’محسن حیدر سے ناجائز تعلقات نہیں‘ ۔۔۔ نازش جہانگیر بھی میدان میں

محسن عباس حیدر کی اہلیہ فاطمہ سہیل نے چند روز پہلے اپنےشوہر پر نہ صرف تشدد کا الزام لگایا بلکہ انہوں نے یہ الزام بھی عائد کیا کہ محسن عباس حیدر کے اداکارہ نازش جہانگیر کے ساتھ ’جسمانی تعلقات‘ تھے جس پرسوشل میڈیا صارفین بھی نازش جہانگیر کو برا بھلا کہہ رہے ہیں اور ان کے خیال میں فاطمہ کا گھر تباہ کرنے میں نازش کا عمل دخل زیادہ  ہےبہت سے لوگوں کے لئے نازش جہانگیر ایک نیا نام ہے حالانکہ وہ بہت کام کرچکی ہیں، نازش جہانگیر ٹاپ فیشن برانڈز کے ساتھ کام کےعلاوہ فیشن شوز اور ڈراموں میں بھی کام کرچکی ہیں جن میں تہمت،ٹھیس،خطاکار اور گلی میں آج چاند نکلا شامل ہیں البتہ اس کہانی میں ان کا نام آنے پر ہر کوئی ان کے بارے میں جاننے کے لئے بے چین تھا۔نازش جہانگیر نے چار روز خاموش رہنے کے بعد آخر اب زبان کھول دی ہے۔

نازش جہانگیر کا کہنا ہے کہ محسن عباس کی اہلیہ فاطمہ نے بغیر ثبوت کےاُن پر الزام عائد کیا ہے۔ انسٹاگرام پر اپنے ایک بیان میں ماڈل نازش جہانگیر نے کہا کہ اداکار محسن عباس حیدر کی اہلیہ فاطمہ نے مجھ پر بغیر کسی ثبوت کے الزام عائد کیا کہ میرے ان کے شوہر کے ساتھ ناجائز تعلقات ہیں،جس کے بعد مجھے گھر توڑنے والی کہا گیا۔

نازش جہانگیر نے کہا کہ آپ سب اپنی عقل کا استعمال کریں اور سوچیں کہ اگر فاطمہ کے پاس میرے خلاف کوئی ثبوت ہوتے تو وہ ان کو بھی منظر عام پر لاتی جیسے فاطمہ اپنے شوہر کے خلاف ثبوت سامنے لے کر آئی۔ انہوں نے کہا کہ بیٹے کی پیدائش سے ایک گھنٹہ قبل فاطمہ سے میری بات ہوئی اور میں نے اُسے مبارک باد دی۔ اس وقت محسن کراچی میں کسی شوٹنگ میں مصروف تھا جبکہ میں اسلام آباد میں تھی۔ نازش جہانگیر نے کہا کہ  فاطمہ گھریلو تشدد کا نشانہ بنی ہےاور میری تمام تر ہمدردی اُس کے ساتھ ہے،میں اس بات کا اعلان بھی کرنا چاہتی ہوں کہ ان کی ازدواجی زندگی میں تنازعات کی وجہ میں نہیں ہوں۔

انہوں نے مزید کہا کہ صرف محسن ہی اس حوالے سے وضاحت کر سکتا ہے کہ آخر اس کی بیوی نے اس سارے معاملے میں میرا نام کیوں لیا۔ فاطمہ نے کسی ثبوت کے بغیر مجھ پر پورے میڈیا کے سامنے الزام عائد کیا۔ میں نے کبھی کسی کی ذاتیات پر بات نہیں کی اور اسی لیے میرے لیے یہ سب نہایت دردناک ہے۔میں صرف یہ کہنا چاہوں گی کہ صرف فاطمہ ہی اس سب کا شکار نہیں ہوئی ، بغیر ثبوت مجھ پر الزام عائد کر کے ذاتی منافرت کی بنیاد پر مجھے بھی اس سب میں گھسیٹا گیا جس سے مجھے ذہنی طور پر کافی پریشانی ہوئی۔

‘فاطمہ خود مجھ سے بات کیا کرتی تھی، وہ تو اپنی شادی شدہ زندگی کے بارے میں بھی مجھ سے کافی کچھ شیئر کرتی تھی، اس نے اپنے حاملہ ہونے کے دوران بھی مجھ سے بات چیت رکھی، اگر میں اس کے شوہر کے ساتھ سو رہی تھی تو پھر وہ مجھ سے باتیں کیوں کرتی تھی؟ میں اپنے دفاع میں بہت سے سوالات اٹھا سکتی ہوں لیکن میں ایسی نہیں ہوں، میرے لیے یہ سب کافی پریشان کن ہے اس لیے میں اس پر زیادہ بات نہیں کروں گی، محسن عباس اور اس کی اہلیہ دونوں ہی میرے بہت اچھے دوست ہیں، مجھے کوئی اندازہ نہیں کہ اس نے میرا نام کیوں لیا اور مجھے اس معاملے میں کیوں گھسیٹا، میں تو ایسا کچھ کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتی’۔

You might also like

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept