پاکستان اور ایف اے ٹی ایف کے درمیان مزاکرات مکمل

پاکستان نے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کو منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی فنڈنگ روکنے کیلئے اب تک کے اقدامات سے آگاہ کر دیا۔ پاکستانی حکام کو گرے لسٹ سے نکلنے کا یقین ہے۔ مذاکرات کا فیصلہ کن دور 17 سے 20 جون تک امریکا میں ہوگا۔ پاکستان اور فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے درمیان چین میں تین روزہ مذاکرات مکمل ہو گئے ہیں۔ پاکستانی حکام نے ایف اے ٹی ایف حکام کو گرے لسٹ سے نکالنے کیلئے بھرپور دلائل دیے۔

ذرائع کے مطابق کسٹمز حکام نے ایف اے ٹی ایف کو کرنسی سمگلنگ کی روک تھام کے لیے اقدامات سے آگاہ کیا۔ منی لانڈرنگ کا خاتمہ کرنے کے لئے مربوط اقدامات اور 10 نکاتی پلان آف ایکشن کا بھی بتایا گیا۔ عالمی ادارے کو بریف کیا گیا کہ پاکستان نے دہشت گردوں کی بینکنگ اور نان بینکنگ طریقوں سے فنڈنگ کا کیسے خاتمہ کیا۔

پاکستان نے ایف اے ٹی ایف ٹیم کو بریفنگ دی کہ منی لانڈرنگ کرنے والوں کے خلاف سزائیں اور جرمانے بڑھانے کا قانون تیار ہے جو پارلیمنٹ سے منظور کرایا جائے گا۔

اس کے علاوہ کالعدم تنظیموں کے گرد گھیرا مزید تنگ کر کے سہولت کاروں کے خلاف ایکشن لیا گیا۔ شریک چیئرمین بھارت کے سوالات کے بھی بھرپور جوابات دیئے گئے۔ 17 سے 20 جون تک فلوریڈا میں آئندہ اجلاس میں ایف اے ٹی ایف پاکستان کے اقدامات کا جائزہ لے گا۔

You might also like