Connect with us

پاکستان

پہلا خطاب

Published

on

پہلا خطاب

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ اللہ نے انہیں موقع فراہم کیا ہے وہ اپنے خواب کو پورا کر سکیں۔بنی گالہ میں اپنی رہائش گاہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ پہلا مرحلہ مکمل ہوچکا ہے تاہم اب دوسرے مرحلے میں اپنے منشور پر عمل درآمد ہے۔انہوں نے کہا کہ میں نے خود اس ملک کو ترقی کرتا اور نیچے آتے دیکھا، لہٰذا میں چاہتا تھا کہ پاکستان ایسا ملک بنے جیسا قائد اعظم محمد علی جناح نے سوچا تھا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ لوگ جمہوریت کے لیے ووٹ دینے نکلیں ہیں میں انہیں خراجِ تحسین پیش کرتا ہوں۔تحریک انصاف کے سربراہ نے انتخابی مہم کے دوران دہشت گرد حملوں میں مارے جانے والے انتخابی امیدواروں کو بھی خراجِ تحسین پیش کیا۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے عوام نے جمہوریت کو مضبوط کیا، تاہم میں کامیاب الیکشن کے انعقاد پر سیکیورٹی فورسز کو بھی داد دینا چاہتا ہوں۔عمران خان کا کہنا تھا کہ میں خلفائے راشدین کے وقت جیسا نظامِ حکومت چاہتا ہوں۔
عمران خان کا کہنا تھا کہ یہ انتخابات تاریخی تھے، اس میں لوگوں نے قربانیاں دی، اس میں دہشت گردی ہوئی، جس طرح بلوچستان میں دہشت گردی ہوئی اس کے باوجود وہاں کے عوام کی جانب سے ووٹ ڈالنے کے لیے نکلنا قابل فخر ہے۔
انہوں نے کہا کہ میں بلوچستان کے عوام کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، دہشت گردی کے واقعات کے باوجود انتخابی عمل مکمل ہوا، اس پر میں سیکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کو بھی خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے مینڈیٹ ملنے پر اللہ کا شکر ادا کرتے ہوئے کہاکہ ہم اپنا جمہوری عمل بڑھتے دیکھ رہے ہیں ، سیکیورٹی فورسز کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں ، ایسا پاکستان چاہتاہوں جہاں کمزورطبقے کو سہولتیں ملیں۔انہوں نے سیاسی مخالفین کیخلاف کسی بھی قسم کی انتقامی کارروائی نہ کرنے کا اعلان کیا۔
عمران خان کاکہناتھاکہ 22سال کی جدوجہدپراللہ تعالیٰ نےکامیابی دی،نئے پاکستان کا خواب پورا کرنے کا موقع ملا، دیا۔ ان کاکہناتھاکہ پاکستان میں تاریخی الیکشن ہوا،بلوچستان کے عوام کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں ، ضعیف لوگ گرمی میں ووٹ ڈالنے نکلے ،اکرام گنڈاپور اورہارون بلور شہیدہوئے۔
احتساب سب سے پہلے عمران خان سے شروع ہوگا، اس کے بعد میرے وزراء کا احتساب ہوگا۔ سارا پاکستان متحد ہوجائے،میرے اوپر ذاتی حملے کیے گئےجو کسی سیاستدان پر نہیں ہوئے، وہ سب باتیں میں بھول چکا ہوں ، کسی کو سیاسی انتقام کا نشانہ نہیں بنائیں گےجبکہ ہم ایسے مضبوط ادارے بنادیں گے جو کرپشن روکیں گے۔اس موقع پر عمران خان کاکہنا تھا کہ ہم بیرون ملک مقیم پاکستانیوں اور انویسٹرز کو ملک میں واپس لے کر آئیں گےجبکہ میں سب سے پہلے وعدہ کرتا ہوں عوام کے ٹیکس کے پیسوں کی حفاظت کروں گا۔
ان کا کہنا تھا کہ سادگی قائم کریں ، اپنے خرچے کم کریں جو بھی ہمارا پیسہ ہوگا وہ انسانوں کی فلاح پر خرچ ہوگا، ہمیں ادارے مضبوط کرنے ہیں ،خرچے کم کرنے ہیں جبکہ ہماری حکومت فیصلہ کرے گی کہ وزیر اعظم ہائوس کا کیا کرنا ہےاور ہم سارے گورنر ہاوس کو عوام کے استعمال کے لیے بنائیں گے۔انہوں نےبتایا کہ ہماری خارجہ پالیسی پر بڑا چیلنج ہے،ہم پڑوسی ممالک کے ساتھ بہتر تعلقات چاہتے ہیں جبکہ ہم چین سے تعلقات مزید بہتر کریں گےتاہم سب سے زیادہ افغانستان کے لوگوں نے نقصان اٹھایا ہے-

پاکستان

نیا بینچ تشکیل

Published

on

نیا بینچ تشکیل

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی نااہلی کی درخواست پر سماعت کے لیے اسلام آباد ہائیکورٹ کا ڈویژن بینچ تشکیل دے دیا گیا۔چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کی ہدایت پر تشکیل دیئے گئے 2 رکنی ڈویژنل بینچ کی سربراہی جسٹس شوکت عزیر صدیقی کریں گے جب کہ بینچ کے دوسرے رکن جسٹس اطہر من اللہ ہوں گے۔عدالت بینچ عمران خان کی نااہلی کے درخواستوں پر سماعت کل کرے گا جب کہ بینچ چیئرمین پی ٹی آئی کو وزارت عظمیٰ کے انتخاب میں حصہ لینے سے روکنے کی متفرق درخواست بھی سنے گا۔

Continue Reading

پاکستان

ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی

Published

on

ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی

تحریک انصاف کے قاسم خان سوری ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی منتخب ہو گئے قاسم خان سوری نے 183 ووٹ حاصل کیے جبکہ مخالف اپوزیشن امیدوار اسعد محمودنے 144 ووٹ حاصل کیے ،ڈپٹی سپیکر کےلئے 328 ووٹ کاسٹ ہوئے جس میں سے ایک ووٹ مسترد ہوا

Continue Reading

پاکستان

گھتم گتھا

Published

on

گھتم گتھا

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اسد قیصر قومی اسمبلی کے سپیکر منتخب ہو گئے ہیں اور حلف برداری کی تقریب کے دوران اور بعد تک ن لیگی اراکین کی جانب سے شدید احتجاج اور نعرے بازی کی گئی اور اس دوران چیئرمین پی ٹی آئی پیچھے بیٹھے مسکراتے اور ہنستے رہے ۔ ایاز صادق نے اسد قیصر سے حلف لینا شروع کیا تو ن لیگی اراکین کی جانب سے ایوان میں احتجاج شروع کر دیا گیا اور ” ووٹ کو عزدو “ ، ” چوری کا مینڈینٹ نامنطور نا منظور “ کے نعرے لگائے گئے ، اسد قیصر نے سپیکر کی نشست سنبھالنے کے بعد ہنگامہ آرائی کے باعث اجلاس پندرہ منٹ کیلئے ملتوی کر دیا۔اجلاس ملتوی ہونے کے بعد ن لیگی اراکین نے عمران خان کی نشست کے سامنے آ کر احتجاج شروع کر دیا تاہم اس موقع پر عمران خان بیٹھے شیریں مزاری کے ساتھ گفتگو کرتے رہے اور مسکراتے رہے ۔

Continue Reading

مقبول خبریں