غداری کیس میں پرویز مشرف کا دفاع کا حق ختم

پرویز مشرف کیخلاف سنگین غداری کیس میں خصوصی عدالت نے سابق صدر کے وکیل کی پیشی کیلئے ایک موقع دینے کی استدعا پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق سابق صدر پرویز مشرف کیخلاف سنگین غداری کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس طاہرہ صفدرکی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے کی،پرویزمشرف کے وکیل نے پیشی کیلئے ایک اورموقع دینے کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ پرویزمشرف زندگی کی جنگ لڑرہے ہیں،وہ ذہنی اورجسمانی طورپراس قابل نہیں کہ ملک واپس آسکیں،وکیل صفائی کا کہناتھا کہ ہرتاریخ پرکیس کے التواکی استدعاکرنے پرشرمندگی ہوتی ہے،سابق صدر کے وکیل نے کہا کہ پرویزمشرف وہیل چیئرپرہیں اورچل بھی نہیں سکتے،ایک موقع اوردیاجائے تاکہ وہ خودعدالت میں پیش ہوسکیں،جسٹس طاہرہ صفدر نے کہا کہ سپریم کورٹ نے تواس معاملے پرحکم جاری کررکھاہے،وکیل صفائی نے کہا کہ عدالت عظمیٰ کے حکم سے آگاہ ہوں،انسانی ہمدردی کے تحت استدعاکررہاہوں۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہےکہ ملزم چونکہ خرابی صحت کے باعث پیش نہیں ہوپارہا، سپریم کورٹ کے احکامات پر عمل درآمد کیا جائے گا، ملزم پیش نہیں ہوتا تو کیس ختم کرنےکی درخواست کو ناقابل سماعت سمجھتے ہیں، وزارت قانون وکلا کا ایک پینل بنائے جو ملزم کا عدالت میں دفاع کرے، وزارت قانون ان وکلا کے فیس شیڈول کے بارے میں رپورٹ پیش کرے۔
فیصلے میں مزید کہا گیا ہےکہ ملزم نے عدالت میں پیش نہ ہو کر اپنے دفاع کا حق کھو دیا، اب عدالت کیس کی کارروائی کو چلانے کے لیے وکیل صفائی مقرر کرےگی،اس مقصد کے لیے وزارت قانون وکلا کا پینل تجویز کرے۔

خصوصی عدالت نے کیس کی مزید سماعت 27 جون تک ملتوی کردی۔

You might also like

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept