Khouj English Advertising Privacy Policy Contact Us
Connect with us

ٹیکنا لوجی

گہرائی میں دفن رازافشا

Published

on

معروف سائنسی جریدے نیچر میں امریکا کے جیولوجیکل انسٹیٹیوٹ سے وابستہ سائنس دان اوون سمتھ کی قیادت میں سائنس دانوں کی ایک ٹیم نے نیلے ہیرے پر اپنی تحقیق پیش کی ہے جس میں نیلے ہیرے سے متعلق اہم حقائق اور اس کی رنگت کی سائنسی وجوہات پر گفتگو کی گئی ہے۔ سائنس دانوں نے دنیا بھر سے منتخب کیے گئے نیلے ہیروں کا مطالعہ کیا جس میں 2016 میں 25 ملین ڈالر کے عوض نیلام ہونے والا جنوبی افریقہ کا قیمتی ’ نیلا ہیرا‘ بھی شامل تھا۔ مطالعے سے حیران کن انکشاف سامنے آیا ہے کہ یہ نیلا ہیرا زمین کے اندر 410 میل کی گہرائی میں پیدا ہوتا ہے۔ امریکی سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ نیلے ہیرا کی تشکیل زمین کے نچلے حصے ’ مینٹل‘ میں ہوتی ہے جہاں معدنیات کے کچھ ٹکڑوں کے پھنس جاتے ہیں۔ معدنیات کے ان ٹکڑوں پر کثیف دباؤ کی وجہ سے ’نیلا ہیرا‘ جنم لیتا ہے۔ نیلے ہیرے کی پیدائش میں کاربن کی قلموں کا بھی کلیدی کردار ہوتا ہے۔ چنانچہ ارضیاتی مطالعے میں ’نیلے ہیرے‘ کی اہمیت اس لیے بھی زیادہ بڑھ جاتی ہے کیوں کہ اس کے علاوہ جتنے بھی ہیروں کی اقسام کی ہے وہ زیادہ سے زیادہ زمین کی اندر محض 125 میل کی گہرائی میں پیدا ہوتے ہیں۔ اس لیے جو زمینی راز نیلا ہیرا افشا کرسکتا ہے وہ کسی اور ہیرے کے بس میں نہیں۔ نیلے ہیرے میں بورون نامی عنصر بھی پایا جاتا ہے جو لاکھوں سال قبل سمندری پانی میں پایا جاتا تھا اور اب حیران کن طور پر زمین کی تہہ کے اندر تک پہنچ چکا ہے اسی بناء پر سائنس دانوں کا خیال ہے کہ نیلے ہیرے پر مزید تحقیق سے اپنے سیارے کے بری اور بحری حصے کی تاریخ معلوم کی جاسکتی ہے۔
سائنس دانوں کا دعوی ہے کہ ’ نیلے ہیرے‘ کو محض زیبائش کی چیز نہ سمجھا جائے بلکہ یہ ارضیاتی تبدیلیوں اور زمین کی ساخت و تاریخ کے مطالعے میں ایک اہم اور موثر ہتھیار ثابت ہو سکتا ہے۔

Click to comment

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

ٹیکنا لوجی

صارفین کے لیے اچھی خبر ،واٹس ایپ میں بڑی تبدیلی

Muhammad Luqman

Published

on

whatsapp

واٹس ایپ صارفین کے لیے اچھی خبر یہ ہے کہ میسجنگ ایپلیکیشن نے اپنے ڈیلیٹ فار ایوری ون’ فیچر میں بڑی تبدیلی متعارف کرانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

واٹس ایپ نے یہ فیچر گزشتہ برس متعارف کرایا تھا، جس کے ذریعے ابتدا میں صارفین ا±ن پیغامات کو 7 منٹ کے اندر ڈیلیٹ کرسکتے تھے، جو غلطی سے سینڈ ہوگئے ہوں، بعدازاں ان پیغامات کو ڈیلیٹ کرنے کا دورانیہ ایک گھنٹہ، 8 منٹ اور 16 سیکنڈز تک بڑھا دیا گیا تھا۔

ویب بیٹا انفو کے ٹوئٹر پیغام کے مطابق اب صارفین اپنے میسجز بھیجے جانے کے 13 گھنٹے، 8 منٹ اور 16 سیکنڈز بعد انہیں ڈیلیٹ نہیں کرسکیں گے۔

اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر کسی نے کوئی پیغام بھیجنے کے بعد ‘ڈیلیٹ فار ایوری ون’ کا آپشن استعمال کیا ہے، لیکن پیغام وصول کرنے والے کو فون سوئچ آف ہونے یا کسی بھی وجہ سے 13 گھنٹے، 8 منٹ اور 16 سیکنڈز کے اندر میسجز منسوخی کی درخواست نہیں ملی تو وہ پیغام ڈیلیٹ نہیں ہوسکے گا۔

دوسری جانب واٹس ایپ آئندہ آنے والے دنوں میں اسٹیکرز اپ ڈیٹ کے حوالے سے بھی کام کر رہا ہے۔

Continue Reading

ٹیکنا لوجی

ایک سیکنڈ میں 10 ٹریلین فی سیکنڈ کی شرح سے ویڈیو بنائیں

Published

on

Tcup camera

دنیا کا تیز رفتار کیمرا ایک سیکنڈ میں 10 ٹریلین فی سیکنڈ کی شرح سے ویڈیو بناسکتا ہے جو پھیلتی ہوئی روشنی کو بھی سلوموشن موڈ میں دکھائے گا۔

قبل ازیں ہزاروں فریم فی سیکنڈ پر ویڈیو بنانے والے کیمرے بنائے گئے ہیں جنہیں جدید ترین قرار دیا گیا تھا لیکن اس بار کیلی فورنیا انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی اور کینیڈا کے سائنسی ادارے آئی این آر ایس  کا تیار کردہ تیز رفتار ترین کیمرا اتنا حساس ہے کہ وہ روشنی اور مادے کے درمیان نینو پیمانے تک بھی ری ایکشن نوٹ کرسکتا ہے۔

گزشتہ برس سوئٹزرلینڈ کی ٹیم نے پانچ ٹریلین فریم فی سیکنڈ والے کیمرے بنانے کا اعلان کیا تھا اور اب یہ ریکارڈ دگنی شرح سے ٹوٹا ہے۔ اس کیمرے کے عمل کو ماہرین نے الٹرا فاسٹ فوٹو گرافی کا نام دیا ہے۔ اس صلاحیت کے باوجود بھی یہ تیز رفتار لیزر جھماکوں کے اندر نہیں جھانک سکتی کیونکہ یہ عمل فیمٹو سیکنڈز کی سطح پر ہوتا ہے۔

اس کے لیے ماہرین نے فیمٹو سیکنڈ سٹریک کیمرا اور ایک ساکت کیمرے کو استعمال کیا ہے اور ڈیٹا رینڈرنگ کے لیے ایک عمل آزمایا ہے جسے ریڈون ٹرانسفارمیشن کا نام دیا گیا ہے۔ فیمٹو سیکنڈ سٹریک کیمرے سے تصویر کے معیار پر فرق پڑرہا تھا لیکن ایک اور ساکت کیمرے سے تصویر کشی کا عمل بہتر ہوگیا۔ اس طرح کئی ٹریلین فریمز فی سیکنڈ کی بہترین تصاویر حاصل کی گئیں۔

ان کیمروں سے کیمیا اور فزکس کی دنیا میں رونما ہونے والے ان واقعات کی تفصیلات کو مقید کیا جاسکے گا جو ایک سیکنڈ کے بھی بہت کم حصے میں رونما ہوتے ہیں۔ یہاں تک کہ ٹی کپ کیمرا ایک روشنی کے پھیلاؤ کو بھی سلوموشن میں دکھا سکتا ہے۔

Continue Reading

ٹیکنا لوجی

انسٹا گرام کانیا فیچر آخری مراحل میں داخل

Rashid Saeed

Published

on

Instagram Post

ٹیکنالوجی ویب سائٹ ٹیک کرنچ کے مطابق انسٹاگرام کمپنی انسٹا پوسٹ کے لیے بھی ٹیپنگ فیچر کی سہولت فراہم کرنے والی ہے جس کی مدد سے صارف کو بار بار اسکرول اور بیک کلک کرنے سے چھٹکارا مل جائے گا۔

یعنی جس طرح انسٹاگرام اسٹوریز ٹیپ کرنے سے بغیر بیک کلک کیے خودبخود سامنے آجاتی ہیں، ویسے ہی پوسٹ کے لیے بھی ٹیپنگ فیچر شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

انسٹاگرام کمپنی کے ترجمان نے ٹیک کرنچ ویب سائٹ کو یقین دہانی کروائی کے پوسٹس کے لیے بھی ٹیپنگ فیچر آزمائشی مراحل میں ہے، ہماری ہمیشہ یہی کوشش ہے کہ صارفین کے لیے بہتر سے بہتر خدمات انجام دے سکیں اور ان کی آسانی کا خیال رکھیں۔

Continue Reading
Advertisement
uras mubarik
پاکستان14 منٹ ago

خواجگان تونسہ کا سالانہ عرس آج سے شروع

president doctor arif alvi
پاکستان35 منٹ ago

خسرہ سے بچاؤ کی قومی مہم کا آغاز

bank account
پاکستان1 گھنٹہ ago

انوکھا فراڈ۔۔۔ مردہ شخص کے نام پر 4 بینک اکاؤنٹس

voting
پاکستان2 گھنٹے ago

خواتین کے ووٹوں کی شرح کم، الیکشن کمیشن کا نوٹس

khursheed shah
پاکستان2 گھنٹے ago

حکومت کی ضمنی انتخابات میں شکست، 50 روزہ ناقص کارکردگی کا ردعمل

chaudhry shujaat hussain
پاکستان3 گھنٹے ago

ملک میں پہلی بار ضمنی انتخابات صاف و شفاف ہوئے

iqra aziz
شوبز3 گھنٹے ago

کچھ تو شرم کریں

whatsapp
ٹیکنا لوجی3 گھنٹے ago

صارفین کے لیے اچھی خبر ،واٹس ایپ میں بڑی تبدیلی

aleem khan
پاکستان3 گھنٹے ago

برطرف کرنے کا مشورہ ۔۔۔ وجہ منظرعام پر

saudi prince with turkish president
انٹرنیشنل3 گھنٹے ago

صحافی گمشدگی معاملہ، ٹیلیفونگ گفتگو میں تبادلہ خیال

Mansha bomb
پاکستان3 گھنٹے ago

70 مقدمات میں مطلوب ملزم اچانک سپریم کورٹ پہنچ گیا

tehmina durrani
پاکستان3 گھنٹے ago

شوہر کے حوالے سے اہم انکشاف

sarfraz ahmad
کھیل4 گھنٹے ago

اختلافات کی خبریں بے بنیاد: کوچ اور کپتان ایک پیج پر

Shehryar Afridi
پاکستان4 گھنٹے ago

ملکی سالمیت پر کوئی سودے بازی نہیں ہوگی

prince harry and meghan
انٹرنیشنل5 گھنٹے ago

پہلا غیر ملکی دورہ، آسٹریلیا پہنچ گئے

مقبول خبریں