بھارت میں انسان گائے کے غلام بن چکے

بھارتی سپریم کورٹ کے سابق چیف جسٹس مرکنڈے کاٹجو نے ہندو مذہب سے اختلاف کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نہ تو رام خدا ہے اور نہ ہی گائے کسی کی ماتا (ماں) ہے۔

سابق بھارتی چیف جسٹس مرکنڈے کاٹجو نے ایک پروگرام میں شرکت کے دوران کہا کہ ‘ذرا سوچیے کہ کوئی جانور کسی انسان کی ماتا کیسے ہوسکتی ہے، کیا آپ کے پاس دماغ ہے، یا گوبر بھرا ہوا ہے؟’

انہوں نے مزید کہا کہ پوری دنیا میں لوگ بیف (گائے کا گوشت) کھاتے ہیں، میں نے خود بھی بیف کھایا ہے۔

اس سے قبل رواں برس جنوری میں بھی انہوں نے مودی سرکار کے خلاف بات کرتے ہوئے لوک سبھا الیکشن میں کامیابی کے لیے فسادات کرائے جانے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ بھارت میں انسان گائے کے غلام بن چکے ہیں۔

بھارتی شہر دہرادھن میں منعقدہ ایک پروگرام میں شرکت کے دوران بھی جسٹس مرکنڈے کاٹجو نے ایک متنازع بیان دیا تھا، جس سے ہندو انتہا پسند بھڑک اٹھے تھے۔

انہوں نے کہا تھا، ’رام ایک شہزادہ اور ایک انسان تھا، وہ کوئی خدا نہیں تھا، ایسے ہی گائے کبھی ماتا نہیں تھی، وہ بھی بِلّی، کُتے کی طرح ایک جانور ہے‘۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بھارت میں آج بھی نچلی ذات کے افراد سے تعصب برتا جارہا ہے اور پڑھے لکھے لوگ بھی اِس برائی میں مبتلا ہیں۔

You might also like

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept