Connect with us

پاکستان

کڑے سوالات کا سامنا

شائع شدہ

کو

کڑے سوالات کا سامنا

اسلام آباد: شریف خاندان کے خلاف ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کے دوران جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیاء کو تیسرے روز بھی کڑے سوالات کا سامنا رہا جب کہ سماعت 2 اپریل تک ملتوی کردی گئی۔ احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کی جس کے دوران نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے واجد ضیاء پر تیسرے روز جرح جاری رکھی۔ سماعت کے آغاز پر نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے واجد ضیاء سے جیری فری مین سے متعلق سوال کیا جس پر جے آئی ٹی سربراہ نے بتایا کہ حسن نواز کے 2 ٹرسٹ ڈیڈ پر 2 جنوری 2006 کو دستخط کی جیری فری مین نےتصدیق کی اور وہ اس کے گواہ ہیں۔ واجد ضیاء نے بتایا کہ ٹرسٹ ڈیڈ نیلسن اور نیسکول سے متعلق تھی جن کی کاپیاں جیری فری مین کے آفس میں ہیں جس پر خواجہ حارث نے سوال کیا 'آپ نے جیری فری مین کو دستاویزات اور ثبوتوں کے ساتھ پاکستان آکر بیان دینے کا لکھا' جس پر گواہ واجد ضیاء نے کہا کہ نہیں انہیں پاکستان آنے کا نہیں کہا۔نواز شریف کے وکیل نے سوال کیا کہ 'جے آئی ٹی کی تفتیش کے مطابق گلف اسٹیل مل دبئی میں کب قائم ہوئی' جس پر خواجہ حارث نے بتایا 'ہماری تفتیش، دستاویزات اور کاغذات کی روشنی میں گلف اسٹیل مل 1978 میں بنی'، خواجہ حارث نے پوچھا 1978 کے شیئرز سیل کنٹریکٹ دیکھ لیں، کیا آپ نے ان کی تصدیق کرائی جس پر واجد ضیاء نے کہا کہ نہیں ایسا نہیں کیا۔
خواجہ حارث نے کہا کہ اگر آپ نے تصدیق نہیں کرائی تو کیا آپ اس کنٹریکٹ کے مندرجات کو درست تسلیم کرتے ہیں جس پر واجد ضیاء نے کہا کہ جے آئی ٹی نے گلف اسٹیل مل کے کنٹریکٹ کو درست تسلیم کیا۔ خواجہ حارث نے پوچھا '14 اپریل 1980 کو آہلی اسٹیل مل بنی کیا آپ نے اس کے مالک سے رابطہ کیا' جس پر واجد ضیاء نے کہا گلف اسٹیل کے بعد آہلی اسٹیل مل بنی لیکن ہم نے ان سے کوئی رابطہ نہیں کیا۔خواجہ حارث نے پوچھا 'جے آئی ٹی والیم 3 میں جو خط ہے، اس کے مطابق اسٹیل مل کا اسکریپ دبئی نہیں بلکہ شارجہ سے جدہ گیا'، واجد ضیا نے جواب دیا یہ بات درست ہے، خواجہ حارث نے پوچھا خط کے مطابق وہ اسکریپ نہیں بلکہ استعمال شدہ مشینری تھی جس پر واجد ضیاء نے کہا یہ درست ہے کہ اسکریپ نہیں بلکہ وہ استعمال شدہ مشینری تھی۔ نواز شریف کے وکیل نے سوال کیا 'جے آئی ٹی نے دبئی اتھارٹی کو ایم ایل اے بھیجا کہ اسکریپ بھیجنے کا کوئی ریکارڈ موجود ہے' جس پر واجد ضیا نے کہا ایسا کوئی ایم ایل اے نہیں بھیجا گیا۔ خواجہ حارث نے سوال کیا 'جے آئی ٹی کے والیم میں کتنی ایسی دستاویزات ہیں جن پرسپریم کورٹ کی مہر ہے جس پر واجد ضیاء نے کہا 'ہمارے پاس کوئی ایسی دستاویزات نہیں جن پر سپریم کورٹ کی مہر ہو'۔ اس موقع پر جے آئی ٹی سربراہ نے کہا کہ 'کیا میں جے آئی ٹی کے والیم دیکھ سکتا ہوں' جس پر خواجہ حارث نے کہا کہ میں آپ کو بتا رہا ہوں کہ آپ زیادہ بول رہے ہیں، آپ کو اتنا کہنے کی ضرورت نہیں تھی۔ جس پر واجد ضیاء نے کہا کہ میں کچھ اور باتیں شامل کرنا چاہتا ہوں جس پر فاضل جج محمد بشیر نے انہیں مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اب آپ اور نہ بولیں۔
گزشتہ دو روز کے دوران ہونے والی سماعت کے دوران خواجہ حارث نے لندن فلیٹس کی ملکیت سے متعلق واجد ضیاء سے سوالات کیے۔

پاکستان

سری لنکن کمانڈر سے ملاقات

شائع شدہ

کو

سری لنکن کمانڈر سے ملاقات

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور سری لنکن آرمی کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل مہیش سینا نائیکے کے درمیان ملاقات میں دوطرفہ دفاعی تعلقات اور باہمی تعاون سے متعلق امور پرگفتگوہوئی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور سری لنکن آرمی کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل مہیش سینا نائیکے کے درمیان ہونے والی ملاقات میں پاکستان اور سری لنکا کے درمیان سیکورٹی تعاون پر اطمینان کا اظہار کیا گیا۔ ملاقات میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ علاقائی امن دونوں ممالک کا مشترکہ مقصد ہے جو دفاع کے میدان میں وسیع تر تعاون اور مہارت کے تبادلے کا متقاضی ہے۔اس ملاقات کے دوران دوطرفہ دفاعی تعلقات اور باہمی تعاون سے متعلق امور پر بات چیت ہوئی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

امریکہ عالمی طاقت ہے مگر...

شائع شدہ

کو

امریکہ عالمی طاقت ہے مگر...

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان کہا ہے کہ امریکا کے ساتھ پاکستان کے تعلقات کو خوشگوار قرار دینا ممکن نہیں، امریکا عالمی طاقت ضرور ہے مگر ہمارے نکتہ نظر کو سمجھنا ہوگا۔

یہ بات عمران خان نے برطانوی اراکین پارلیمان سے خطاب کے دوران کہی۔اپنے خطاب میں عمران خان نے کہا کہ امریکا کو اپنی ناکامیوں کا ملبہ پاکستان کے سر ڈالنے کا کوئی حق نہیں، امریکا کے ساتھ تعلقات باہمی احترام اور معاملات کی مناسب تفہیم پر استوار ہونے چاہئیں۔انہوں نے کہا کہ برطانیہ مسئلہ کشمیر کے حل میں اہم کردار کی استعداد رکھتا ہے۔ان کے مطابق بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی موجودگی میں مسئلہ کشمیر کے حل میں کامیابی کی قابل ذکر توقع نہیں۔تحریک انصاف کے چیئرمین نے کہا کہ پاکستان تیزی سے بہتری کی جانب گامزن ہے، تاریخ میں پہلی مرتبہ سپہ سالار جمہوریت کی پشت پناہی کررہے ہیں، تاریخ کا اہم موڑ ہے کہ عدلیہ آزادی سے اپنا آئینی کردار نبھا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ انسانوں کی ترقی پر وسائل خرچ کرنا انتہائی اہمیت کا حامل ہے، تعلیم پر خصوصی توجہ اور محنت کی ضرورت ہے۔

عمران خان کے مطابق مدارس میں زیرِ تعلیم بچے ہمارے ہیں جنہیں اپنانے کی ضرورت ہے۔ان کا کہنا تھا کہ فراہمی روزگار کا انتظام میری نگاہ میں اہم ترین ذمہ داری ہے، اپنے 100 روزہ منصوبے میں فراہمی روزگار کو کلیدی حیثیت دیں گے۔عمران خان نے کہا کہ 29 اپریل کو مینار پاکستان سے ملک گیر انتخابی مہم کا آغاز کریں گے۔تحریک انصاف کے سربراہ نے کہا کہ دنیا بھر میں بسنے والے 70 لاکھ پاکستانی حقیقی اثاثہ ہیں۔انہوں نے کہا کہ سرمایہ کاری کا سازگار ملا تو سی پیک سے بڑی سرمایہ کاری آئے گی، برطانیہ اور پاکستان فطری طور پر کاروباری شراکت دار ہیں۔عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ قرضے ملکی معیشت پر سب سے بڑا بوجھ ہیں، ان کی ادائیگی کے لئے ہم نے خصوصی ٹاسک فورس تشکیل دی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ایف سی ٹرک کو حادثہ، 4اہلکار شہید

شائع شدہ

کو

ایف سی ٹرک کو حادثہ، 4اہلکار شہید

صوبہ بلوچستان کے ضلع کوہلو میں تمبو کراس کے قریب فرنٹیئر کور (ایف سی) کا ٹرک حادثے کا شکار ہوگیا جس کے نتیجے میں 4 اہلکار شہید اور 51 زخمی ہوگئے۔

لیویز حکام کے مطابق کوہلو میں تمبو کراس کے قریب ایف سی کے ٹرک کوحادثہ پیش آیا، حادثے میں 4 ایف سی اہلکار شہید اور 51 زخمی ہوگئے۔لیویز حکام کے مطابق زخمیوں کو ایمبولینس اور ہیلی کاپٹر کی مدد سے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال اور ایف سی ہیڈ کوارٹراسپتال منتقل کردیا گیا جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے جبکہ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

مقبول خبریں