طالبان، امریکہ مذاکرات کھٹائی میں پڑ گئے، پاکستان کی مشکلات میں اضافہ

پاکستان پر دباؤ بڑھانے کا فیصلہ‘طالبان سے مذاکرات پر امریکی شرائط کا پابند رہنے کے لئے کردار ادا کرنے کو کہا جائیگا

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے افغان عمل کے سلسلہ میں جاری مذاکرات منسوخ کیے جانے اور طالبان کی طرف سے امریکہ کو زیادہ نقصان پہنچانے کے ردعمل کے بعد پاکستان کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا ہے۔

کھوج نیوز ذرائع کے مطابق ٹرمپ انتظامیہ نے حکومت پاکستان پر دباؤ بڑھانے کا فیصلہ کیا جس کے مطابق پاکستان کو طالبان سے مذاکرات پر امریکی شرائط کا پابند رہنے کے لئے کردار ادا کرنے کو کہا جائے گا۔ کچھ سیکنڈز میں کیے گئے مسلسل تین ٹویٹس میں امریکی صدر نے طالبان پر الزام لگایا کہ وہ اپنی سودے بازی کی پوزیشن کو مضبوط کرنے کے لیے لوگوں کو قتل کر رہے ہیں۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے مذاکرات کی منسوخی کی وجہ جمعرات کو کابل میں ہونے والا خودکش حملہ قرار دیا، جس میں ایک امریکی فوجی سمیت 12 افراد ہلاک ہوئے تھے۔امریکہ اور طالبان کے درمیان مذاکرات کو قریب سے دیکھنے والے مبصرین صدر ٹرمپ کی جانب سے پیش کیے جانے والے جواز کے قائل نہیں کہ صرف ایک امریکی فوجی کی ہلاکت پر اْنھوں نے طالبان کے ساتھ مذاکرات منسوخ کرنے کا اعلان کیا۔ان کا کہنا ہے کہ اس کے پیچھے امریکی سیاست میں متحرک وہ لابی ہو سکتی ہے جو امریکہ اور طالبان کے درمیان ہونے والے امن معاہدے کے خلاف ہے اور سمجھتی ہے کہ اس معاہدے کے بعد بھی افغانستان میں امن ممکن نہیں۔ ان کے نزدیک یہ معاہدہ طالبان کے سامنے گھٹنے ٹیکنے کے مترادف ہے۔

شاید آپ یہ خبریں بھی پسند کریں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept