Khouj English Advertising Privacy Policy Contact Us
Connect with us

پاکستان

سپریم کورٹ کے فیصلوں پر کوئی سمجھوتہ نہیں

Published

on

imran khan

 وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ حکومت سپریم کورٹ کے فیصلوں کے ساتھ کھڑی ہے کیونکہ قانون کی حکمرانی عدالت عظمیٰ کے فیصلوں پر عملدرآمد کرنے سے ہی ممکن ہے۔

لاہور میں شیلٹر ہوم منصوبے کا سنگ بنیاد رکھنے کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے بعد ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت ملک میں قانون کی بالا دستی چاہتی ہے اور سپریم کورٹ کے فیصلوں پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا، حکومت سپریم کورٹ کے فیصلے کیساتھ کھڑی ہے، سپریم کورٹ کے فیصلوں پر عمل نہ کیا جائے تو قانون کی حکمرانی ختم ہو جائے گی  اور ریاست نہیں چل سکتی۔

اس سے قبل اپنے خطاب میں عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم وسائل نہیں احساس کی کمی کاشکار ہیں، حکومت میں آتے ہی مشکلات کاسامنا کرنا پڑا، ملک کوڈیفالٹ ہونے سے بچانے کے لیے اقدامات کیے اب ملک بحران سے نکل گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومتیں چلتی رہتی ہیں لیکن فلاحی منصوبوں پر کام کرنے سے خوشی ہوتی ہے، پاکستان ایک ایسا ملک بنے گا جو دنیا میں مثال ہوگی۔

خطاب کے دوران انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی تقرری کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ میں نے ایک پسماندہ علاقے سے تعلق رکھنے والے شخص کو وزیراعلیٰ پنجاب بنایا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم نے احساس پر مبنی ایک معاشرے کو تشکیل کرنا ہے، یہی وجہ ہے کہ حکومت نے سڑکوں پر رات گزارنے والوں کے لیے پناہ گاہ منصوبے کی بنیاد رکھی۔

انہوں نے بتایا کہ رات کو کھلے آسمان تلے سونے والوں کے لیے لاہور میں 5 پناہ گاہیں قائم کی جائیں گی، جہاں مکمل سہولیات میسر ہوں گی اور پناہ گاہ منصوبہ چلانے کے لیے مخیر حضرات پر مبنی ایک بورڈ بنایا جائے گا۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہم میں احساس کی کمی ہے ، ہمیں سڑکوں پر سونے والوں کا خیال نہیں،  جس کے دل میں مفلس لوگوں کو دیکھ کر رحم نہ آئے وہ انسان ہی نہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے اعلان کیا کہ آنے والے دنوں میں غربت ختم کرنے کے لیے ایک پیکج لے کر آئیں گے۔

پاکستان

پاکستان کا آخری آئی ایم ایف پروگرام ہوگا

Published

on

asad umar

وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا ہے کہ پاکستان 19 واں آئی ایم ایف پروگرام لینے جارہا ہے تاہم یہ پاکستان کا آخری آئی ایم ایف پروگرام ہوگا۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے پاس نہ جانا پڑے، آئی ایم ایف نے آج پہلی بار ہمارے سامنے رکھا ہے کہ معیشت کی بہتری کیلئے کیا کیا کرنے کی ضرورت ہے۔

اسدعمر نے کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات جاری ہیں، کچھ دنوں میں صورتحال واضح ہوجائے گی، آئی ایم ایف کے پاس جانے کے فیصلے میں تاخیر کا تاثر غلط ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اسٹیل ملز سمیت دیگر اداروں کو ری اسٹرکچرنگ کی ضرورت ہے، ہم نے ایل پی جی کے سلنڈر پر ٹیکس 30 فیصد سے کم کر کے 10 فیصد کردیا ہے، ہم نے صرف صاحب ثروت افراد پر ٹیکس لگایا ہے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ 30 نومبر کے بعد پاکستان میں اسمگل کرکے لایا گیا کوئی فون کام نہیں کرسکے گا۔

خیال رہے کہ آئی ایم ایف کا وفد ان دنوں پاکستان کے دورے پر ہے اور پیکج کے حوالے سے مذاکرات کے مختلف ادوار 20 نومبر تک جاری رہیں گے۔


گزشتہ روز وفد نے وزیر خزانہ اسد عمر سے ملاقات کی تھی۔ وزارت خزانہ کے اعلامیے کے مطابق وزیر خزانہ اسد عمر نے آئی ایم ایف مشن کے سربراہ سے معیشت کے مختلف شعبوں سے متعلق ابتدائی تخمینوں پر تبادلہ خیال کیا جبکہ معیشت سے متعلق تحریک انصاف کی حکومت کے وژن پر بھی تبادلہ خیال کیا

Continue Reading

پاکستان

وزیراعظم ہاوٴس کے اخراجات میں مزید کمی

Published

on

pm house

ترجمان وزیراعظم افتخار درانی نے کہا ہے کہ کفایت شعاری مہم کے تحت وزیراعظم ہاوٴس کے سالانہ اخراجات میں 14 کروڑ 70 لاکھ روپے کی کمی کی جائے گی۔

افتخار درانی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم آئندہ سیشن سے ایوان میں ارکان کے سوالات کے جوابات دینے کا سلسلہ شروع کر رہے ہیں۔

اسلام آباد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے ترجمان وزیراعظم افتخار درانی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے اپنی سرکاری رہائشگاہ کی تزئین و آرائش پر 2 لاکھ 32 ہزار روپے اپنی جیب سے ادا کر دیے ہیں۔

اس کے علاوہ بنی گالہ میں ذاتی رہائشگاہ کی سیکیورٹی پر آنے والے اخراجات بھی وزیراعظم نے اپنی جیب سے ادا کئے ہیں۔ سرکاری خزانے سے ایک روپیہ خرچ نہیں کیا گیا۔

افتخار درانی نے بتایا کہ وزیراعظم نے اکتوبر میں سرکاری رہائشگاہ میں مہمانوں کی ریفرشمنٹ کا 66 ہزار اور نومبر میں 29 ہزار روپے کا بل خود ادا کیا۔

وزیراعظم ہاوٴس کے 524 ملازمین میں سے 200 ملازمین کو دیگر محکموں میں بھیج دیا گیا ہے، دوسرے مرحلے میں مزید 125 ملازمین کا وزیراعظم ہاوٴس سے تبادلہ کر دیا جائے گا۔

ترجمان وزیراعظم نے بتایا کہ وزیراعظم ہاوٴس کے پٹرول پر 40 لاکھ روپے اور ملازمین کے یونیفارم پر 37 لاکھ روپے کی بچت ہو گی۔ ایک سوال پر افتخار درانی کا کہنا تھا کہ اپوزیشن چاہتی ہے کہ اس کا احتساب روک دیا جائے، اس لئے وہ قومی اسمبلی اور سینیٹ کا ماحول خراب کر رہی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ قومی اسمبلی قواعد میں ترمیم کے بعد وزیراعظم آئندہ سیشن سے ایوان میں ارکان کے سوالات کے جوابات دینے کا سلسلہ شروع کر دیں گے۔

Continue Reading

پاکستان

حکومتی صفوں میں دراڑیں پڑنے لگیں

Published

on

hamza shabaz

ن لیگ پنجاب کی پارلیمانی پارٹی اجلاس کی اندرونی کہانی، اجلاس میں تمام اراکین کی حاضری سے اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز خوش، کہتے ہیں پوری کوشش ہو گی کی سینیٹ کے انتخابات میں کامیابی حاصل کریں، ن لیگ پوری طرح میاں نواز اور میاں شہباز شریف کی قیادت میں متحد ہے۔ اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی میاں حمزہ شہباز کی صدارت میں مسلم لیگ ن کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس لاہور میں ہوا۔ حمزہ شہباز کاکہنا تھا کہ پوری کوشش ہو گی کی سینیٹ کے انتخابات میں کامیابی حاصل کریں، تمام اراکین مقررہ وقت پر اسمبلی میں پہنچیں، بہت سارے حکومتی اراکین کے ساتھ رابطے میں ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومتی صفوں میں دراڑیں پڑنا شروع ہو گئی ہیں، ن لیگ پوری طرح میاں نواز اور میاں شہباز کی قیادت میں متحد ہے، وقت دور نہیں جب عوام خود ہی جھوٹے لوگوں کو ایوانوں سے باہر پھینک دیں گے۔حمزہ شہباز نے کہا کہ اگرآپ لوگ متحد رہے تو دنیا کی کوئی طاقت عوام کی خدمت سے نہیں روک سکتی، اپنے اپنے گروپس کے لیڈر سے سینیٹ ووٹ کے متعلق رہنمائی حاصل کریں۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی ناکامیاں جلد کھل کر سامنے آجائیں گی، دھاندلی زدہ حکومت کو عوام نے اب تک قبول نہیں کیا۔

Continue Reading
Advertisement

مقبول خبریں