مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کا 33 واں روز

مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو اور پابندیوں کو آج 33 روز ہوگئے، نظام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے ’کشمیر کو بولنے دو‘ مہم شروع کردی۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل کے مطابق پابندیوں نے کشمیریوں کی روز مرہ زندگی، جذبات اور ذہنی حالت کو بری طرح متاثر کیا۔ برطانوی خبر ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق قابض بھارتی فوج شہریوں پر دکانیں اور کاروبار کھولنے کے لیے دباؤ ڈال رہی ہے۔جنت نظیر وادی کو جیل میں بدل دیا ہے، خاردار تاروں میں لپٹی مقبوضہ کشمیریوں کی زندگی بد سے بدتر ہوگئی ہے،فاشسٹ بھارت کی بزدل فوج نے کشمیریوں کو 33روز سے گھروں میں بند کررکھا ہے، غذا کی قلت،بھوک سے بلکتے بچوں اور مریضوں کی اُکھڑتی سانسوں سے مجبور ہوکر کشمیری باہر نکلیں تو ان پر چھرے اور ڈنڈے برسائے جارہے ہیں۔

شاید آپ یہ خبریں بھی پسند کریں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept