Connect with us

ٹیکنا لوجی

قدیم رنگ کون سا

Published

on

قدیم رنگ کون سا

سائنسی جریدے پی این اے ایس میں شائع ہوئی ایک تحقیقی مقالے میں آسٹریلین نیشنل یونیورسٹی سے منسلک سائنس دان نور گوئینیلی انکشاف کیا ہے کہ دنیا میں سب سے قدیم رنگ ’تیز گلابی رنگ‘ ہے جو موریطانیہ کے صحرائے صحارا میں موجود ایک اعشاریہ ایک بلین سال پرانی چٹانوں کی گہرائی میں ایک سلیٹی پتھر کے نیچے موجود تھا جسے مائیکرو اسکوپ سے نظر آنے والے سائینو بیکٹیریا نے چھوڑا تھا۔ سائنس دان نور گوئینیلی نے اپنے پی ایچ ڈی کی ریسرچ کے دوران یہ ’تیز گلابی رنگ‘ دریافت کے بعد دعویٰ کیا کہ برائیٹ پنک حیاتیاتی رنگ کلوروفل کی مالیکیولی باقیات ہیں۔ یہ رنگ ایک قدیمی ناپید سمندر میں رہنے والے قدیمی فوٹو سینتھیٹک نامیاتی اجسام کی پیداوار ہے۔ سائنس دانوں نے اس رنگ کو حاصل کرنے کے لیے قدیم اجسام پر تحقیق کرنے سے پہلے اربوں سال پرانے چٹانی پتھروں کو توڑ کر اُن کا پاؤڈر حاصل کیا۔
سائنس دان نور گوئینیلی کا کہنا ہے کہ قدیمی باقیات سے اس امر کی تصدیق ہوجا تی ہے کہ اربوں سال پہلے سمندر میں فوڈ چین پر سائینو بیکٹیریا کا غلبہ تھا جس سے ثابت ہوتا ہے کہ اس وقت جانور کیوں موجود نہیں تھے۔ واضح رہے کہ صحرائے صحارا میں تیل نکالنے والی ایک کمپنی کو یہ قدیم چٹان ملی تھی جسے کمپنی نے یونیورسٹی بھیجا تھا تاکہ تحقیق کی جاسکے چنانچہ سائنس دان نور گوئینیلی نے اس چٹانی پتھر پر تحقیق شروع کی تھی۔

ٹیکنا لوجی

پٹرول سے چھٹکارہ

Published

on

پٹرول سے چھٹکارہ

پاکستان میں پہلی بارایک چینی کمپنی کی تیار کردہ الیکٹرک موٹرسائیکل فروخت کے لیے پیش کردی گئی ہے جسے چلانے کے لیے پٹرول کی کوئی ضرورت نہیں۔درحقیقت یہ ایک چینی کمپنی ہے جس نے کچھ سال پہلے پاکستان میں اپنے اس عزم کے ساتھ قدم رکھا تھا کہ ای ٹیکنالوجی ہی خطے کی مارکیٹ میں حکمرانی کرے گی۔ نیون نامی یہ کمپنی پاکستان میں اب تک 4 ماڈلز متعارف کراچکی ہے اور ایم 3 نامی ای بائیک ان میں سے ایک ہے جو کہ دیکھنے میں سپورٹس موٹرسائیکل جیسی ہے جبکہ ماحول دوست بھی ہے کیونکہ یہ کسی قسم کا دھواں خارج نہیں کرتی۔اس موٹرسائیکل میں 2 ہزار واٹ موٹر دی گئی ہے جو اسے 85 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے دوڑنے میں مدد دیتی ہے۔چونکہ یہ الیکٹرک یا برقی موٹرسائیکل ہے تو اس میں اسپارک پلگ یا انجن آئل کی ضرورت نہیں بلکہ یہ مکمل طور پر آٹومیٹک ہے۔اس میں کمپنی کی جانب سے ٹیوب لیس ٹائر دیئے گئے ہیں جبکہ ڈوئل پسٹن کیلیپر بریکس فرنٹ اور بیک کے لیے ہیں۔اس میں ایل ای ڈی ہیڈلائٹس اور ڈے ٹائم رننگ لائٹس بھی چلانے والوں کی سہولت کے لیے موجود ہیں جبکہ اس کا چارجر بائیک کے ‘ٹینک’ میں دیا گیا ہے جبکہ یو ایس بی پورٹ بھی ہے جس سے فونز کو چارج کیا جاسکتا ہے۔

Continue Reading

ٹیکنا لوجی

موبائل ،ٹیبلٹ ٹوٹنے سے بچ گیا

Published

on

موبائل ،ٹیبلٹ ٹوٹنے سے بچ گیا

پلگو! بچوں کو ٹیبلٹ کی لت سے نجات دینے والا ٹیبلٹ کھلونا تیارتقریباً تمام والدین اپنے بچوں میں ٹیبلٹ اور اسمارٹ فون سے گھنٹوں کھیلتے رہنے کی عادت سے شدید پریشان ہیں۔ اب بچوں کی اس خراب لت کو دور کرنے کے لیے ایک انٹرایکٹو ہارڈویئر گیم بنایا گیا ہے جسے ’پلگو‘ کا نام دیا گیا ہے۔ماہرین خبردار کرچکے ہیں کہ اسمارٹ فون اور ٹیبلٹ سے خارج ہونے والی بلیو لائٹ آنکھوں کے ان خلیات کو ناقابلِ تلافی نقصان پہنچاتی ہے جو روشنی جذب کرنے اور دیکھنے میں مددگار ہوتے ہیں۔ اسی بنا پر بچوں کی نازک بینائی ان آلات سے شدید متاثر ہوسکتی ہے۔پلے شائفو نامی کمپنی نے پلگو گیم تیار کیا ہے جو ’’لیگو‘‘ کی طرح چند ٹکڑوں، ایک پلیٹ فارم اور ٹیبلٹ پر مشتمل ہے جسے تعلیمی اور سیکھنے سکھانے کے عمل میں استعمال کیا جاسکتا ہے۔ دوسری اچھی بات یہ ہے کہ پلگو بچوں کو براہِ راست ٹیبلٹ کو دیکھنے سے بھی روکتا ہے۔اس گیم کے لیے بہت سے کنٹرولرز بھی بنائے گئے ہیں۔ جب بچے ٹیبلٹ کے سامنے کھلونے رکھتے ہیں تو وہ اسکرین پر انٹریکٹو انداز میں ظاہر ہوتا ہے۔ بچے اسکرین کو دیکھتے ہوئے سادہ تجربات، آلات اور کھلونے تیار کرسکتے ہیں۔ پلگو پانچ سے لے کر گیارہ برس تک کے بچوں کےلیے تیار کیا گیا ہے۔اس میں ایک گیم پلگو اسٹیر ہے جس میں بچے کار کے پلاسٹک ہینڈل استعمال کرتے ہوئے اسکرین پر گاڑی دوڑاسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ کھیل کھیل میں ریاضی اور جیومیٹری کے بہت سے تجربات بھی انجام دیئے جاسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ زبان سیکھنے اور نئے الفاظ جاننے کےلیے بھی کئی معاون گیم بنائے گئے ہیں۔

Continue Reading

ٹیکنا لوجی

سینسر بوتل تیار

Published

on

سینسر بوتل تیار

ہونٹوں کے لمس سے کھلنے اور نہ چھلکنے والی ڈیجیٹل بوتل تیار،ورزش کے دوران، سفر میں یا کسی محفل میں بے خیالی میں چائے، پانی یا کسی مشروب سے بھری بوتل چھلک جاتی ہے۔ اب ایک اسٹارٹ اپ کمپنی نے اس کا الیکٹرونک حل تلاش کیا ہے جو ’لِڈ‘ کی صورت میں پیش کیا گیا ہے۔جاگنگ اور ڈرائیونگ کے دوران بھی کھلی ہوئی بوتل سے پانی چھلک جاتا ہے۔ اسی لیے لِڈ میں ایک خاص سینسر لگایا گیا ہے جو ہونٹوں کو محسوس کرتے ہی بوتل کے دہانے پر موجود باریک رکاوٹ کھول دیتا ہے اور آپ آسانی سے مشروب پی سکتے ہیں۔ ہونٹ ہٹتے ہی مائع کا راستہ دوبارہ بند ہوجاتا ہے۔اس میں ایک خاص ٹچ سینسر لگایا گیا ہے جس پر ہونٹ لگتے ہی وہ ڈھکنے پر لگی چھوٹی موٹر کو گھماتا ہے اور بوتل کا منہ پانی کےلیے کھل جاتا ہے۔ اس طرح آپ بوتل کے اوپری حصے سے کسی بھی جانب سے پانی یا کافی پی سکتےہیں۔ہونٹ ہٹتے ہی بوتل کی موٹر ایک بار پھر گھومتی ہے اور اس کا ڈھکنا بند ہوجاتا ہے۔ اسمارٹ بوتل کو چارج ہونے میں چار گھنٹے لگتے ہیں اور اس کے بعد دو ہفتے تک استعمال کیا جاسکتا ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ بوتل وائرلیس چارج ہوتی ہے۔ویکیوم والی اس بوتل کو دو مختلف سائزوں میں فروخت کیا جائے گا چھوٹی بوتل کی قیمت 39 ڈالر اور بڑی بوتل کی قیمت 44 ڈالر ہے۔

Continue Reading

مقبول خبریں