شہنشاہ غزل مہدی حسن اٹھارہ جولائی 1927 کو راجھستان میں پیدا ہوئے تھے انہوں نے 1935 میں آٹھ سال کی عمر میں گلوکاری کا آغاز کیا اور تقسیم ہند کے بعد پاکستان چلے آئے، جہاں 50 کی دہائی میں انہیں کراچی سے ریڈیو پاکستان میں اپنی فنکارانہ صلاحتیں دکھانے کا موقع ملا۔
فلموں میں انہیں 1962 میں ریلیز ہونے والی فلم فرنگی کی شہرہ آفاق غزل ’گلوں میں رنگ بھرے‘ سے شہرت ملی، اس ایک گیت نے مہدی حسن کو گلی گلی مشہورکردیا تھا، جس کے بعد انھوں نے کبھی پیچھے مڑکر نہیں دیکھا۔ مہدی حسن اور محمد علی کی جوڑی کا اشتراک بہت پسند کیا گیا اور کہا جاتا تھا کہ محمد علی کی مقبولیت میں مہدی حسن کا بھی بہت بڑا ہاتھ ہے، مگر محمد علی کے ساتھ ساتھ وحید مراد کے لئے بھی مہدی حسن کی آواز کو بہت پسند کیا گیا۔ اسی طرح رنگیلا، شاہد ، درپن اور اعجاز کے لئے گائے گئے گیت انہیں ہر چہرے کے لئے موزوں آواز ثابت کرتے ہیں۔ ان کا گیت 'اک حسن کی دیوی سے مجھے پیار ہوا تھا اتنا مشہور ہوا کہ یہ آج بھی مہدی حسن کے سب سے زیادہ مشہور گانوں میں سرفہرست ہے۔ اسی طرح ایک گیت زندگی میں تو سب ہی پیار کیا کرتے ہیں کو سن کر ہندوستانی گلوکار لتا منگھیشکر نے کہا تھا کہ مہدی حسن کے گلے میں بھگوان بولتے ہیں۔ انھوں نے اپنی زندگی میں 25 ہزار سے زائد فلمی وغیر فلمی گیت اور غزلیں گائیں، ان کے حوالے سے یہ بات بھی نہایت مشہور تھی کہ جس نو فنکار پر ان کی آواز ڈب ہوتی ہے وہ راتوں رات کامیاب فنکاروں کی فہرست میں آکھڑا ہوتا تھا۔ جیسے فلم گھونگھٹ کے گیت مجھ کو آواز دے تو کہاں ہے کو سن کر لوگ سنتوش کمار کے دیوانے ہوگئے۔
ماضی کے مشہور ہیرو شاہد کی پہلی فلم آنسو میں مہدی حسن کے گیت 'جان جاں تو جو کہے گاﺅں میں گیت تیرے' نے شاہد کو پہلی فلم سے ہی صف اول کے ہیروز میں لا کھڑا کیا۔ انہیں حکومت کی جانب سے تمغہ امتیاز، ستارہ امتیاز اور تمغہ حسن کارکردگی جیسے اعزازات سے بھی نوازا گیا تھا، وہ پاکستان میں گائیکی کے شہنشاہ تھے اور آئندہ کئی عشروں تک بھی شاید ان جیسا گلوگار پیدا نہ ہوسکے گا 1999 میں سانس کی تکلیف کے باعث شہنشاہ غزل نے گانا ترک کر دیا تھا جس کے بعد وہ 12 برس تک علالت کا شکار رہے۔ شہنشاہ غزل طویل علالت کے بعد 13 جون 2012 کو کراچی کے ایک نجی ہسپتال میں 84 سال کی عمر میں انتقال کرگئے تاہم ان کے مقبول ترین گیت اورغزلیں برسوں عظیم فنکار کی یاد دلاتے رہیں گے۔
گوگل کا خراج تحسین
فوٹو بشکریہ گوگل

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں