مقبوضہ کشمیرمیں لاک ڈاؤن ،نوجوان ملازمتوں سے فارغ

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اور لاک ڈاؤن 37 ویں روز بھی جاری،  ہزاروں نوجوانوں کو ملازمت سے فارغ کر دیا گیا ہے

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اور لاک ڈاؤن 37 ویں روز بھی جاری،  ہزاروں نوجوانوں کو ملازمت سے فارغ کر دیا گیا ہے جبکہ مقبوضہ کشمیر میں قابض انتظامیہ نے عاشورہ کے جلوس روکنے کے لیے پابندیاں مزید بڑھادیں ہیں۔

ذرائع کے مطابق پابندیوں کے باوجود سرینگر کے مختلف علاقوں میں نویں محرم کے جلوس برآمد ہوئے، ایمبولینسز اور طبی عملے کو بھی نکل و حرکت کی اجا زت نہیں ہے ، سرینگرکےکمرشل حب لعل چوک اورملحقہ علاقوں کو خاردار تاریں لگاکر سیل کردیاگیا ہے اور عوام گھروں میں قید ہو کر رہ گئی ہے۔

بھارتی قابض فورسز کی جانب سے لاؤڈ اسپیکر پر شہریوں کوگھروں سے نہ نکلنے کی وارننگ دی جا رہی ہے جبکہ بھارتی فوج کے حملوں میں4 صحافیوں سمیت کئی افرادزخمی ہو گئے ہیں۔ دوسری جانب مقبوضہ کشمیر میں ایک ماہ سے زائد عرصے سے جاری بھارتی فورسز کے لاک ڈاؤن اور پابندیوں کی وجہ سے ہزاروں نوجوان بے روزگار ہوگئے۔

انٹرنیٹ اورموبائل فونز کی بندش سے موبائل سروسز کمپنیوں کوخسارے کا سامنا ہے جبکہ مقبوضہ وادی میں ایک ماہ سے مواصلاتی رابطے اورانٹرنیٹ بند ہے۔ مواصلاتی رابطوں کی بندش پر آئی ٹی کمپنیوں نے 15 سو نوجوانوں کو ملازمت سے فارغ کر دیا ہے، آئی ٹی کمپنیوں کا موقف ہے کہ جموں و کشمیر میں انٹرنیٹ اور موبائل فونز کی مسلسل بندش سے کمپنیوں کو شدید خسارے کا سامنا ہے۔

شاید آپ یہ خبریں بھی پسند کریں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept