خواتین کے بعد سعودی عرب نے مردوں کو بھی کھلی چھٹی دیدی

سعودی عرب میں کچھ عرصہ پہلے تک خواتین نکاح نامے میں من پسند شرائط تحریر کرا سکتی تھیں

سعودی عرب نے خواتین کے بعد مردوں کو بھی کھلی چھٹی دیتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ نکاح نامے پر خواتین کے علاوہ اب مرد حضرات بھی اپنی شرائط لکھ سکتے ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سعودی عرب میں کچھ عرصہ پہلے تک خواتین نکاح نامے میں من پسند شرائط تحریر کرا سکتی تھیں، مثلاً یہ کہ شادی کے بعد تعلیم جاری رکھنے پر کوئی پابندی نہیں ہوگی۔ ملازمت سے نہیں روکا جائے گا، سوتن نہیں لائی جائے گی، ملازمہ کا انتظام کرنا ہوگا وغیرہ تاہم اب دلہنوں کی دیکھا دیکھی دولہوں نے بھی نکاح نامے میں شرائط پیش کرنا شروع کر دی ہیں۔سعودی وکیل احمد عیبان نے دلہوں کے حوالے سے قانونی موقف پیش کرتے ہوئے کہا کہ’اگر شوہر چاہے تو وہ بھی نکاح نامے میں اپنی پسند کی شرطیں ڈال سکتا ہے۔ مثلاً وہ یہ شرط لگا سکتا ہے کہ بیوی اس کی مرضی کے بغیر سفر نہیں کر سکتی، وہ یہ شرط بھی عائد کر سکتا ہے کہ بیوی کسی بھی قسم کی ایپلیکشن استعمال نہیں کر سکے گی۔

شاید آپ یہ خبریں بھی پسند کریں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept