بھارت: لڑکی سے زیادتی، سر تن سے جدا

بھارت میں درندہ صفت بھائیوں اور چچا نے 12 سالہ لڑکی کے ساتھ اجتماعی زیادتی کی اور پھر گلاگھوٹنے کے بعد سر تن سے جدا کردیا ۔

بھارتی اخبار کے مطابق ریاست مدھیا پردیش کے ضلع ساگر میں چھٹی جماعت کی طالبہ 13مارچ کو لاپتہ ہوئی اور اگلے روز اُس کی سربریدہ لاش ایک کھیت سے ملی جبکہ لڑکی کا سر بھی قریب ہی پڑا تھا۔

پولیس نے ملزمان کی گرفتاری کے لئے ابتداء میں دس ہزار روپے انعام کا اعلان کیا جسے بعد میں بڑھا کر 25ہزار کردیا گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکی کے تین درندہ صفت بھائیوں اور چچا نے اجتماعی زیادتی کی، لڑکی نے جب پولیس کو بتانے کی دھمکی دی تو انہوں نے پہلے گلا گھونٹ کر اسے موت کے گھاٹ اتارا پھرسر تن سے جدا کرکے لاش کھیت میں پھینک دی۔

لڑکی کی چچی پوری واردات سے آگاہ تھی لیکن اُس پولیس کو گمراہ کرنے کے لئے پڑوسی پر الزام لگادیا تھا۔

پولیس نے پڑوسی کو حراست میں لے کر تفتیش کی تو وہ بے گناہ نکلا، بعدازاں پولیس کو خفیہ اطلاع ملی کہ لڑکی کا 20 سالہ بڑا بھائی جرم میں ملوث ہوسکتا ہے۔

پولیس کے مطابق بڑے بھائی مفرور تھا جس پر چھوٹے بھائی سے تفتیش کی گئی تو اُس نے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے تفصیلات بتادیں۔