فریال تالپورکوپھرضمانت مل گئی

نیب نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں فریال تالپور کو کل طلب کرلیا تاہم پی پی رہنما نے گرفتاری سے بچنے کیلئے اسلام آباد ہائیکورٹ سے حفاظتی ضمانت حاصل کرلی۔

قومی احتساب بیورو (نیب)راولپنڈی نے کل آصف زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور کو دن گیارہ بجے جعلی کاؤنٹس کیس کی تحقیقات کے سلسلے میں طلب کیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہےکہ فریال تالپور نے نیب کی جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہوں گی۔ دوسری جانب فریال تالپور نے نیب میں گرفتاری کے خدشے کے پیش نظر ضمانت قبل از گرفتاری کیلئے اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کرلیا ہے۔

فریال تالپور کی جانب سے دائر درخواست میں چیئرمین نیب کو فریق بناتے ہوئے مؤقف اختیار کیا گیا ہےکہ نیب نے کل طلب کیا ہے، خدشہ ہے گرفتاری نہ ہوجائے لہٰذا عبوری ضمانت دی جائے۔ اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل بنچ نے فریال تالپور کی درخواست پر سماعت کی۔

دورانِ سماعت جسٹس عامر فاروق نے فریال تالپور کے وکیل فاروق ایچ نائیک سے استفسار کیا کہ کیا یہ کوئی مختلف انکوائری ہے؟ اس پر فاروق نائیک نے بتایا کہ جی یہ الگ معاملہ ہے۔ عدالت نے 10 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکوں کے عوض 29 اپریل تک فریال تالپور کی عبوری ضمانت منظور کرلی۔ واضح رہے کہ فریال تالپور نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں 29 اپریل تک عبوری ضمانت کررکھی ہے۔