افغان امن معاہدہ، طالبان کا اگلہ محاذ کیا ہوگا: بریکنگ نیوز

مودی کہتا تھا کہ میں پاکستان کو تنہا کر دوں گا وہ اپنی اس کوشش میں کسی حد تک کامیاب بھی ہوا یہ تو اب اس حکومت نے آ کر دفتر خارجہ کو فعال کیا

امریکہ اور طالبان کے درمیان امن معاہدہ طے پانے کے بعد طالبان کا اگلہ محاذ کیا ہوگا۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ بھارت نے لوگوں کو اس بات پر قائل کر رکھا ہے کہ پاکستان دہشتگرد ہے۔

دنیا کے بڑے بڑے تھنک ٹینکس میں بھارت کے لوگ موجود ہیں، مریم نواز جو کشمیر کا مقدمہ لڑنے کی بات کررہی تھیں ان کے والد ہی تھے جنہوں نے دفتر خارجہ کو تقریباً بند کر دیا تھا۔ مودی کہتا تھا کہ میں پاکستان کو تنہا کر دوں گا وہ اپنی اس کوشش میں کسی حد تک کامیاب بھی ہوا یہ تو اب اس حکومت نے آ کر دفتر خارجہ کو فعال کیا، جس کی بنا پر اب کچھ ممالک ہم سے بات کرر ہے ہیں۔ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ کشمیر میں خانہ جنگی کا سلسلہ شروع ہونے جا رہا ہے، کشمیر کی عوام نے اپنی جان و مال، عزت و آبرو کے نذرانے دئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ افغانستان کے طالبان کا کارڈ کھیلنے کا وقت آگیا ہے‘ حکومت نے امریکی صدر کو بتانے کا فیصلہ کیا ہے کہ ہماری مشرقی سرحد ہے ہماری اصل ذمہ داری وہی ہے، امریکہ امن کی صورت میں وہاں سے نکلنا چاہتا ہے جبکہ امریکی صدر مشرقی بارڈر پر ایسی صورتحال کے باوجود اس بارڈر کی ذمہ داری لینے سے انکاری ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکہ ایک پاور ہونے کے باعث بھارت سے مسئلہ کشمیر پر زور بازو اپنے حکم منوا سکتا ہے۔

شاید آپ یہ خبریں بھی پسند کریں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept