چیئرمین پی ٹی اے کا تقرر نہ کرنے کیخلاف فیصلہ آگیا

لاہور ہائیکورٹ نے چیئرمین پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اٹھارتی کا تقرر نہ کرنے کیخلاف درخواست پر فیصلہ سنا دیاگیا۔ 

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شمس محمود مرزا کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے شیزار ذکاء ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی جس میں چیئرمین پی ٹی اے کا تقرر نہ کرنے کے اقدام کو چیلنج کیا گیا ہے۔ درخواست گزار وکیل نے نشاندہی کی کہ حکومت نے ابھی تک چیئرمین پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کا تقرر نہیں ہوا اور لگ بھگ گیارہ برس سے قائم مقام چیئرمین کے ذریعے پی ٹی اے کے امور کو چلایا جا رہا ہے۔ درخواست گزار کے وکیل نے درخواست میں یہ نقطہ بھی اٹھایا کہ چیئرمین پی ٹی اے کی تقرری میرٹ سے ہٹ کی گئی۔ درخواست میں استدعا کی گئی کہ حکومت کو چیئرمین پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کے عہدے پر تقرر کرنے کا حکم دیا جائے۔ دو رکنی بنچ نے دلائل سننے کے بعد درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے حکم دیا کہ موجودہ چیئرمین پی ٹی اے 4 سالہ مدت ملازمت مکمل کریں گے۔ مدت ملازمت مکمل ہونے پر ان کی مدت ملازمت میں توسیع نہ کی جائے اور نئے چیئرمین کی بھرتی کے لیے اشتہار دیکر میرٹ پر تقرری کی جائے۔

You might also like

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept