2 سال کا عرصہ مکمل ہونے پر نئے الیکشن کا انعقاد ہوگا: پروفیسر سید عاطف رضا

ضیا ء خان کاکڑ کو یہ ذمہ داری دی جاتی ہے کہ وہ پی پی اے سنٹراور پنجاب کے الیکشن کے اس عمل کو مکمل ہونے تک اپنی ذمہ داریاں ادا کریں

لاہور پریس کلب میں پاکستان فارماسسٹ ا یسوسی ایشن پنجاب کے صدر پروفیسر سید عاطف رضا، نائب صدر پی پی اے پنجاب ظفر گوندل، جنرل سیکرٹری پی پی اے پنجاب آصف فاروق اعوان،پروفیسر ڈاکٹر مقصود احمد،سیف اللہ نیازی ودیگر نے مشترکہ پریس کانفرنس کی پریس کانفرنس میں صدر پی پی اے پنجاب ڈاکٹر سید عاطف رضاء نے پاکستان فارماسسٹ ا یسوسی ایشن سنٹر اور پاکستان فارماسسٹ ا یسوسی ایشن سنٹرپنجاب کے ہونیوالے مشترکہ اجلاس میں فیصلوں کے بارے میڈیا کو آگاہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ ایسوسی ایشن کے عہدیداران کا دوسال کا عرصہ مکمل ہونے پر نئے الیکشن کا انعقاد عمل میں لایا جائے گا اس ضمن میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ ضیاء خان کاکڑ کو پی پی اے الیکشن سیشن 2019.21کے لئے چیف الیکشن کنونیر مقر رکیا جائے ضیا ء خان کاکڑ کو یہ ذمہ داری دی جاتی ہے کہ وہ پی پی اے سنٹراور پنجاب کے الیکشن کے اس عمل کو مکمل ہونے تک اپنی ذمہ داریاں ادا کریں انہیں ہدایت کی گئی کہ وہ الیکشن کا تفصیلی شیڈول جاری کریں اور اس کے پر امن اور منصفانہ انعقاد کو یقینی بنائیں۔

انہوں مزید بتایا کہ ہونے والے اجلاس میں کچھ اور فیصلے بھی کیے گئے ہیں جن کے بارے صدر پنجاب پی پی اے ڈاکٹر سید عاطف رضاء بتایا کہ پاکستان فارماسسٹ ایسوسی ایشن سنٹر اور پنجاب برانچ دوسال کے عرصے میں فارماسسٹ برادری کی آواز ایوان بالا تک پہنچانے میں اپنا اہم کردار ادا کیا اس ضمن میں منڈی بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی اور لاہور کالج فارویمن یونیورسٹی کے اشتراک سے انٹرنیشنل کانفرنسز کا انعقاد کیا گیا اور فارماسسٹ کے دیگر مسائل کو پریس کانفرنسز،پریس زیلیز ز،سوشل میڈیا کے ذریعے احکام بالا تک پہنچانے میں اپنا کلیدی کردار ادا کیا۔

انہوں نے کہا کہ ایسوسی ایشن کے عہدیداران نے اپنی خدمات مستقبل میں بھی جاری رکھنے کا عزم کیا اور فارماسسٹ برادری سے اپیل کی کہ وہ مستقبل میں بے لوث،بے خوف،بے غرض،اور اعلیٰ قیادت کا چناؤ کریں انہوں نے مطالبہ کیا کہ پی پی ایس پی سے کامیاب 486امیدواروں کو فی الفور ان کی سیٹو ں پر تعینات کا جائے اور شیڈول جی کے نفاذ میں دوسال کی توسیع جیسے اقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی فارمیسی پر کوالیفائیڈ پرسن کی موجودگی کو یقینی بنایا جائے انہوں نے حکومت پاکستان مطالبہ کیا کہ فارمیسی ایکٹ 1967میں فی الفور تبدیلی کی جائے اور موجود ہ مختلف کٹگریز سسٹم ختم کیا جائے فارمیسی کونسل آف پاکستان کے صدر اور سیکرٹری کیلے صرف اور صرف فارمیسی کے گریجویٹ کو تعینات کیا جائے پرائیویٹ فارمیسی اور انڈسٹریز میں کام کرنے والے فارماسسٹو ں کو جاب سیکیورٹی فراہم کی جائے اور ابتدا میں ان کی کم از کم تنخواہ ساٹھ ہزار مقرر کی جائے صوبو کی سطح پر فارمیسی کا علیحدہ ڈائریکٹوریٹ قائم کیا جائے

شاید آپ یہ خبریں بھی پسند کریں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept