سارک سربراہی اجلاس میں شرکت کیلئے بھارت پرزور

نیپال نے ساؤتھ ایشین ایسوسی ایشن فار ریجنل کو آپریشن (سارک) کے اجلاس کے انعقاد پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ اختلافات کو بات چیت کے ذریعے حل کیا جانا چاہیے اور گروپ کو مل کر خطے کو درپیش دہشت گردی سمیت دیگر چیلنجز سے نمٹنا چاہیے۔

پریس ٹرسٹ آف انڈیا کے مطابق نیپالی وزیر خارجہ پردیپ کمار گیاوالی نے گزشتہ برس امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور شمالی کوریا کے سپریم لیڈر کم جانگ ان کے درمیان سنگاپور میں ہونے والی تاریخی ملاقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ صرف مذاکرات ہی وہ واحد طریقہ کار ہیں، جس کے ذریعے اختلافات دور کیے جاسکتے ہیں۔

صحافیوں اور امورِ خارجہ کے ماہرین سے ملاقات کرتے ہوئے ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر صدر ٹرمپ اور شمالی کوریا کے کم جونگ ان ملاقات کر سکتے ہیں تو دیگر ممالک کے رہنما کیوں نہیں ملِ سکتے؟

واضح رہے کہ سارک سربراہی اجلاس اب پاکستان میں منعقد ہونا ہے لیکن بھارت کی جانب سے اسلام آباد پر سرحد پار دہشت گردی کا الزام لگاتے ہوئے اس کے انعقاد میں رکاوٹیں ڈالی جارہی ہیں۔