سپریم کورٹ کافیصلہ نوازشریف کے حق میں۔۔۔ اندرونی کہانی منظرعام پر

سابق وزیراعظم میاں نوازشریف ،مریم نوازاور کیپٹن ر صفدر کی ضمانت بحال رکھنے کے عدالتی فیصلے کی اندرونی کہا نی منظر عام آگئی۔ واضح ہوکہ سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بینچ جس کی سربراہی چیف جسٹس ثاقب نثار نے نیب کی جانب سے کی جانے والی اپیل خارج کرتے ہوئے اسلام آباد ہائیکورت کے ضمانتی فیصلہ کو برقرار رکھا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس میں نیب کی جانب سے پیش کئے جانے والے شواہد کو ناکافی قرار دیتے ہوئے نواز شریف،مریم نوازاور کیپٹن صفدر کی ضمانت منظور کر لی تھی اور انھیں جیل سے فوری طور پر رہا کرنے کا حکم دیا تھا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ نیب نے بعض ریاستی اداروں کی ہدایت پر ضمانت کے فیصلے کے خلاف برائے نام اپیل کی تھی جسے صرف دکھاوا کہا جا سکتا ہے۔
ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ نیب نے سپریم کورٹ میں کمزور دلائل جان بوجھ کر پیش کئے اسی وجہ سے عدالت عظمیٰ نے اسلام آباد ہائیکورٹ کا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے نیب کی اپیل خارج کردی۔ یہ بھی کہا جارہا ہے کہ بااثر حلقے نواز شریف اور ان کی فیملی کے دیگر افراد کو ریلیف دینے کی راہ اختیار کرچکے ہیں ۔