جعلی اکاؤنٹس کیس نیب کے سپرد ،جلد مکمل کرنیکا حکم

سپریم کورٹ نے جعلی اکاؤنٹس کیس نیب کے سپردکر دیا، کیس 2 ماہ میں مکمل کر کے رپورٹ پیش کرنے کا حکم ، تفتیش کے بعد اگر کوئی کیس بنتا ہے تو بنایا جائے۔ 

ذرائع نے بتایا ہے کہ سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں جسٹس فیصل عرب اور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل تین رکنی بینچ نے جعلی اکاؤنٹس کیس کی سماعت کی ۔ سماعت میں اٹارنی جنرل پاکستان، بلاول بھٹو، آصف زرداری اور اومنی گروپ کے وکلاء سمیت جے آئی ٹی کے وکلاء بھی عدالت میں پیش ہوئے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ عدالت عظمیٰ نے سماعت میں فریقین کے وکلاء کے دلائل اور جے آئی ٹی کا مؤقف سننے کے بعد جعلی اکاؤنٹس کیس کا معاملہ قومی نیب کو بھیجنے کے ساتھ ساتھ جے آئی ٹی کی رپورٹ بھی نیب کو بجھوانے کا حکم دیا ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ سپریم کورٹ نے اپنے حکم میں کہا کہ نیب اس سارے معاملے کی ازسرِ نو تفتیش کرے اور اسے 2 ماہ میں مکمل کرکے رپورٹ پیش کرے،تفتیش کے بعد اگر کوئی کیس بنتا ہے تو بنایا جائے اور نیب کو بھی ہدایت کی کہ وہ جسے چاہے سمن کرکے بلا سکتا ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ سپریم کورٹ نے اپنے حکم میں مزید کہا کہ جے آئی ٹی اس کیس پر اپنے طور پر کام کرتی رہے اور کوئی چیز سامنے آتی ہے تو نیب کو فراہم کرے۔عدالتِ عظمیٰ جعلی اکاؤنٹس کیس کا تفصیلی فیصلہ بعد میں جاری کرے گی۔

You might also like