مغربی افریقہ : مسجد پرحملہ 16 نمازی جاں بحق

رپورٹ کے مطابق برکینافاسو کے شہرسالموسی میں واقع جامع مسجد میں رات گئے حملہ کیا گیا جہاں 13 نمازی موقع پرہی جاں بحق ہوگئے

مغربی افریقہ کے ملک برکینا فاسو کے شمالی علاقے میں مسلح افراد نے مسجد پرحملہ کیا جس کے نتیجے میں 16 نمازی جاں بحق اوردوشدید زخمی ہوگئے۔ رپورٹ کے مطابق برکینافاسو کے شہرسالموسی میں واقع جامع مسجد میں رات گئے حملہ کیا گیا جہاں 13 نمازی موقع پرہی جاں بحق ہوگئے تھے اوردیگرتین افراد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑگئے۔ قریبی قصبے کے ایک رہائشی کا کہنا تھا کہ ‘اس حملے کے بعد شہریوں نے نقل مکانی شروع کردی ہے، فوج کی موجودگی کے باوجود تناؤ کا ماحول پایا جاتا ہے’۔ مسجد پرحملے کے بعد ایک ہزارسے زائد افراد نے دارالحکومت اواگادوگو کی جانب امن مارچ کیا اورافریقہ میں غیرملکی فوجی بیسزکی موجودگی اوردہشت کے خلاف احتجاج کیا۔ احتجاج کے منتظمین میں شامل گیبن کوربیوگوکا کہنا تھا کہ ‘ہمارے ملک میں غیرملکی فوجیوں کی مداخلت کے لیے دہشت گردی ایک اچھا بہانہ مل گیا ہے’۔ ان کا کہنا تھا کہ ‘فرانسیسی، امریکی، کینیڈین،جرمن اوردیگرفوجوں نے ہمارے خطے میں قدم جمارکھے ہیں اورکہتے ہیں وہ دہشت گردی کے خلاف لڑنا چاہتے ہیں لیکن اس قدرموجودگی کے باوجود دہشت گرگروپ مضبوط ترہوتے جارہے ہیں’۔

رپورٹ کے مطابق افریقہ کا غریب ملک برکینا فاسو 2015 تک دہشت گردی کی خطرناک لہرکی لپیٹ میں تھا جس سے پڑوسی ممالک مالی اورنائیجر بھی متاثرہوئے تھے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق برکینا فاسو میں القاعدہ کے چند گروپ اورداعش سمیت دیگردہشت گرد تنظیموں نے شمال اورمشرقی علاقوں میں کارروائیوں کا آغازکیا تھا جو بعد جنوبی اورمغربی علاقوں تک پھیل گیا تھا۔ مائنز اورخود کش حملوں سمیت دیگراندازمیں کارروائیاں کی جاتی رہی ہیں جس کے نتیجے میں کم ازکم 600 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔ برکینا فاسو کی دفاعی فورسز ہتھیاروں کی کمی اورناقص تربیت کے باعث دہشت گردوں کے خلاف موثرکارروائی سے قاصر ہیں جبکہ فرانس کے 200 فوجی بھی ملک میں موجود ہیں جو مختلف کارروائیوں میں حصہ لیتے ہیں۔

اقوام متحدہ کے ادارے برائے مہاجرین کے اعداد وشمار کے مطابق کشیدگی کے باعث کم ازکم 5 لاکھ افراد اپنا گھربارچھوڑ کرہجرت کرچکے ہیں جبکہ 15 لاکھ افراد کے متاثرہونے کا خدشہ ظاہرکرتے ہوئے انسانی بحران سے بھی خبردارکیا تھا۔ برکینافاسو میں تقریباً 3 ہزاراسکول بند ہیں اور دوردرازعلاقوں میں بدترین معاشی صورت حال کے باعث ملک کی تجارت اورمارکیٹوں میں بحرانی کیفیت ہے۔

شاید آپ یہ خبریں بھی پسند کریں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept