ڈی پی او پاکپتن کی کارستانی پروزیراعلیٰ پنجاب کانوٹس

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ڈی پی او پاکپتن ماریہ محمودکی کارستانی کا نوٹس لے لیا، واضح ہو کہ معمر شہری نے لیڈی پولیس افسر پر دست شفقت رکھنا چاہا تھا جس پر معمر شخص کو لاک اپ میں ڈال دیا گیا۔ 

واضح رہے کہ گزشتہ روز ڈی پی او پاکپتن ماریہ محمود کھلی کچہری میں شریک تھیں اس موقع پر 70 سالہ انجمن تاجران کے صدر صوفی محمد رشید نے خاتون پولیس افسر کے سر پر دست شفقت رکھنا چاہا جو انہیں ناگوار گزرا اور انہوں نے معمر شخص کو کھری کھری سنا دیں۔پولیس نے معمر شخص کو پکڑ کر تھانے میں بند کردیا اور ایس ایچ او کی مدعیت میں مقدمہ بھی درج کرلیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے آج معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے آر پی او ساہیوال سے واقعے کی رپورٹ طلب کرتے ہوئے جامع تحقیقات کر کے 48 گھنٹے میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ یاد رہے کہ واقعے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہوچکی ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ڈی پی او پاکپتن ماریہ محمود نے معمر شخص کو کہا میں نے صرف تمہاری عمر کا لحاظ کیا ہے۔ڈی پی او کے ناروا رویے پر تاجروں کی جانب سے احتجاج کیا گیا جس کے بعد مذاکرات کے بعد بزرگ تاجر رہنما کو چھوڑ دیا گیا۔