انجمن عرفان نے فلموں کے لئے گلوکاری شروع کردی

اردو اور پشتو فلم کے لئے گانے ریکارڈ کرا دیئے،ان کے کئی گیت مقبولیت حاصل کرچکے ہیں

گلوکارہ انجمن عرفان نے کئی نئے پراجیکٹس کرنے کے معاہدے فائنل کئے ہیں۔ انجمن عرفان کئی روز سے لاہور میں مقیم ہیں جہاں ان کی ملاقات شوبز کی نامور شخصیات سے ہوئی۔انجمن عرفان کا شمار مختصر عرصے میں شہرت حاصل کرنے والے فنکاروں میں ہوتا ہے جنہیں ایک بات بہت سے فنکاروں سے ممتاز کرتی ہے اور وہ یہ ہے ان کے زیادہ تر فیملی ممبران کا تعلق شوبز سے ہے جنہوں نے اپنی اپنی فیلڈ میں خوب نام کمایا۔ انجمن عرفان ماضی کے معروف فلم پروڈیوسر، ڈسٹری بیوٹر اور گرین پکچرز کے بانی احمد عرفان کی صاحبزادی ہیں ۔ان کے بھائی سید احمد کامران کا شمار ملک کے بہترین ڈائریکٹرز میں ہوتا ہے جبکہ ان کے دوسرے بھائی سید محمد خرم بھی’سایہ‘ جیسی سپرہٹ سیریل بناچکے ہیں۔

انجمن عرفان نے ’کھوج‘ سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ میں شوبز کی دنیا میں حادثاتی طور پر آئی ،میرے والد اگرچہ فلم انڈسٹری میں تھے لیکن اس کے باوجود ہماری فیملی کی خواتین کو شوبز میں کام کرنے کی اجازت نہیں تھی۔سب سے پہلے میں نے پی ٹی وی کے لئے حسینہ معین کے لکھے ہوئے ایک سیریل میں کام کیا جس سے مجھے شناخت بنانے کا موقع ملا۔اس کے بعد انہی کے تحریر کئے ہوئے عید پلے میں بھی کام کیا جس کے بعد میں نے اداکاری چھوڑ دی،انہی دنوں میری ملاقات استاد اختر اللہ دتہ سے ہوئی تو میرا موسیقی کا سفر شروع ہوگیا۔میرا سب سے پہلا گانا’سن ساجنا‘تھا جو اے آر وائی پر ٹاپ ٹین میں شامل رہا۔اس کے بعد میرا گایا ہوا ملی نغمہ’ اپنے دل سے پاکستان‘ بہت مقبول ہوا اور اسے کئی ایوارڈ بھی ملے۔2018 میں ریلیز ہونے والا میرا گانا ’گائوں کے دن‘ بھی شائقین نے بہت پسند کیا اور اسے چائنہ میوزک فیسٹیول میں بھی نامزد کیا گیا۔ کچھ عرصہ پہلے میں نے صوفی پاپ دھمال’ملنگی‘ ریلیز کیا۔جلد ہی میرا نیا وڈیو سانگ ’سیاں‘ ریلیز ہونے والا ہے جسے ایس کے خلش نے لکھا ہے ،میوزک عماد الرحمنٰ دیا جبکہ اس کے ڈائریکٹر شاہد اور پروڈیوسر آفتاب خان ہیں۔ میں نے سٹیٹ لائف کے ایک کمرشل میں بھی کام کیا تھا جس کے ساتھ ساتھ میں ریڈیو 1.07 اور 1.05کی آر جے بھی ہوں۔

ایک سوال کے جواب میں انجمن عرفان نے بتایا کہ ان دنوں میں فلموں کے لئے بھی گارہی ہوں۔میں نے  پشتو فلم’بادشاہ‘ کے لئے تین گانے گائے ہیں جس میں ارباز خان اور ببرک شاہ سمیت بہت سے فنکار کام کررہے ہیں۔ اس کے علاوہ اردو فلم’ جیت محبت کی‘ کے پانچ گانے ریکارڈ کراچکی ہوں۔انجمن عرفان نے مزید بتایا کہ میں وائس اوور آرٹسٹ کی حیثیت سے بھی کام کرتی ہوں۔میں نے مشہور ترکش ڈراموں عشق ممنوع، فاطمہ گل،میرا سلطان اور عفت کے لیْد کرداروں کے لئے وائس اوور کی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں میوزک چینلز کی کمی سے گلوکاروں کو پرموشن میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے لیکن اب سوشل میڈیا کی صورت میں انہیں بہت اچھا پلیٹ فارم مل گیا ہے۔

You might also like