اینکر مرید عباس قتل کیس میں اہم پیشرفت

اینکر مریدعباس سمیت دو افراد کے قتل کے عینی شاہد عمر ریحان نے پولیس کو بیان ریکارڈ کرا دیا

ڈیفنس میں قتل ہونے والے اینکر مرید عباس کے کیس میں مزید انکشافات سامنے آئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق مریدعباس سمیت دو افراد کے قتل کے عینی شاہد عمر ریحان نے پولیس کو بیان ریکارڈ کرا دیا۔عمر ریحان نے کہا کہ عاطف زمان نے فون کرکے کہا تھا کہ مرید کو لے کر دفتر آؤ، اس کی فائل کلوز کرنی ہے۔

عینی شاہد عمر ریحان کے مطابق میں اور مرید عباس عاطف کے دفترمیں بیٹھے تھے، وہ بعد میں آیا، عاطف زمان نے آتے ہی بغیرکوئی بات کہے فائرنگ کر دی. عاطف زمان نے مجھے بھاگنے کو کہا، میں گھبرا کر وہاں سے نکل گیا۔ سی سی ٹی وی فوٹیج میں جس شخص سیڑھیوں سے گرتا ہوا دکھائی دیتی ہے، وہ عمر ریحان ہی ہے۔پولیس کے مطابق عمر ریحان کا 2017 سے عاطف زمان سے رابطہ تھا، یہ ایک دوسرے کو جانتے تھے۔

ایس ایس پی طارق دھاریجو کے مطابق عاطف زمان کے ڈرائیور ندیم کو حراست میں لے لیا گیا ہے، بیان ریکارڈ کیا جارہا ہے۔سربراہ تحقیقاتی ٹیم کے مطابق عاطف نے اپنے بیان میں بتایا ہے کہ کوئی کاروبارنہیں تھا، پیسے رولنگ کرتا تھا، کلائنٹس کوٹائروں کے کاروبار کا بتا رکھا تھا۔ایس ایس پی طارق دھاریجو کا کہنا ہے کہ ملزم نے کلائنٹس کو دکانیں اور گودام دکھا رکھے تھے، پیسے ایک جگہ سے آتے تھے دوسری جگہ دیتا تھا۔

شاید آپ یہ خبریں بھی پسند کریں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept