اسحاق ڈار کی وطن واپسی‘ نیب کی ناکامی پر اظہار برہمی

اسحاق ڈار کی وطن واپسی، نیب کی ناکامی پر چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کا اظہار برہمی، اسحاق ڈار کو جلد واپس لایا جائے۔ 

ذرائع نے بتایا ہے کہ اسحاق ڈار کی وطن واپسی سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں ہوئی۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس نے سوال کیا کہ اسحاق ڈار ابھی تک واپس نہیں آئے؟ نیب ابھی تک اسحاق ڈار کو واپس نہیں لاسکا۔ جس پر نیب کے وکیل نے جواب دیا کہ اسحاق ڈار کی واپسی کے لیے تحویل مجرمان کا عمل شروع ہوگیا ہے اور اسحاق ڈار ان کی جائیداد ضبط کرلی گئی ہے۔ نیب وکیل کے جواب پر جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ اسحاق ڈار کی جائیداد ضبط کرنے کے معاملے کو 2 ماہ گزرچکے ہیں اور بظاہر لگتا ہے خط وکتابت ہورہی ہے۔ نیب وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ برطانیہ کی حکومت کے خط کا جواب دے دیا ہے۔

اس موقع پر چیف جسٹس نے کہا کہ اسحاق ڈار کی واپسی سے متعلق کوئی پیشرفت نہیں ہوئی اور معلوم نہیں اسحاق ڈار کب تک وہاں بیٹھے رہیں گے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا پی ٹی وی کیس میں اسحاق ڈار، پرویز رشید اور عطاء الحق قاسمی سے ریکوری ہوئی؟ اس پر پرنسپل انفارمیشن آفیسر نے جواب دیا کہ ریکوری کی مدت 2 ماہ ہوتی ہے اور یہ مدت ابھی تک ختم نہیں ہوئی۔ عدالت نے کیس کی سماعت ایک ماہ کیلئے ملتوی کردی۔

You might also like

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept